شیعہ کہتے ہیں کے نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کی نماز جنازہ صحابہ کرام نے نہیں پڑھی

قمر عباس نے 'غیر اسلامی افکار و نظریات' میں ‏جنوری 16, 2015 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. قمر عباس

    قمر عباس رکن اردو مجلس

    شمولیت:
    ‏جنوری 13, 2015
    پیغامات:
    10
    كيا نبی اکرمﷺکی نمازِجنازہ ہوئی تھی؟
    ==================
    اس بارے راجح اور مبنی برحق موقف جمہور علماء کا ہےکہ اُنہوں (صحابہ)نے آپﷺ کی انفرادی نماز جنازہ پڑھی تھی (محض دعا پراکتفا نہ کیا تھا)۔چنانچہ ایک جماعت حجرہ شریف میں داخل ہوتی تو وہ انفرادی نمازِ جنازہ پڑھ کر باہر آجاتی، پھر دوسرا گروہ داخل ہوتا اور اس طرح از خود نمازِ جنازہ کااہتمام کرتا۔
    ایک اشکال: نبیﷺ کی نمازِ جنازہ باجماعت کیوں نہ پڑھی گئی؟
    ------------------------------------------
    صحابہ کرام نےنبی اکرمﷺ کی نمازِ جنازہ کا باجماعت اہتمام کیوں نہ کیا اوروہ کون سے عوامل و اسباب تھے جن کی وجہ سے صحابہ کرام رضوان اللہ اجمعین نے انفرادی طور پر آپﷺ کی نمازِ جنازہ پڑھنےکو فوقیت دی؟ اس بارے علما کے کئی اقوال ہیں جن میں سے صرف راجح قول کی نشاندہی کی جا رہی ہے۔
    صحابہ کرام کے نبیﷺ کی انفراداً نماز جنازہ پڑھنے کے اسباب میں راحج قول یہ ہے کہ آپﷺ کے احترام و فضیلت کی وجہ اور تمام صحابہ کرام رضوان اللہ اجمعین کی اس شدید خواہش اور لگن کی وجہ سے کہ وہ تمام انفراداً نمازِ جنازہ پڑھ کر برکت حاصل کریں،بایں طور کہ ان کا کوئی پیش امام نہ ہو اور ان کے او رنبیﷺ کےدرمیان کوئی تیسرا فرد حائل نہ ہو تاکہ ان کے اجروثواب اور برکت کے حصول میں کمی واقع نہ ہو۔ یہ وہ محرکات تھے جن کی وجہ سے صحابہ کرام اجمعین آپﷺ کی نمازِ جنازہ انفرادی طور پر پڑھنے کے لئے متفق ہوئے تھے۔
    امام شافعی ؒبیان کرتے ہیں:
    صلی الناس علی رسول الله ﷺ أفرادًا ولا یؤمهم أحد، وذلك لعظم أمر رسول ﷺ وتنافسهم في أن لا یتولى الإمامة في الصلاة علیه واحد
    ’’لوگوں نے رسول اللہﷺ کی نمازِ جنازہ فرداً فرداً پڑھی اور کسی بھی شخص نے اُنہیں نماز باجماعت کی امامت نہ کرائی ،کیونکہ ایک تو آپﷺ کی عظمت و احترام ملحوظ تھا، دوسرا صحابہ کرام کا اس اجروثواب میں ہم سری کا جذبہ موجزن تھا کہ آپﷺ کی نمازِ جنازہ کی امامت کاکوئی ایک شخص مستحق نہ ٹھہرے۔(بلکہ وہ تمام لوگ اس اجر وثواب میں برابر کے شریک ٹھہریں)
    امام قرطبیؒ لکھتے ہیں:
    أرادوا أن یأخذ کل أحد برکته مخصوصًا دون أن یکون فيها تابعًا لغیره
    ’’(صحابہ کرام رضوان اللہ اجمعین آپﷺ کی نمازِ باجماعت کے اس لئے قائل نہ ہوئے کہ) اُن میں سے ہر شخص آپﷺ کی نمازِ جنازہ کی برکت خاص کو بایں صورت حاصل کرنا چاہتا تھا کہ کوئی شخص اس برکت میں کسی دوسرے کا تابع نہ بنے (بلکہ وہ تمام اس اجروثواب اور برکت کےبرابر مستحق ٹھہریں)۔
    ============== مجهے شیعہ کی کتاب سے حوالہ کوئی دے سکتا ہے کے صحابہ نے نبی کریم کی نماز جنازہ پڑئ تهی جزاک اللہ خیر
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  2. ابوعکاشہ

    ابوعکاشہ منتظم

    رکن انتظامیہ

    شمولیت:
    ‏اگست 2, 2007
    پیغامات:
    15,954
    ان کی کتب میں یہ حوالہ تو موجود ہے کہ صحابہ کرامؓ نے نماز جنازہ نہیں پڑھی تھی ـ جس کا رد بھی اہل علم کی طرف سے کیا گیا ہے ـ البتہ نماز جنازہ پڑھنے والی بات نظر نہیں گزری ـ اگرحوالہ مل گیا تو شیئر کردیں گے ان شاء اللہ ـ
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 2
  3. آزاد

    آزاد ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏دسمبر 21, 2007
    پیغامات:
    4,558
    نبی کا جنازہ تمام مہاجرین اور انصار نے پڑھا تھا جلاء العیون.jpg
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 5
  4. قمر عباس

    قمر عباس رکن اردو مجلس

    شمولیت:
    ‏جنوری 13, 2015
    پیغامات:
    10
    جزاک اللہ خیرا الله اپکے علم اور صحت میں اضافہ کرے
     
    Last edited by a moderator: ‏جنوری 18, 2015
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  5. قمر عباس

    قمر عباس رکن اردو مجلس

    شمولیت:
    ‏جنوری 13, 2015
    پیغامات:
    10
    اسلام علیکم ازاد بهائ اس کتاب کا پورا پیج دے اور کتاب کا لنک بهئ بهیجے
     
  6. قمر عباس

    قمر عباس رکن اردو مجلس

    شمولیت:
    ‏جنوری 13, 2015
    پیغامات:
    10
    یہ بھی دیکھنا
     
  7. آزاد

    آزاد ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏دسمبر 21, 2007
    پیغامات:
    4,558
    گوگل پر سرچ کریں، آپ کو مل جائے گی۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  8. قمر عباس

    قمر عباس رکن اردو مجلس

    شمولیت:
    ‏جنوری 13, 2015
    پیغامات:
    10
    حضرت عمر رضی اللہ عنہ اور ابو بکر رضی اللہ عنہ نے نماز جنازہ پڑھا تھا
     
Loading...

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں