اقوال سلف

عبدالرحیم نے 'مَجلِسُ طُلابِ العِلمِ' میں ‏مارچ 24, 2016 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. عبدالرحیم

    عبدالرحیم -: ماہر :-

    شمولیت:
    ‏جنوری 22, 2012
    پیغامات:
    902
    امام شعبی رحمه الله نے فرمایا :

    تم میں ایک آدمی سے کوئی مسئلہ پوچھا جائے تو وہ دیر لگائے بغیر اس میں فتوی دے دیتا ہے ۔

    یہی مسئلہ اگر سیدنا عمربن خطاب سے پوچھا جاتا تو وہ اس کے لئے بدری صحابہ کو مشورہ کے لئے جمع کرتے۔

    سير أعلام النبلاء 5/416
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  2. عبدالرحیم

    عبدالرحیم -: ماہر :-

    شمولیت:
    ‏جنوری 22, 2012
    پیغامات:
    902
    حضرت فضیل بن عیاض رحمہ اللہ سے تواضع و انکساری کے بارے میں پوچھا گیا تو آپ نے فرمایا :

    تواضع و انکساری اختیار کرنے والا وہ ہے جو حق بات پر جھک جائے اور حق بات کہنے والا خواہ کوئی بھی ہو، اسے فوری قبول کرے۔

    مدارج السالكين ٢٤٣/٢
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  3. عبدالرحیم

    عبدالرحیم -: ماہر :-

    شمولیت:
    ‏جنوری 22, 2012
    پیغامات:
    902
    علامہ حافظ ابن قيم رحمہ اللہ نے فرمایا :

    اپنے دل کو تین مقامات میں ٹٹول کر دیکھو :
    - قرآن مجید سنتے وقت
    - علم کی مجلس میں
    - اور خلوت کے اوقات میں

    اگر ان تین مقامات میں اگر دل پر ایمانی کیفیت طاری نہ ہوتے دیکھو تو جان لو کہ تمہارے پاس دل ہی نہیں۔

    بدائع الفوائد 1/149
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 2
  4. عبدالرحیم

    عبدالرحیم -: ماہر :-

    شمولیت:
    ‏جنوری 22, 2012
    پیغامات:
    902
    *اپنے گهروں کا جائزہ لیجئے*

    قال العلامة ابن باز رحمه الله:

    فكلما كان أهل البيت أكثر قراءة للقرآن، وأكثر مذاكرة للأحاديث، وأكثر ذكرا لله وتسبيحا وتهليلا، كان أسلم من الشياطين وأبعد منها.

    ♦وكلما كان البيت مملوءا بالغفلة، وأسبابها من الأغاني والملاهي والقيل والقال، كان أقرب إلى وجود الشياطين المشجعة على الباطل.
    ____________________

    ابن باز رحمہ اللہ فرماتے ہیں :
    *جس گھر والے جتنا زیاده قرآن پڑهیں گے، پیارے رسول صلی اللہ علیہ وسلم کی احادیث کا مذاکرہ کریں گے اور اللہ کے ذکر و اذکار ميں مصروف رہیں گے وه گھر اتنا ہی زیادہ شیطان سے دور اور ان کی آفات و شرور سے محفوظ رہے گا.*
    *اس کے بر عکس جس گھر والے جتنا زیادہ اللہ کے ذکر و اذکار سے غافل و لاپرواہ ہوں گے یعنی گانے بجانے، لہو و لعب اور قیل و قال میں مصروف رہیں گے اس گھر ميں اتنا ہی زیادہ شیطانوں کا بسیرا ہوگا.*

    الفوائد العلمية من الدروس البازية: [١ /١٤٢]
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 2
  5. عبدالرحیم

    عبدالرحیم -: ماہر :-

    شمولیت:
    ‏جنوری 22, 2012
    پیغامات:
    902
    رسول الله ﷺ نے فرمایا :

    مَن حفرَ ماءً لَم يشربْ منه كَبِدٌ حَرَّى مِن جنٍّ و لا إنسٍ ولا طائرٍ ؛ إلَّا آجَرَهُ اللهُ يومَ القيامةِ۔

    جس نے کوئی کنواں کھدوایا اور اس سے کسی پیاسے انسان، جن یا چرند پرند نے پیا تو اس کا اجر قیامت کے دن اسے ضرور ملے گا۔

    صحيح الترغيب 963


    علامہ حافظ ابن قيم رحمہ اللہ نے فرمایا :

    دنیا میں مصیبت، تکلیف اور آزمائش نہ ہوتی تو بندوں میں تکبر، غرور، فرعونیت اور دل کی سختی پیدا ہوتی اور یہی چیزیں ان کی ہلاکت کا باعث بنتیں۔

    زاد المعاد 4/179
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  6. عبدالرحیم

    عبدالرحیم -: ماہر :-

    شمولیت:
    ‏جنوری 22, 2012
    پیغامات:
    902
    حافظ ابن رجب رحمه الله نے فرمایا :

    اللہ کی راہ میں دل کا سفر بدن کے سفر سے زیادہ اہم ہے.

    کتنے ہی مسافر ایسے ہیں جو اللہ کے گھر تک پہنچنے میں کامیاب ہوجاتے ہیں مگر گھر کے رب سے دور ہوتے ہیں.

    کتنے ایسے بھی ہیں جو اپنے گھروں میں بیٹھے ہیں مگر ان کے دل رب سے جڑے ہوئے ہیں.

    لطائف المعارف 2/252
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 2
  7. عبدالرحیم

    عبدالرحیم -: ماہر :-

    شمولیت:
    ‏جنوری 22, 2012
    پیغامات:
    902
    یہ سب آخری زمانے کے فتنے ہیں!!

    علامہ نواب صدیق حسن خان رحمہ اللہ (1890ء) لکھتے ہیں :

    معاصرین کی کیفیت استدلال کو دیکھ کر مجھے تعجب ہوتا ہے۔ وہ لوگ جو علماء دین کے نام سے مشہور ہیں ، وہ اخبار کی ایڈیٹری تو خوب جانتے ہیں اور بحثِ مسائل میں بھی اسی (ایڈیٹرانہ) روش پر چلتے ہیں۔ لیکن جو بات مقصودِ شرع اور مطلوبِ دین ہے ، اس کے علم و فہم سے کوسوں دور ہیں ۔
    اسی وجہ سے اِس زمانہ میں دین لہو ولعب بلکہ عبث ٹھہر گیا ہے ، نہ کسی کا حفظِ ادب ہے ، نہ کسی مسئلہ میں انصاف ۔ الا ماشاء اللہ ! یہ سب آخری زمانہ کے فتنے ہیں ۔ معلوم نہیں کہ اس کے بعد کیا ہوگا " ۔

    (خود نوشت سوانح حیات نواب محمد صدیق حسن خان :92)
     
  8. عبدالرحیم

    عبدالرحیم -: ماہر :-

    شمولیت:
    ‏جنوری 22, 2012
    پیغامات:
    902
    کفارسےمشابہت

    ابن تیمیہ فرماتے ہیں :

    " اللہ کے دین کے اور شرائع کے مٹنے کی اصل وجہ کفر، معاصی اور کافروں سے مشابہت اختیار کرنا ہے "

    _____________________________

    ‏قال شيخ الإسلام أحمد بن تيمية الحراني -رحمه الله- :

    (( أصل دروس دين الله وشرائعه وظهور الكفر والمعاصي التشبه بالكافرين ))

    [ إقتضاء الصراط المستقيم ص 352 ]
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  9. عبدالرحیم

    عبدالرحیم -: ماہر :-

    شمولیت:
    ‏جنوری 22, 2012
    پیغامات:
    902
    شہادت حسین سے متعلق دو متضاد بدعتیں

    ابن تیمیہ کہتے ہیں :

    " حسین رضی اللہ عنہ کی شہادت کے سبب شیطان نے دو بدعتیں لوگوں کے لیے گھڑیں ؛ ایک عاشورا کے دن غمگینی اور مارپیٹ اور دوسری مسرت و خوشی والی بدعت "

    قال ابن تيمية:

    ’’ وصار الشيطان بسبب قتلِ الحسين
    يُحدث للناس بدعتَين:
    - بدعة الحزن واللطم يومَ عاشوراء
    - وبدعة الفرح والسرور ‘‘

    [ منهاج السُّنَّة 554/4 ]
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  10. عبدالرحیم

    عبدالرحیم -: ماہر :-

    شمولیت:
    ‏جنوری 22, 2012
    پیغامات:
    902
    مومن درخت کی مانند ہے

    علامہ حافظ ابن قیم رحمہ اللہ نے فرمایا :
    جس طرح درخت کی زندگی پانی سے وابستہ ہے اور پانی کے بغیر درخت زندہ نہیں رہ سکتا اسی طرح انسان کے دل میں اسلام کے درخت کا معاملہ ہے۔

    دل میں اسلام کے درخت کو بھی نافع علم اور صالح عمل کی ضرورت ہے۔ ذکر و اذکار اور تدبر و تفکر کے بغیر یہ درخت خشک ہوجائے گا۔

    إعلَامُ المُوقَعِين 1/134
     

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں