سیّد احمد شہید کا مسلک اور ان کی تحریک کا اندازِ فکر -- مباحث

محمد ثاقب صدیقی نے 'نقطۂ نظر' میں ‏جنوری 28, 2011 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. محمد ثاقب صدیقی

    محمد ثاقب صدیقی -: معاون :-

    شمولیت:
    ‏جون 12, 2009
    پیغامات:
    90
    سیّد احمد شہید کا مسلک اور ان کی تحریک کا اندازِ فکر
    از قلم : محمد تنزیل الصدیقی الحسینی
    سیّد احمد شہید رائے بریلوی کو فقہی مسلک کے اعتبارسے حنفی ثابت کرنے والے ان کے ایک مکتوبِ گرامی کا بطورِ خاص حوالہ دیتے ہیں ، جس کے درج ذیل الفاظ ان حضرات کے نزدیک سیّداحمد شہیدرحمہ اللہ علیہ کی ’پکی‘اور’ ’خالص‘‘حنفیت کی بہت بڑ ی دلیل ہے :
    ’’میرے اور میرے باپ دادا کا مذہب حنفی ہے اور آج کل بھی میرے تمام اقوال و افعال احناف کے قوانین و اصول اور آئین و قواعد کے مطابق ہیں اور میرا کوئی ایک قول و فعل بھی احناف کے اصول سے خارج نہیں ہے ۔‘‘
    یہ مکتوب گرامی کس پسِ منظر میں لکھا گیا ، اس کا مقصدِ تحریر کیا تھا اس سے ان حضرات نے کامل اعراض کیا۔یہ مکتوبِ گرامی علمائے پشاور کی اس بدظنی کے جواب میں لکھا گیا تھا جو انہیں مجاہدین سے متعلق ہوگئیں تھیں کہ یہ مجاہدین لامذہب ، نفسانی خواہشات کے پیرو اور سرحد میں قیام حکومت کے خواہشمند ہیں ۔ان غلط فہمیوں کی وجہ سے تحریکِ جہاد کو نقصان پہنچنے کا اندیشہ تھا ۔ چنانچہ سیّد صاحب کا اصل زور تحریکِ جہاد اور مجاہدین سے متعلق بدظنی کا خاتمہ تھا ۔ان کا مذکورہ خط بہت طویل ہے جسے ملاحظہ کرنے سے سیّد صاحب کا مقصدِ تحریر واضح ہوتا ہے ۔۔


    اصل موضوع يہاں ملاحظہ فرمائيں۔
    سیّد احمد شہید کا مسلک اور ان کی تحریک کا اندازِ فکر - URDU MAJLIS FORUM
    انتظاميہ اردو مجلس
     
  2. الطحاوی

    الطحاوی -: منفرد :-

    شمولیت:
    ‏دسمبر 5, 2008
    پیغامات:
    1,825
    آنجناب کو ایک مدت بعد اردو مجلس پر دیکھ کر خوشی ہوئی ۔آپ نے اپنامقصد اورمدعا واضح نہیں‌کیااگرکردیتے توبہترہوتا۔
    انقلابی تحریکوں میں غیرمقلدیت کی آمیزش رہی ہے
    سید احمد شہید حنفی نہیں تھے
    سید احمد شہید کٹرحنفی نہیں تھے
    ان تینوں میں سے کون سامدعا آنجناب نے اختیار کرناچاہاہے اسے واضح ہوناچاہئے تھاجس کے بغیر مضمون کی افادیت کم ہوجاتی ہے۔
    اس کے علاوہ آنجناب نے مضمون کاآخری حصہ جونقل کیاہے۔
    اب یہ بتایاجائے کہ سید احمد شہید نے مجدد الف ثانی رحمتہ کی کن باتوں پر اعتراض‌کیا۔ اس سلسلہ سے ان کے جوبزرگ موجود تھے ان کی کن بدعات کا رد کیا۔حضرت نظام الدین اولیائ اورحضرت خواجہ معین الدین چشتی کو جس طرح ایک ’’خاص طبقہ‘‘گمراہ سمجھتاہے سید احمد شہید ان پر کیاکیااعتراضات وارد کئے۔اس کے بغیر محض ایک مبہم ساجملہ لکھ دیناصرف اس کی نشاندہی کرتاہے کہ قائل کے پاس کماحقہ دلیل نہیں ہے۔یہی حال بعینہ کسی حد تک مولانا اسماعیل سلفی مرحوم کاشاہ واللہ اورتحریک آزادی فکر میں رہاہے۔جب کتاب کے آخر مین شاہ ولی اللہ محدث دہلوی کے بیعت وارشاد اورتصوف کے باب پر آئے ہیں توسابق کی طرح نہایت چپکے اورخاموشی سے اس موضوع سے نکلنے کی کوشش کی ہے۔
    دراصل ان کا فکری تضاد ان کو اس طرز عمل پر آمادہ کرتاہے۔انہوں نے اولاتویقین کرلیاہے کہ تصوف شرک وبدعت ہے اورجب وہ دیکھتے ہیں کہ دیگر اجلہ علماء حضرت شاہ ولی اللہ اوران کے اولاد واحفاد اوردیگر بزرگان امت اس پرعمل رہے ہیں تواس کی توجیہہ بمالایرضی بہ القائل کے طورپرکرناشروع کردیتے ہیں۔
    ویسے ہمیں خوشی ہوتی کہ اگر طالب الرحمن صاحب سید احم شہید رحمتہ اللہ کے تصوف سے تعلق پر لکھتے۔
     
  3. الطحاوی

    الطحاوی -: منفرد :-

    شمولیت:
    ‏دسمبر 5, 2008
    پیغامات:
    1,825
    تعبیر شاید غلط ہوگئی ہے۔کہنے کا مقصد یہ ہے کہ مولانااسماعیل سلفی نے جس طرح اپنی اس کتاب میں حضرت شاہ ولی اللہ محدث دہلوی کے عقائد اورفقہی مسلک کے تعلق سے تفصیل سے لکھاہے ۔تصوف کے باب میں بہت مختصر اورتشنہ لکھاہے۔
     
  4. محمد ثاقب صدیقی

    محمد ثاقب صدیقی -: معاون :-

    شمولیت:
    ‏جون 12, 2009
    پیغامات:
    90
    برادرم الطحاوی
    آپ کی گزارشات محترم مقالہ نگار کو بھیج دی ہے جو جواب آئے گا پیش کردیا جائے گا ۔ سر دست اتنا سمجھنے کی کوشش کیجئے کہ ہر صوفی بدعتی نہیں ہوتا اور ہر وہابی عبوسا قمطریرا نہیں ہوتا ۔ بہت سے علمائے کرام اپنے زہد و تقویٰ کی بنا پر عوام میں صوفی مشہور ہوگئے ہیں تاہم وہ مبتدعانہ تصؤف سے پاک تھے ۔ شیخ شرف الدین احمد منیری کی خوان پر نعمت میں تقلید کا رد موجود ہے جو آپ کے علم میں ہوگا ۔ متصوفانہ خیالات تقریبا ہر مسلک میں پائے جاتے ہیں اصل چیز شرک و بدعت اور تقلید جمود کی تردید ہے یہ ہے تو اہل حدیثیت ہے ورنہ نہیں ۔
     
  5. فرقان خان

    فرقان خان -: محسن :-

    شمولیت:
    ‏مارچ 4, 2010
    پیغامات:
    208
    دنیائے اسلام میں غلبۂ دین کی جس قدر تحریکیں اٹھیں اور جنہیں واقعتا معاشرتی اصلاح وانقلاب کے اعتبار سے کامیاب بھی قرار دیا جا سکتا ہے ۔ان سبھوں میں ’’ توحیدِ خالص‘‘کو بنیادی حیثیت اور ’’سلفیت/غیر مقلدیّت‘‘کی گہری آمیزش ضرور رہی ہے ۔

    طالبان۔

    اخوان المسلمون۔

    حماس۔

    عمر المختار لیبیا۔

    مہدی سوڈانی۔

    امام شامل چیچنیا۔

    :::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::: یہ سب مذاہب اربعہ میں سے کسی نہ کسی کے پیرو تھے:::::::::::::::::::::::::::::::::::::::

    آآآآآآآآآآہ مسلک بھی کیا چیز ہوتا ہے!!!
     
  6. محمد ثاقب صدیقی

    محمد ثاقب صدیقی -: معاون :-

    شمولیت:
    ‏جون 12, 2009
    پیغامات:
    90
    حضرت والا محترم مقالہ نگار نے جو مثالیں پیش کی ہیں ان پر بھی نظر ڈالئے۔ ہم یہ نہیں کہتے کہ تمام لوگ اہلحدیث یا غیر مقلد تھے ہمارا دعوی صرف اتنا ہے کہ ہر اصلاحی یا انقلابی تحریک کی تہہ میں سلفیت کے اجزائے ترکیبی شامل رہے ہیں اور بس۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  7. محمد ثاقب صدیقی

    محمد ثاقب صدیقی -: معاون :-

    شمولیت:
    ‏جون 12, 2009
    پیغامات:
    90
    اس مباحثے میں شرکت کرنے والے افراد سے صرف اتنی گزارش ہے کہ وہ مکمل مقالہ ضرور پڑھیں ۔ تاکہ اس کے بعد ان کی تنقید میں بھی وزن ہو ورنہ تنقید برائے تنقید کرنے کا کوئی فائدہ نہیں ۔
     
  8. Raj One

    Raj One -: معاون :-

    شمولیت:
    ‏اکتوبر، 6, 2010
    پیغامات:
    16
    ? Syed Ahmad ka maslak O mazhab jo marzi ho hamain kia

    Unhoun na apni Qabar ma jana h aor hum nay apni .. . .

    Unko hanfi na sabit kar k apko kia mila?

    ای میل حذف
     
Loading...

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں