مصر : صدارتی انتخاب

عائشہ نے 'خبریں' میں ‏مئی 28, 2012 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. ابوعکاشہ

    ابوعکاشہ منتظم

    رکن انتظامیہ

    شمولیت:
    ‏اگست 2, 2007
    پیغامات:
    15,903
    السلام علیکم ۔
    ویسے اخوان المسلمین کی کامیابی حیران کن ہے ۔ ان انتخابات سے جہاں اخوان السملمین کی مقبولیت کا اندازہ ہوا وہیں یہ بھی کہ مصری عوام بھی اب تبدیلی چاہتے ہیں‌۔ اس لیے امید ہے کہ اخوان المسلمین حکومت بنا کر رہی گی ۔
     
  2. محمد آصف مغل

    محمد آصف مغل -: منتظر :-

    شمولیت:
    ‏نومبر 18, 2011
    پیغامات:
    3,847
    رقیبوں نے رپٹ لکھوائی ہے جا جا کے تھانے میں
    کہ اکبر نام لیتا ہے خدا کا اس زمانے میں

    ویسے اس بارے میں اسلامی احکامات کیا ہیں کہ کسی شخص کو صرف اس لئے ناپسند کیا جائے کہ وہ مذہبی اقدار پر ’’کمپرومائز‘‘ نہیں کرتا۔

    اسی لئے راقم کا نقطہ نظر ہے کہ

    اسلام کبھی بھی جمہوریت کے راستے سے نہیں آ سکتا۔

    الجزائر میں اس کا ایک تجربہ ہو چکا ہے جہاں غدارِ دین ’’شاذلی بن جدید‘‘ نے ’’دین نافذ ہونے سے روکا‘‘۔

    ’’اسلامی جمہوری‘‘ الجزائر میں جو بھی داڑھی والا نظر آئے جائے اُسے فوراً گولی مارنے کا ’’سرکاری حکم‘‘ ہے۔

    بندہ ناچیز پر بھی بندوقیں تان لی گئیں لیکن غیر ملکی ہونے کی وجہ سے ’’باعزت‘‘ جہاز کے حوالے کر گئے۔

    دین ابلیس یعنی جمہوریت سے جس طرح بھی الحاق کر لو…… یہ تو کفر تک تو پہنچا کر ہی دَم لے گی؟
     
  3. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,487
    اخوان بھی اب وہ اخوان نہيں رہے ان كے سابق مرشد خوب تنقيد كرتے رہتے ہيں كہ اب يہ اس منشور سے ہٹ گئے جو ابتدا ميں تھا بہرحال ڈھلمل سہی اسلام پسند تو ہيں ۔
    يہ اصل امتحان ہو گا ، انقلاب كئى مرتبہ ہائى جيك ہو جاتا ہے كيا خبر۔ فى الوقت فوجى كونسل کے ہاتھ لاٹھی ہے اور جس کے ہاتھ لاٹھی اس كى بھينس ۔
    ظاہرا فوجى كونسل كے اقدامات سے احمد شفيق كا مورال بڑھا ہے جبھی اس نے بھی كاميابى كا دعوى شروع كر ديا ہے۔
     
  4. محمد آصف مغل

    محمد آصف مغل -: منتظر :-

    شمولیت:
    ‏نومبر 18, 2011
    پیغامات:
    3,847
    الجزائر کی طرح فوجی بغاوت کے امکانات زیادہ ہیں کیونکہ تمام ’’مسلم ممالک کی فوج‘‘ انہی ’’امریکیوں‘‘ کی حمایت یافتہ ہے جو ’’جمہوریت‘‘ کا سب سے بڑا چیمپئن بنا پھرتا ہے۔ اور ’’جمہوریت‘‘ کبھی نہیں چاہتی کہ ’’اسلام پسند‘‘ کے ہاتھ میں کسی بھی ’’سطح‘‘ کا اختیار آئے۔

    فوجی بوٹوں اور گولیوں کی آوازیں آ رہی ہیں۔ بس دیکھتے رہیے۔
     
  5. marhaba

    marhaba ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏فروری 5, 2010
    پیغامات:
    1,667
  6. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,487
    منكر جہاد قاديانيت و ہندو نواز شخصيت كا بے فائدہ ليکچر :smile: خود وحيدالدين خان نے انڈيا ميں كون سا تير مارا ہے ؟
     
  7. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,487
  8. اہل الحدیث

    اہل الحدیث -: رکن مکتبہ اسلامیہ :-

    شمولیت:
    ‏مارچ 24, 2009
    پیغامات:
    5,050
    سابق مرشد؟؟؟
     
  9. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,487
    اخوان کے مرشد عام کا نہیں معلوم ؟
     
  10. اہل الحدیث

    اہل الحدیث -: رکن مکتبہ اسلامیہ :-

    شمولیت:
    ‏مارچ 24, 2009
    پیغامات:
    5,050
    نہیں میں‌ نے ان کے بارے میں کوئی تحقیق نہیں کی
     
  11. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,487
    بھائی تحقیق جیسا دماغ سوز لفظ رہنے دیں ( وہ بھی گرميوں كى چھٹيوں ميں )۔ سادہ سی بات ہے،اخوان اپنے رہنما كو مرشد عام كہتے ہيں اس كى بيعت كرتے ہيں بيعت ارشاد ، نائب مرشد بھی ہوتا ہے بالكل اسى طرح جيسے ہمارى بعض دينى جماعتوں ميں امير اور بيعت امارت ہوتى ہے ۔
     
  12. اہل الحدیث

    اہل الحدیث -: رکن مکتبہ اسلامیہ :-

    شمولیت:
    ‏مارچ 24, 2009
    پیغامات:
    5,050
    اچھا کون کون تھا اور کس کا یہ فرمانا تھا؟
     
  13. اہل الحدیث

    اہل الحدیث -: رکن مکتبہ اسلامیہ :-

    شمولیت:
    ‏مارچ 24, 2009
    پیغامات:
    5,050
    ہمیں‌تو چھٹی والے دن بھی چھٹی نہیں ہوتی۔۔۔۔ گرمیوں‌کی چھٹیاں تو دور کی بات!!!
     
  14. محمد آصف مغل

    محمد آصف مغل -: منتظر :-

    شمولیت:
    ‏نومبر 18, 2011
    پیغامات:
    3,847
    اسی تھریڈ کی پوسٹ نمبر 24 پر میں نے لکھا تھا کہ ’’فوجی بوٹوں اور گولیوں کی آوازیں آ رہی ہیں۔ بس دیکھتے رہیے۔ ‘‘
    اب لیجیے:
    مصر کے دارالحکومت قاہرہ کے التحریر سکوائر میں جمع مذہبی جماعت اخوان المسلمین کے حامی ہزاروں مظاہرین نے فوجی کونسل کی تنبیہ کے باوجود احتجاج جاری رکھنے کا اعلان کیا ہے۔مصر میں حکمران فوجی کونسل نے خبردار کیا ہے کہ کسی کو معمولات زندگی متاثر کرنے کی اجازت ہرگز نہیں دی جائے گی۔

    میں نے یہ بھی لکھا تھا کہ’’الجزائر کی طرح فوجی بغاوت کے امکانات زیادہ ہیں کیونکہ تمام ’’مسلم ممالک کی فوج‘‘ انہی ’’امریکیوں‘‘ کی حمایت یافتہ ہے جو ’’جمہوریت‘‘ کا سب سے بڑا چیمپئن بنا پھرتا ہے۔ اور ’’جمہوریت‘‘ کبھی نہیں چاہتی کہ ’’اسلام پسند‘‘ کے ہاتھ میں کسی بھی ’’سطح‘‘ کا اختیار آئے۔ مظاہرین مطالبہ کر رہے ہیں کہ صدارتی انتخابات کے نتائج میں تاخیر کی بجائے ان کا اعلان جلد کیا جائے۔مصر میں ہزاروں مظاہرین ملک کے فوجی حکمرانوں کی جانب سے اختیارات میں توسیع اور انتحابی نتائج میں تاخیر کے خلاف قاہرہ کے التحریر سکوائر میں جمع ہو کر احتجاج کر رہے ہیں۔گزشتہ اختتامِ ہفتہ پر فوج نے پارلیمنٹ تحلیل کر دی تھی اور تمام سیاسی و قانونی اختیارات اپنے قبضے میں کر لیے تھے۔مصر کے عوام تاحال صدارتی انتخابات کے نتائج کا کا انتظار کر رہے ہیں جن میں اخوان المسلمین کے امیدوار محمد مرسیٰ کامیابی کے دعوے دار ہیں اور ان کا کہنا ہے کہ نتائج کا اعلان فوری طور پر کیا جانا چاہیے۔جمعے کے روز مصر میں اسلامی، سیکیولر اور نوجوان گروپوں نے مل کر اخوان المسلمین کی اپیل پر ملک بھر میں نماز جمعہ کے بعد احتجاج میں حصہ لیا۔خبر رساں ادارے ایسوسی ایٹڈ پریس کے مطابق التحریر سکوائر میں نماز جمعہ کے امام نے کہا کہ محمد مرسیٰ واضح طور پر صدارتی انتخابات کے فاتح ہیں۔جبکہ محمد مرسیٰ نے ایک نیوز کانفرنس میں کہا کہ وہ نتائج کو قبل کریں گے چاہے وہ کچھ بھی ہوں۔ تاہم انہوں نے کہا کہ ’ہم کسی کو بھی نتائج کو تبدیل نہںی کرنے دیں گے۔‘فوج نے اپنے اضافی اختیارات کا دفاع کرتے ہوئے انہیں ملک میں استحکام پیدا کرنے کے لیے ناگزیر قرار دیا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ یہ اختیارات ملکی استحکام کو لاحق خطرات سے نمٹنے کے لیے ضروری تھے۔اس سے قبل مصر میں انتخابی حکام نے صدارتی انتخابات کے نتائج موخر کرنے کے فیصلے پر حالات مزید کشیدہ ہوگئے۔مصر میں کافی انتظار کے بعد گزشتہ ہفتے صدارتی انتخابات کروائے گئے تھے جس کے لیے محمد مرسی اور احمد شفیق امیدوار ہیں۔صدارتی انتخابات کے نتائج کا اعلان جمعرات کو ہونا تھا لیکن انتخابی کمیشن کا کہنا ہے کہ امیدواروں کی جانب سے شکایات پر غور کرنے کے لیے اسے مزید وقت درکار ہے۔بدھ کے روز صدارتی انتخاب کے لیے انتخابی کمیشن نے ایک بیان میں کہا تھا کہ دونوں امیدواروں کی جانب سے تقریباً چار سو شکایت درج کرائی گئی ہیں۔کمیشن نے کہا کہ ان کی تفتیش کے لیے اسے مزید وقت چاہیے اور اس نے نتائج کے لیے کوئی وقت بھی مقرر نہیں کیا۔ادھر اخوان المسلمین کے صدارتی امیدوار محمد مرسی اور حسنی مبارک کے دور میں وزیراعظم رہ چکے احمد شفیق دونوں ہی اپنی اپنی کامیابی کا پہلے ہی اعلان کر چکے ہیں۔اس دوران قاہرہ کی تحریر سکوائر پر حزب مخالف کے ہزاروں حامی نتائج میں تاخیر اور موجودہ حکمران فوجی کونسل کے خلاف احتجاج کر رہے ہیں۔اخوان المسلمین نے فوجی کونسل کی جانب سے حال ہی میں آئین میں کی گئی تبدیلیوں کے خلاف آواز اٹھانے کے لیے عوام سے تحریر اسکوائر پر جمع ہونے کی اپیل کی تھی۔آئین میں تبدیلی کر کے حکمراں ’سپریم کونسل آف دی آرمڈ فورسز‘ نے تمام سیاسی و قانونی اختیارات اپنے قبضے میں کر لیے تھے۔اخوان المسلمین کے ایک ترجمان نادر عمران نے بی بی سی کو بتایا کہ نتائج کے اعلان میں تاخیر نہیں ہونی چاہیے۔’اس سے لوگوں میں مزید کشیدگی پیدا ہوگي، انہیں اس کہانی کو کل تک ختم کردینا چاہیے‘۔اس فیصلے کے خلاف تحریر سکوائر پر رات بھر مظاہرین آتے رہے۔ اخوان المسلمین کا کہنا ہے کہ وہ تحریر سکوائر پر اس وقت تک احتجاج جاری رکھیں گے جب تک نتائج کا اعلان نہیں ہو جاتا۔مبصرین کہتے ہیں کہ مصر اس وقت سیاسی اور آئینی تعطل کے دور سے گزر رہا ہے۔قاہرہ میں بی بی سی کے نامہ نگار جان لائن کا کہنا ہے کہ فوجی حکام کئی عشروں سے اخوان المسلمین سے بر سرپیکار رہے ہیں اس لیے اب شک اس بات پر کہ ان کی کامیابی کے باوجود فوجی کونسل انہیں اقتدار سونپے گی یا نہیں۔جان لائن کے مطابق ایسی بھی قیاس آرائیاں زوروں پر ہیں کہ اخوان المسلمین کی کامیابی پر یا تو انتخابات منسوخ کیے جا سکتے ہیں یا پھر دھاندلی کی جاسکتی ہے۔‘‘

    چنانچہ میں کہنے میں اپنے آپ کو حق بجانب سمجھتا ہوں کہ: دین ابلیس یعنی جمہوریت سے جس طرح بھی الحاق کر لو…… یہ تو کفر تک تو پہنچا کر ہی دَم لے گی؟
     
  15. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,487
    مصر كى صورت حال انتہائى بے يقينى كا شكار ہے ، متضاد دعووں اور خبروں كا سلسلہ جارى ہے :

    بی بى سى كے اندازے :
    ‭BBC Urdu‬ - ‮آس پاس‬ - ‮مصر: فوج کی تنبیہ کے باوجود احتجاج جاری‬

    جب كہ العربيہ کے مطابق :
    مصر:فوج کا مظاہرین کو انتباہ، میدان تحریر میں ڈاکٹر مرسی کی کامیابی کی تقریبات
     
  16. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,487
    مصری سپریم الیکشن کمیشن کے چیئرمین ایڈووکیٹ فاروق سلطان نے کہا ہے کہ صدارتی انتخابات کے حتمی نتائج کا اعلان کل اتوار کو کیا جائے گا۔
    الیکشن کمیشن کی جانب سےبھی جاری ایک بیان میں بتایا گیا ہے کہ حالیہ انتخابات کے دوران کامیاب قرار دیے گئے امیدوار کا اعلان اتوار کو مقامی وقت کے مطابق سہ پہر تین بجے کمیشن کے چیئرمین ایک پریس کانفرنس میں کریں گے۔
    درایں اثناء مصر میں لبرل طبقے کے ترجمان اخبار ’’الیوم السابع’’ نے اطلاع دی ہے کہ مذہبی جماعت اخوان المسلمون کے صدارتی امیدوار ڈاکٹر محمد مرسی کامیاب امیدوار قرار دیے گئے ہیں۔ اخوان المسلمون اور مذہبی جماعتوں کی مخالفت میں شہرت رکھنے والے اخبار نے ذرائع کے حوالے سے بتایا ہے کہ سابق وزیراعظم اور آزاد خیال امیدوار احمد شفیق کو صدارتی انتخابات میں شکست ہوچکی ہے، جس کے بعد کل الیکشن کمیشن کی جانب سے ڈاکٹر محمد مرسی ہی کی کامیابی کا اعلان کیا جائے گا۔
    تفصيلات :
    مصر: ڈاکٹر مرسی کامیاب قرار، نتائج کا اعلان کل ہوگا:اخبار کا دعویٰ

    اگر واقعى كل ايسا ہو جاتا ہے تو يہ مصرى تاريخ كى پچھلى آٹھ دہائيوں ميں مذہبی سياست دانوں كى پہلى كاميابى ہو گی ۔ يقينا يہ ايك تاريخى موقع ہے ۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  17. محمد آصف مغل

    محمد آصف مغل -: منتظر :-

    شمولیت:
    ‏نومبر 18, 2011
    پیغامات:
    3,847
    اتوار کو مصر میں الیکشن کمیشن نے صدارتی انتخابات میں اخوان المسلیمین کے امیدوار محمد مرسی کو کامیاب قرار دیا ہے۔ انہوں نے اکاون اعشاریہ سات تین فیصد ووٹ حاصل کیے۔
    دوسری طرف مصر کے دارالحکومت قاہرہ کے التحریر سکوائر میں جشن کا سماں ہے، چوک میں گزشتہ تین دن سے صدر محمد مرسی کے ہزاروں حامی جمع ہیں۔
    اس کے علاوہ فتح کی خوشی میں جلوس نکالے جا رہے ہیں جبکہ انتخابی نتائج کے اعلان کے ساتھ ہی التحریر سکوائر محمد مرسی کے حق میں نعروں سے گونج اٹھا اور جیت کی خوشی میں آتش بازی کی گئی۔
    قاہرہ میں بی بی سی کے نامہ نگار کیون کونولی کا کہنا ہے کہ انتخابات میں محمد مرسی کی فتح مصر میں ایک بڑی تبدیلی کا لمحہ ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ ماضی میں اخوان المسلیمین کے کئی رہنماوں کو جیل میں رکھا گیا لیکن اب اسی جماعت کے ایک رہنما کو صدارتی محل میں بھیجا جا رہا ہے۔
    مصر میں اس وقت حکمران فوجی کونسل نے اعلان کیا ہے کہ رواں ماہ کی تیس تاریخ کو اقتدار نومنتخب صدر کے حوالے کر دیا جائے گا لیکن فوجی کونسل کی جانب سے پارلیمان کو تحلیل کرنے کی وجہ سے محمد مرسی کے ساتھ نہ تو قانون سازی کرنے والی پارلیمان ہوں گی اور نہ ہی اپنے دائرۂ اختیار کا تعین کرنے کے حوالے سے کوئی مستقل آئین موجود ہو گا۔


    بلا تبصرہ
     
    Last edited by a moderator: ‏جون 25, 2012
  18. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,487
    ماشاء اللہ ، اللہ اكبر ، ايك تاريخى مرحلہ بغير خون بہائے طے ہوا۔ اللہ تعالى ہر آنے والے دن كو بہتر بنائے ۔
    انقلاب پسند اتحادى گروہ كا اصل امتحان اب شروع ہوا ہے۔
     
  19. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,487
  20. ابوعکاشہ

    ابوعکاشہ منتظم

    رکن انتظامیہ

    شمولیت:
    ‏اگست 2, 2007
    پیغامات:
    15,903
    انا للہ وانا الیہ راجعون ۔ رحمن ملک سے بھی گئے گزرے ہیں ۔ اچھا ہوا کہ مصریوں کی جان چھوٹ گئی ۔
     
Loading...

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں