امام کعبہ کا دورہ اور مفتی منیب

اعجاز علی شاہ نے 'اركان مجلس كے مضامين' میں ‏اپریل 30, 2015 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. اعجاز علی شاہ

    اعجاز علی شاہ -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏اگست 10, 2007
    پیغامات:
    10,214
    ایک طرف امام کعبہ ڈاکٹر خالد الغامدی پاکستان میں مہمان بن کر جگہ جگہ دورے کررہے ہیں دوسری طرف مفتی منیب صاحب ان کے خلاف کالم لکھ رہے ہیں۔ حالانکہ ڈاکٹر خالد الغامدی اہل حدیث ، جماعت اسلامی کے مرکز اور جامعہ اشرفیہ کے علاوہ پارلیمنٹ کا دورہ بھی کرچکے ہیں۔ مفتی منیب صاحب جس طرح رویت ہلال کے مسئلہ پر سیاست کرتے ہیں اب وہ امام صاحب کے دورے پر بھی سیاست کررہے ہیں۔ روزنامہ پاکستان میں مزمل سہروردی کا کالم ــ سازشوں کا بازار گرمــ پڑھنے کا اتفاق ہوا وہ مفتی منیب صاحب کے بارے میں لکھتے ہیں:
    بہت عرصہ بعد کسی تقریب میں جاکر دل دکھی ہوا ۔ وہ (مفتی منیب) کہہ رہے تھے کہ اچھا ہوا کہ امام کعبہ جامعہ نعیمیہ نہیں آئے، کیوں کہ اگر وہ آتے تو ہم ان کے ساتھ تعاون سے انکار کرتے۔
    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
    اللہ امت کو ایسے گمراہ مفتیوں سے بچائے جو بات بات پر سیاست کرتے ہیں۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 2
  2. اعجاز علی شاہ

    اعجاز علی شاہ -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏اگست 10, 2007
    پیغامات:
    10,214
    تو وہ کیا چندہ لینے آئے تھے وہ تو دفاع حرمین شریفین کے معاملے میں پاکستانی عوام کا تعاون چاہتے۔ بہتر ہیں کہ آپ لوگ تعاون نہ ہی کریں کیوں کہ پہلے ہی آپ لوگوں کے نزدیک ان کے پیچھے نماز نہیں ہوتی۔ مدینہ مدینہ کا رٹ لگانے والوں نے تو کراچی میں ہی باب المدینہ بنالیا ہے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 2
  3. محمد عامر یونس

    محمد عامر یونس منتظر

    شمولیت:
    ‏مارچ 3, 2014
    پیغامات:
    901
    ﺍﺳﻼﻡ ﻋﻠﻴﻜﻢ ﻭﺭﺣﻤﺔ ﺍﻟﻠﻪ ﻭﺑﺮﻛﺎﺗﻪ :

    ﺍﮨﻞ ﺣﺪﯾﺚ ﺳﮯ ﺑﻐﺾ ﺭﮐﮭﻨﺎ ﺑﺪﻋﺘﯽ ﮐﯽ ﻧﺸﺎﻧﯽ ﮨﮯ

    ﻗﺎﻝ ﺃﺣﻤﺪ ﺑﻦ ﺳﻨﺎﻥ ﺍﻟﻮﺍﺳﻄﻲ : ﻟﻴﺲ ﻓﻲ ﺍﻟﺪﻧﻴﺎ ﻣﺒﺘﺪﻉ ﺇﻻ ﻭ ﻫﻮ
    ﻳﺒﻐﺾ ﺃﻫﻞ
    ﺍﻟﺤﺪﻳﺚ ، ﻭ ﺇﺫﺍ ﺍﺑﺘﺪﻉ ﺍﻟﺮﺟﻞ ﻧﺰﻉ ﺣﻼﻭﺓ ﺍﻟﺤﺪﻳﺚ ﻣﻦ ﻗﻠﺒﻪ ( ﻣﻌﺮﻓﺔ
    ﻋﻠﻮﻡ
    ﺍﻟﺤﺪﻳﺚ ﺹ ١١٠ )


    ﺩﻧﻴﺎ ﻣﯿﮟ ﮐﻮﺋﯽ ﺑﺪﻋﺘﯽ ﺍﯾﺴﺎ ﻧﮩﯿﮟ ﺟﻮ ﺍﮨﻞ ﺣﺪﯾﺚ ﺳﮯ ﺑﻐﺾ ﻧﮧ ﺭﮐﮭﺘﺎ ﮨﻮ ، ﮐﯿﻮﻧﮑﮧ ﺟﺐ ﺁﺩﻣﯽ ﺑﺪﻋﺖ ﮐﺎ ﺭﺳﯿﺎ ﮨﻮﺟﺎﺗﺎ ﮨﮯﺗﻮ ﺣﻼﻭﺕ ﺣﺪﯾﺚ ﺍﺱ ﮐﮯ ﺩﻝ ﺳﮯ ﮐﮭﯿﻨﭻ ﻟﯽ ﺟﺎﺗﯽ ﮨﮯ ۔

    ﻭ ﺳﻨﺪﮦ ﺻﺤﯿﺢ

    احمد سنان واسطی رحمہ اللہ نے ایک اصول اور ایک حقیقت بیان فرمائی ہے کہ جب کوئی شخص بدعت سے محبت کرنے لگتا ہے تو اسکی مخالف چیز یعنی سنت یعنی حدیث سے نفرت کرنے لگتا ہے جو اہل حدیث کی دشمنی اور بغض پر منتج ہو تی ہے۔ کیونکہ جب حدیث سے نفرت ہوگی تو حدیث والے یعنی اہل حدیث سے نفرت بھی ناگزیر ہے۔ یہ وہ حقیقت یا بات ہے جس کا مشاہدہ کوئی بھی شخص کسی بھی دور میں کر سکتا ہے۔ کہ بدعتی کی سب سے پہلی دشمنی حدیث اور اہل حدیث سے ہوتی ہے۔

    حنفیوں کی اہل حدیث سے دشمنی کا سبب بھی یہی ہے۔ حنفیوں کے دین کی بنیاد چونکہ تقلید شخصی پرہے اور تقلید شخصی بھی صرف چار اماموں میں سے کسی ایک امام کی۔ جس کا کوئی ثبوت نبی صلی اللہ علیہ وسلم اور صحابہ سے پیش نہیں کیا جاسکتا۔ پس چار اماموں میں سے کسی ایک امام کی تقلید شخصی کا بدعت ہونا اور اسکے نتیجہ میں حنفیوں کا بدعتی ہونا واضح طور پر ثابت ہوگیا۔ اور ان بدعتیوں کا اہل حدیث سے بغض کا سبب بھی سمجھ میں آگیا۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 3
  4. محمد عامر یونس

    محمد عامر یونس منتظر

    شمولیت:
    ‏مارچ 3, 2014
    پیغامات:
    901
  5. محمد عامر یونس

    محمد عامر یونس منتظر

    شمولیت:
    ‏مارچ 3, 2014
    پیغامات:
    901
    ابو ھریرہ رض فرماتے ہیں، بنی صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:

    بندے کے دل میں دو چیزیں اکٹھی نہیں ہوتی الایمان والحسد ۔ ایمان اور حسد۔

    [نسائی ۳۱۱۱ صحیح ابن حبان ۴۶۰۶]

    اس حدیث سے پتہ چلا ایمان دار آدمی حاسد نہیں ہوتا اور حاسد ایمان دار نہیں ہوتا۔


    “““حسد”””
    ایک ایسی چنگاری ہے جو دِلوں میں سلگتی ہے اور جِس کے دِل میں سلگتی ہے اُسے دوسروں کو نقصان اور تکلیف پہنچانے والا بنا دیتی ہے ، اور وہ شخص کسی دوسرے سے پہلے خود اپنے آپ کے لیے تکلیفوں اورمصیبتوں کا سبب بن جاتا ہے ،کہ اسے ہر وقت دوسروں کو ملنے والی نعمتوں کے ختم ہوجانے کی خواہش رہتی ہے.
     
    Last edited: ‏اپریل 30, 2015
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  6. Ishauq

    Ishauq محسن

    شمولیت:
    ‏فروری 2, 2012
    پیغامات:
    9,527
    ان کے لیے تو انڈیا سے کوئی مجاور مزار کی چادر لے آتا تو سر آنکھوں پر بٹھاتے ۔۔۔۔۔۔۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 4
  7. x boy

    x boy رکن اردو مجلس

    شمولیت:
    ‏اپریل 8, 2015
    پیغامات:
    43
    اللہ مسلمانوں کو اتفاق اور متفق کرے، آمین

    اللہ ایک، کتاب اللہ قرآن الکریم اللہ کی رسی ایک،آخری نبی محمد صلی اللہ علیہ وسلم بھی وہی ، پھر یہ کہاں الٹے پاؤں پھرے جارہے ہیں۔
    مفتی منیب الرحمن صاحب انکے علاوہ کسی اور باتوں پر بھی عقیدہ رکھتے ہیں اگر ہے تو وہ ہم میں سے نہیں جو دین میں نیا کچھ نکالے
    اور کہے کہ یہ شریعہ ہے اس کو کرنے سے ثواب نہ کرنے سے گناہ ہو۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 2
  8. عطاءالرحمن منگلوری

    عطاءالرحمن منگلوری -: ماہر :-

    شمولیت:
    ‏اپریل 9, 2012
    پیغامات:
    1,383
    سنی تحریک کے سربراہ اعجاز ثروت قادری صاحب نے بھی فرمایا ہے کہ
    امام کعبہ وہابیوں اور دیوبندیوں کے مدارس کا دورہ کر رہے ہیں.وہ بادشاہی مسجد بھی گئے.لیکن مزار اقبال اور داتا دربار پہ حاضری نہیں دی. اس سے فرقہ واریت بڑھے گی.
    قطع نظر اس سے کہ شیخ کو کہاں جانا چاہیے کہاں نہیں جانا چاہیے.ان عقل کے اندھوں سے کوئ پوچھے کہ آپ نے دعوت دی انہیں؟ مہمان تو وہاں جائے گا جہاں میزبان لے جائیں گے..مزارات پہ حاضری کیا شریعت اسلامی کا حصہ ہے جو ان سے خلاف شرع بات ہو گئ ہے اور دورہ درست نہیں ہوا..
    میرا خیال ہے امام محترم کے حاشیہ خیال میں بھی نہ ہوگا کہ اہل سنت کے کتنے فرقے ہیں اور مجھے کس کے ہاں نہیں جانا..انہوں نے تو امت مسلمہ کے اتحاد کی بات کی.
    تعجب ہے کہ امام کعبہ کو بھی فرقہ وارایت کی نگاہ سے دیکھا جا رہا ہے..امت مسلمہ کا مرکز و محور بیت اللہ شریف ہے اور مسجد حرام کا امام وارث ہیں مصلی نبوی اور منبر رسول کے.ان کی شخصیت کو متنازعہ بنانا کہاں کا انصاف اور دانشمندی ہے.
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 3
  9. ابوعکاشہ

    ابوعکاشہ منتظم

    شمولیت:
    ‏اگست 2, 2007
    پیغامات:
    13,501
    سو فیصد درست کہا عطاءالرحمن منگلوری بھائی ـ شیخ کو واقعی اس سنی فرقہ کے بارے میں کچھ معلوم نہیں ـ لیکن جہاں تک میرے علم میں پرانے آئمہ حرم جانتے ہیں ـ
    ثروت عتیق صاحب سے سوال ہے کہ اگر اما م محترم شیخ خالد الغامدی حفظ اللہ نے مزار پر ہی جانا تھا تو مدینہ میں قبررسول ﷺ پر بقیع الغرقد پر حاضری دے دیتے ـ اگر یہ اتنا ضروری تھا ـ اگر یہاں نا دی تو وہاں بہت ضروری ہوگیا ـ
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 4
  10. اعجاز علی شاہ

    اعجاز علی شاہ -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏اگست 10, 2007
    پیغامات:
    10,214
    یہ وہی ثروت اعجاز قادری ہے جس کی پگڑی کا رنگ اور نام بذات خود فرقہ وریت کی علامات ہیں !
    اس کی جماعت بھتہ خوری اور ٹارگٹ کلنگ میں ملوث ہے !
    اس کو اتنا بھی نہیں پتہ کہ امام کعبہ کے پیچھے ان کی نماز نہیں ہوتی ۔
    اگر اس میں ذرہ برابربھی حیاء و شرم ہوتی تو اس کو چاہیے تھا کہ سعودی عرب سے آئے ساری دنیا کے کعبہ شریف کے امام کے پاس اس کو خود جانا چاہیے تھا ۔
    اچھا ہوا کہ امام صاحب داتا دربار پر نہیں گئے ورنہ وہ یہ شرک کا اڈہ دیکھ کر پاکستان کے بارے میں کیا سوچتے !
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 3
  11. زبیراحمد

    زبیراحمد -: ماہر :-

    شمولیت:
    ‏اپریل 29, 2009
    پیغامات:
    3,319
    قبرپرعمارت بنانے پراعتراض خود امام احمد رضا بریلوی بھی کرچکے ہیں سنی تحریک کے ثروت صاحب پہلے فتاویٰ رضویہ جلد 9 کامطالعہ کرلیں پھرپتہ چلے گاکہ اعلیٰ حضرت کے مطابق قبرپرعمارت بنانے والا مشرک ہوتاہے
    اب اگرامام کعبہ ان عمارات کادورہ نہیں کررہے ہیں تواس کامطلب یہ ہواکہ وہ انہی کے اعلیٰ حضرت کی تائید کررہے ہیں ثروت صاحب کو توخوش ہوناچاہئے بجائے تنقید کرنے کے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 2
  12. سپاہی

    سپاہی -: معاون :-

    شمولیت:
    ‏اپریل 3, 2013
    پیغامات:
    26
    کسی ایک شرک کے اڈے پر جا کر توحید کا بیان اور پوجے جانے والی قبروں کا رد کرنے سے امام کعبہ حفظہ اللہ کا دورہ پاکستان کا حق ادا ہو جاتا.
     
  13. ابوعکاشہ

    ابوعکاشہ منتظم

    شمولیت:
    ‏اگست 2, 2007
    پیغامات:
    13,501
    میرا خیال ہے کہ اہل توحید کا شرک کے اڈوں پر جانا درست نہیں ـ
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 2
  14. اعجاز علی شاہ

    اعجاز علی شاہ -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏اگست 10, 2007
    پیغامات:
    10,214
    بھائی امام کعبہ کو اردو کہاں آتی ہے کہ وہ ان جاہلوں کو توحید کا درس دیتے !
     

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں