قادری مارچ ۔ تازہ خبریں

عائشہ نے 'خبریں' میں ‏جنوری 14, 2013 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,487
    کنینڈا میں ان کی تواضع کی تیاری بھی ہو گئی ہے ۔ یہ پاکستان تو نہیں کہ کھاؤ اور چھید کرو پھر بھی کوئی پوچھ تاچھ نہیں ۔
    کینیڈین پولیس نے قادری صاحب کو شہریت حاصل کرنے کے حلف کی خلاف ورزی پر طلب کر لیا ہے ۔
    Canadian authorities summon Qadri for violating oath The Express Tribune
     
  2. کنعان

    کنعان محسن

    شمولیت:
    ‏مئی 18, 2009
    پیغامات:
    2,850
    السلام علیکم

    چلیں اس خبر سے یہ تو علم ہوا کہ کینڈین گورنمنٹ کا اس مارچ سے کوئی تعلق نہیں تھا۔

    والسلام
     
  3. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,487
    ڈاکٹر طاہر القادری پاکستان سے کینیڈا نہیں جائیں گے

    لاہور … تحریک منہاج القرآن کے سربراہ علامہ ڈاکٹر طاہر القادری پاکستان سے کینیڈا نہیں جائیں گے، وہ پاکستان میں رہیں گے، ان کی واپسی کی خبروں میں کوئی صداقت نہیں ہے۔ تحریک منہاج القرآن کے ترجمان قاضی فیض الاسلام نے جیونیوز سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ ڈاکٹر طاہر القادری نے پاکستان آمد کے موقع پر واپسی کی ایک عارضی بکنگ کرائی تھی جو ایئر لائن کی ضرورت تھی۔ ترجمان کا یہ بھی کہنا تھاکہ ڈاکٹر طاہر القادری نے وطن آمد کے موقع پر بھی مختلف ایئر لائنزسے بکنگ کرا رکھی تھی اور واپسی کیلئے بھی ایئر لائن کو عارضی بکنگ دی تھی کیونکہ ایوی ایشن قوانین کے تحت واپسی کی بکنگ نہ ہو تو روانگی کی بکنگ کنفرم نہیں کی جاتی ۔
    ڈاکٹر طاہر القادری واپس کینیڈا نہیں جائیں گے، ترجمان منہاج القرآن
     
  4. irfan_channa

    irfan_channa -: محسن :-

    شمولیت:
    ‏اکتوبر، 10, 2010
    پیغامات:
    225
    اچھے لوگ بھی کیسی باتیں کرتے ہیں کبھی کبھی
    افسوس ہوا پڑھ کر
     
  5. رفی

    رفی -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏اگست 8, 2007
    پیغامات:
    12,399
    جی بھائی اس معاہدے میں نئی بات کونسی ہے سوائے اس کے کہ عوامی تحریک کے مکمل اتفاق رائے سے دو ناموں کی نامزدگی ہوگی، جبکہ عوامی تحریک کا وجود ہی نہیں!!!
     
  6. رفی

    رفی -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏اگست 8, 2007
    پیغامات:
    12,399
    و علیکم السلام!
    اگر آپ کو پاکستان کے شرعی ماحول کا اندازہ ہے تو میری بات پر حیران نہیں ہونا چاہئے۔ ایک کالج/یونیورسٹی کے مخلوط ٹرپ پر کیا کچھ ہوتا ہے یہ تو بتانے کی ضرورت نہیں۔ یہ بھی ایک ادارے کی طرف سے آرگنائز کیا گیا ایسا ہی ٹرپ تھا۔ جہاں سب فرشتے عبادت کے لئے اکٹھے نہیں ہوئے تھے۔ بلکہ مذہبی فرائض کی ادائیگی تو موخر ہوتی رہی۔

    میری سوچ پر کوئی کیا اندازہ لگاتا ہے وہ اہم نہیں اہم اور قابلِ غور بات یہ ہے کہ جس شیخ الاسلام کی موجودگی میں شرعی امور کو نظرانداز کرتے ہوئے موسیقی و باجماعت مخلوط رقص و سرود کی محافل جیسے شیطانی امور برلبِ سڑک سرانجام دیئے گئے اور انہوں نے اس کی مکمل حمایت کی ان کی سوچ کس قدر اعلٰی اور پاکیزہ ہے؟

    مزاروں، درگاہوں، عرس اور میلوں پر کیا کچھ ہوتا ہے یا نام نہاد پیروں نے کتنی عصمتیں لوٹیں اس پر بات نہیں کرنا چاہتا صرف یہ کہوں گا جو فقہ خواتین کو مساجد میں باجماعت نماز کی اجازت فتنے کے ڈر سے نہ دے وہ انہی خواتین کو گھروں سے باہر لانے پر ذرا بھی نہیں شرمائی۔

    بہت سے ایسے افراد جنہیں اپنا لانگ مارچ میں شامل ہونے کا مقصد بھی معلوم نہیں تھا ایسے میں کتنے ہوں گے جو اپنے گھناؤنے مقاصد کی تکمیل کے لئے بھی شریک ہوئے ہوں گے۔ ایسی کہانیوں سے پردہ وقت آنے پر اُٹھے گا، لیکن اس سے کوئی ذی شعور انکار نہیں کر سکتا کہ جہاں پر مرد و خواتین کا مخلوط اجتماع ہوگا وہاں فتنہ موجود ہوگا۔ اگر موڈریٹ اسلام کا خمار شیخ صاحب اور منھاجینز پر اتنا ہی چڑھا ہوا ہے توڈیٹنگ جیسی روشن خیال اور عام فہم اصطلاح کو بھی کھلے دل سے قبول کرنا چاہئے۔ اور تو اور بعض پولیس والے بھی دل پشوری کرنے سے باز نہیں رہے اور انہیں اتنا جلدی معاملے کے لپیٹ لئے جانے پر دکھ ہوا ہے۔

    حقیقت کے اس تلخ پہلو کی نشاندہی کرنے پر اگر آپ کی دل آزاری ہوئی ہو تو معذرت!
     
  7. کنعان

    کنعان محسن

    شمولیت:
    ‏مئی 18, 2009
    پیغامات:
    2,850
    السلام علیکم

    محترم شرعی ماحول پاکستان کا ہو یا سعودی عرب کا میں ہر بہن بیٹی کی عزت کی حفاظت کے لئے اللہ سبحان تعالی سے ہمیشہ دعاگو ہوں۔

    اپنی اس منفی سوچ سے ہی اندازہ لے لیں کالج و یونیورسٹی میں جو ایسا کرتا ھے وہی ایسی لکھتا ھے۔

    ہر مرد کو یہ بات لکھتے ہوئے سوچنا چاہئے کہ اگر وہ کالج یا یونیورسٹی میں گیا ھے تو اس کے گھر میں اس کی بہنیں اور عزیز رشتہ داروں کی کزن سسٹرز نے بھی تعلیم حاصل کی ہو گی۔ اس کے علاوہ اس فارم میں کچھ فی میل ممبران بھی ایسی ہیں جنہوں نے کالج یا یونیورسٹی تک تعلیم حاصل کی ھے وہ بھی آپ کے رویہ اور سوچ پر شائد متاثر نہ ہوں۔

    اگر اسے پہلے سوچنے کا موقع نہیں ملا تو پھر اس نے بھی اولاد پائی ھے، سعودی عرب میں کالج تک تو وہ انہیں تعلیم دلوائے گا اور اس کے بعد باقی مانندہ تعلیم تو پاکستان سے ہی مکمل کروانی ہو گی۔

    جو دوسرں پر ایسے خیالات رکھتا ھے اور اس انتظار میں ھے کہ بعد میں میڈیا ریلیز کرے گی تو ایسی سوچ اسے مبارک ہو۔

    والسلام
     
  8. اہل الحدیث

    اہل الحدیث -: رکن مکتبہ اسلامیہ :-

    شمولیت:
    ‏مارچ 24, 2009
    پیغامات:
    5,050
    اردو ادب کے ماہرین سے معذرت کے ساتھ، ایک نظم جو ہم نے "شیخ الاسلام!" کے حوالے سے لکھی ہے، پیش خدمت کرنا چاہتے ہیں۔ اس نظم کا بنیادی خاکہ شورش کی ایک نظم دو ابوالکلام سے لیا گیا ہے۔ شورش کی نظم بھی شاید کسی ایسے ہی نام نہاد عالم کے لیے لکھی گئی تھی اس وجہ سے اسی نظم کے بیشتر اشعار ہمیں انہی شیخ الاسلام کی یاد دلاتے ہیں۔انہیں ہم نے اس نظم میں ویسے ہی رہنے دیا ہے اور بعض جگہ کچھ ضروری اضافے کیے ہیں۔ ادبی اعتبار سے ہمیں شورش سے معذرت بھی کرنا چاہیے لیکن چونکہ وہ اس دنیا میں نہیں رہے، لہذا اس کا کوئی فائدہ نہیں ہے۔ نظم پیشِ خدمت ہے

    دو شیخ الاسلام

    اک وہ شیخ الاسلام تھے ، اک یہ شیخ الاسلام!
    وہ شہسوارِ علم تھے ، یہ خنگِ بے لگام

    اِس کی زباں لطائفِ ارزاں سے بہرہ یاب
    اُس کے قلم کی نوک کے افکار تھے غلام

    اِس سے علم کی سطوت ِپارینہ شرمسار
    اُس کے تبحر کا ہےمشرق ومغرب میں احترام

    اِس سے کلاہِ فقر کی تقدیس خستہ حال
    وہ پیروئ خلقِ پیغمبر ﷺ میں لاکلام

    خانۂِ شیطان ہے اِس کا دل ودماغ
    تھا اُس کا علم وفضل میں اعلیٰ ترین مقام

    یہ بکتر بند میں بیٹھ کرکرے ہے خود آرام
    وہ معرکہ حق وباطل میں تھا شمشیرِ بے نیام

    اِس کی نگاہ سادہ مریدوں کی جیب پر
    اُس کی نگاہ میں دولتِ دنیائے دوں حرام

    اِس کے جلو میں مسخرگی کی روائتیں
    باعزت و باوقار تھااُس کا ہر ایک کام

    چرچا ہے اِس کے نام کا بازارِ شرک میں
    اُس نے کیا تھا قلعۂِ بدعت کا انہدام

    اِس نے لیا ہے وحدتِ ادیان کاہرسوُ نام
    توڑا تھا اُس نے لشکرِ باطل کا احتشام

    وہ تیروں کے سامنے کھڑا تھا بے خطر
    اِس نے ڈبو دیا ہے حسینیت کا ہی نام

    سرو و سمن کے شہر میں ہجومِ بے ہنگام
    صر صر کے ہاتھ میں گل و لالہ کا انتظام

    اس حادثے پہ اس کے سوا اور کیا کہوں
    اللہ رے مینڈکی کو بھی ہونے لگا زکام

    یہ کیا ستم کہ ایک نصاریٰ کا خوشہ چیں
    بدنام کر رہا ہےانقلابیوں کا نیک نام

    اُٹھا ہے اِس کے دیدہ و دل سے خدا کا خوف
    بیچا ہے اس نے سنتِ خیر البشر ﷺ کا نام

    دونوں کا فرق دیدۂ ِ بینا پہ واشگاف
    اک وہ شیخ الاسلام تھے اک یہ شیخ الاسلام!

    اُس کا وجود عظمت اسلاف کی دلیل
    اِس کا کسی مقام پر کوئی نہیں مقام

    اسلام اِس کی شرک نوازی کا نوحہ گر
    توحید اس کے زورِ قلم سے شادکام

    سادہ دل عوام کی جیبوں کا مال و زر
    اِس کے لیے حلال ہے، تھا اُس کے لیے حرام

    میں باخبر ہوں اِس کے نشیب و فراز سے
    میں جانتا ہوں اِس کی خطیبانہ دھوم دھام

    محفوظ ہو نہ جس سےمحدثین کی آبرو
    وہ شخص ہو کا خائب و خاسر بہ التزام

    ہاتھ آ گئی دولتِ کون و مکاں مجھے
    میں نے نبیﷺ کا دامنِ اقدس لیا ہے تھام

    شورش ہے چار دانگ میں تیرے قلم کی دھاک
    تیری نظم ہو گئی ہے مقبولِ خاص و عام







    آخر میں ایک اور اہم بات بتلاتے چلیں۔ ہم اس نام نہاد شیخ الاسلام کو امام ابنِ تیمیہ رحمہ اللہ کی جوتی کی خاک کے برابر بھی نہیں سمجھتے۔
     
    Last edited by a moderator: ‏جنوری 18, 2013
  9. رفی

    رفی -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏اگست 8, 2007
    پیغامات:
    12,399
    و علیکم السلام

    کو ایجوکیشن پر الگ سے بحث کی جا سکتی ہے۔ یہاں پر دھرنے پر اپ ڈیٹس ، خبروں اور تبصروں پر بات ہو رہی ہے تو میک اپ اور فیشن زدہ منھاجین مائیں بہنیں شاید آپ کی نظر سے بھی گزری ہوتیں تو ان کے اعتکاف کی نیت سمجھنا مزید آسان ہو جاتا۔ بہرحال جو برائی کو دیکھ کر آنکھیں بند کرنے میں عافیت سمجھتے ہیں ان کے ایسا کرنے سے برائی ٹل نہیں جاتی!

    میڈیا کی اپنی مجبوریاں ہیں اس کے باوجود سماء ٹی وی نے دھرنے کے شرکاء کے فیشنی رحجانات کو اجاگر کیا ہے۔
     
  10. کنعان

    کنعان محسن

    شمولیت:
    ‏مئی 18, 2009
    پیغامات:
    2,850
    السلام علیکم

    مراسلہ نمبر 86 میں سب سے نیچے والی بار پر نظر رکھیں دیکھتے ہیں اس فارم کی کونسی پریزنٹ سسٹر جس نے کالج یا یونیورسٹی سے تعلیم حاصل کی ہوئی ھے اور وہ آپکی بات سے اتفاق کرتی ھے۔

    والسلام
     
  11. ابوعکاشہ

    ابوعکاشہ منتظم

    رکن انتظامیہ

    شمولیت:
    ‏اگست 2, 2007
    پیغامات:
    15,903
    بہت عمدہ ، شکریہ ۔نظم تو مقبول خاس‌ہو ہی گئی ، مزید نظموں کا انتظار ہے ۔
     
  12. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,487
    سولہ آنے سچ ۔ یہاں خواتین کا مجمع سڑکوں پر استراحت فرما تھا ۔ رات میں سردی سے یہ لوگ سوتے نہیں تھے ، صبح دھوپ کی تمازت سے نیند آتی تھی اور الامان الحفیظ ۔ بعض اخباروں نے بے خبر پڑے افراد کی تصاویر شائع کیں ۔ پاکستانی میڈیا کو سلام جس نے اس کوڑے سے نظریں پھیرے رکھیں ۔ مشرق کے لوگوں کی مجبوری ہے سچ بھی ایک حد تک بول سکتے ہیں ، شاید سب نے مذہبی ہونے کی بنا پر لحاظ کیا ۔ لاؤڈ سپیکر پر تیز موسیقی والے بے ہنگم نغمے لگا کر سڑک پر کھلے عام اچھل اچھل کر نعرے لگائے جا رہے تھے ۔ (مجھے یوآنے رڈلی کا مضمون پوپ کلچر ان دی نیم آف اسلام یاد آ رہا تھا ) روز بہروپ بدلنے والے بہروپیے مذہبی عالم کا وقتی سوانگ بھر تو سکتے ہیں لیکن وہ تقوی وہ خشیت الہی کہاں سے لائیں ۔ کسی فقہ تو کجا یہ بنیادی اخلاقیات کے بھی پاس دار نہیں ۔ اپنی بہو بیٹے کو آرام دہ کنٹینر میں رکھا اور غریبوں کی بیٹیاں کھلی سڑکوں پر رات گزارتی رہیں ۔
     
  13. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,487
    کینیڈین حلف کی خلاف ورزی

    قادری اپیل کریں گے
    Oath violation: Qadri to file appeal in Canadian federal court The Express Tribune
    کینیڈین پولیس کے سمن کے جواب میں قادری نے کینیڈین فیڈرل کورٹ میں اپیل کرنے کا فیصلہ کیا ہے ، اس کے لیے چار وکیل ہائر کر لیے ہیں جو اس کی کورٹ میں پیش ہوں گے ۔
    جس وکیل نے پناہ کی درخواست کی تھی اس نے بھی سمن کو کنٹیسٹ کرنے سے انکار کر دیا ہے ۔
    کینیڈین اداروں کا موقف ہے کہ پناہ لینے والا شخص اس ملک میں دندنا نہیں سکتا جس سے بھاگ کر اس نے کینیڈا میں پناہ لی ہو ۔ اداروں نے ۵ فروری کو اس کو طلب کر رکھا ہے اور وضاحت مانگی ہے ۔
     
  14. رفی

    رفی -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏اگست 8, 2007
    پیغامات:
    12,399
    قادری صاحب پر پاکستان میں بھی آئینی مقدمہ دائر کیا جا سکتا ہے، افسوس کہ میرے پاس تو اس کی پیروی کے لئے وسائل نہیں، اللہ کرے کہ چیف صاحب خود ہی سوموٹو ایکشن لے لیں:

    1: ان کی تقاریر میں حکومتِ پاکستان کی رٹ کو بارہا چیلنچ کیا گیا جو کہ اقدامِ بغاوت کے زمرے میں آتا ہے۔

    2: کینیڈین نیشنلٹی کی بناء پر اسے بیرونی مداخلت سمجھا جائے۔

    3: حکومت اور قادری صاحب کا غیر آئینی معاہدہ، جس کی رو سے نگران حکومت کے سیٹ اپ میں قادری صاحب کا مشورہ یقینی بنایا گیا۔ کل کو کوئی بھی غیر جمھوری عنصر تیس چالیس ہزار لوگ اکٹھے کر کے ایسا تماشہ لگا سکتا ہے اور اپنے ناجائز مطالبات منوا سکتا ہے۔

    4: چار سو بیسی کا مقدمہ، لوگوں کے گھر، زیورات، گاڑیاں ناجائز طریقے سے ہتھیانا!

    سو اینڈ سو ۔ ۔ ۔ ۔
     
  15. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,487
    کاش کہ پاکستان میں بڑی مچھلیاں پکڑی جاتیں : (
     
  16. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,487
    زرداری نے حسب معمول وقتی لولی پوپ دیا تھا ۔ اب وہی کر دیا ہے جوعموما وہ معاہدوں سے کرنے کا عادی ہے ۔
    ‮پاکستان‬ - ‭BBC Urdu‬ - ‮انتخابات بلا تاخیر کے وقت پر ہونگے، صدر زرداری‬
    یعنی انتخابی اصلاحات اور الیکشن کمیشن کی تشکیل نو کے معاہدے سب دریا برد ۔
     
  17. منصف

    منصف -: منفرد :-

    شمولیت:
    ‏جولائی 10, 2008
    پیغامات:
    1,920
    کینٹینر شو !
    چار دن کے کینٹینر شو اور اسکی کامیابی کے بعد ، قادری صاحب نے سوچا کہ جب کینٹینر شو کامیاب ہوسکتا ہے تو کیوں نہ انتخابات میں بھی حصہ لیا جائے
    (جو کہ شائد یہی انکا ایجنڈا تھا- واللہ اعلم !) تبھی سننے میں آرہا ہے کہ شائد اب وہ انتخابات میں باقاعدہ حصہ لینے کا سوچ رہے ہیں ۔۔۔
    کمال کا دماغ پایا ہے ۔۔۔۔اگر ایسا ہوگیا تو یہ ان تمام سیاسی جماعتوں سے زیادہ ہوشیار نکلے جو اپنے انتخابی مہم زور شور سے جاری رکھے ہوئے تھے
    لیکن قادری صاحب نے آتے ہیں لاکھوں کا مجمع اکھٹا کیا اور اب انکی گنتی کے بعد انتخابات کا سوچ رہے ہیں ۔۔۔زیادہ محنت کرنی نہیں پڑی ۔۔
    تاہم جن سے انکا مقابلہ ہوگا وہ بھی کوئی نئے بچے نہیں ۔۔۔وہ اس میدان کے کافی گھاگ کھلاڑی ہیں ، اتنے آسانی سے بازی نہیں ہارنے والے ۔۔
    ہر سیاسی جماعت کو یقین ہوتا ہے وہ کوئی بھی پپٹ شو دکھائے ، عوام نے پھر بھی اسی کو ووٹ دینا ہے ۔۔۔۔
    کیونکہ عوام کی اکثریت ہے ہی پرلے درجے کی جاہل و بے وقوف
     
  18. کنعان

    کنعان محسن

    شمولیت:
    ‏مئی 18, 2009
    پیغامات:
    2,850
    میڈیا اور تجزیہ کار اب یہ مان لینا چاہیے کہ میڈیا اور ہمارے تجزیہ کاروں نے علامہ طاہرالقادری کو انڈر اسٹیمیٹ کیا۔ وہ علامہ صاحب کے شخصی اثر اور قوت کا اندازہ نہ لگا سکے۔

    میڈیا کے بیشتر حصے کو یقین تھا کہ لانگ مارچ ہو ہی نہیں سکے گا۔ دھرنے کے دوران بھی کوریج کرتے ہوئے انہیں شرکاء کے موڈ کا اندازہ نہیں ہوسکا۔

    کئی اینکر خواتین چیختی رہیں کہ آپ لوگوں کو سردی کیوں نہیں لگ رہی، بچے بیمار ہوجائیں گے وغیرہ وغیرہ۔ انہیں سمجھنا چاہیے تھا کہ لوگ کسی جذبے اور کمٹمنٹ کے ساتھ ہی یہاں تک آئے ہیں اور یہ یوں واپس نہیں جائیں گے۔

    ہمارے اہل دانش اور تجزیہ کاروں نے سب سے اہم غلطی یہ کی کہ انہوں نے طاہرالقادری کی شخصیت کو بے رحمی سے نشانہ بنایا، مگر ان کے ایجنڈے کو نظر انداز کر گئے۔ انہیں یہ ادراک نہ ہوسکا کہ انتخابی اصلاحات کرنا اور تبدیلی لانے کے ایجنڈے کی عوام میں زبردست کشش موجود ہے۔

    قادری صاحب نے اس خلا میں قدم رکھا، جو ہماری دوسری سیاسی جماعتیں پر کرنے میں ناکام رہیں۔ جیسا کہ شرکا کے انٹرویوز سے ظاہر بھی ہوا کہ ان میں تمام لوگ منہاج القرآن کے نہیں تھے، بہت سے لوگوں نے بتایا کہ وہ عمران خان کے ووٹر ہیں، بعض دوسری جماعتوں کے حامی بھی تھے۔ ایجنڈے پر زیادہ بات ہونا چاہیے تھی، وہ نہ ہو سکی اور تمسخر، پیروڈی، طنز وتشنیع ہمارے میڈیا پر حاوی رہے۔

    یہی وجہ ہے کہ جمعہ کو دھرنے کی کامیابی کے بعد بہت سے اینکروں اور تجزیہ کاروں کو سمجھ نہیں آ رہی تھی کہ کیا ردعمل دیں۔ جن باتوں کا وہ مذاق اڑاتے رہے، وہ تقریباً سب مان لی گئیں۔ جہاں تک اسمبلیوں کی تحلیل اور الیکشن کمیشن کی فوری تشکیل کی بات تھی، یہ دبائو بڑھانے کا حربہ تھا، حقیقی مطالبہ نہیں تھا۔

    میڈیا اور انٹیلی جنشیا کو آنے والے دنوں میں زیادہ محتاط اور باریک بین ہونا پڑے گا۔ اس دھرنے کے پرامن اختتام نے یہ ثابت کر دیا کہ اسٹیبلشمنٹ کی رٹ لگانے والے تجزیہ کاروں نے ٹھوکر کھائی، اصولاً تو انہیں اپنے قارئین اور ناظرین سے معذرت کرنی چاہیے، مگرافسوس کہ ہمارے ہاں ایسی اچھی روایتیں موجود نہیں۔

    کیننیڈا کی اپیل

    ح
     
    Last edited by a moderator: ‏جنوری 21, 2013
Loading...

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں