فہم قرآن مجید ۔۔۔ قطرہ قطرہ

عائشہ نے 'قرآن - شریعت کا ستونِ اوّل' میں ‏اگست 25, 2011 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,042
    بسم اللہ الرحمن الرحيم ​

    السلام عليكم ورحمة اللہ وبركاتہ

    ہم سب اكثر قرآن مجيد كى تلاوت ، ترجمہ اور تفسير كا مطالعہ كرتے رہتے ہيں اس دوران آيات الہی كے نئے معانى نئے مفاہيم سے آگہى ہوتى ہے اور انسان حكمت کے اس سمندر كى نئی گہرائيوں سے شناسا ہوتا ہے بصيرت كے نئے در وا ہوتے ہيں۔
    يہ موضوع اسى خير كو عام كرنے كے ليے ہے۔ آپ كو كلام الہی كے بحر معانى سے جو عطا ہوا ہے ہم تك پہنچائيں تا كہ اللہ كى كتاب كا فہم عام ہو اور غافل ذہنوں كو تنبيہ ہو،سخت دلوں كو نرمى نصيب ہو، عباد الرحمن اپنے رب كى باتوں كو جانيں، سمجھيں اور عمل كريں ۔۔۔
    اس موضوع ميں ايك مراسلے كو حقير نہ جانيں ۔۔۔ قطرہ قطره سمندر بنتا ہے ۔۔۔ یہ چند سطريں ہمارے ليے نہ ختم ہونے والا صدقہ جاريہ بن كرہمارے نفس كى بيماريوں كا ترياق ۔۔۔ اور ہمارى قبروں كا نور بھی بن سكتى ہيں ۔۔۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 2
  2. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,042
    استغفاراور توبه کے فوائد کلام الہی کی روشنی میں

    سورة نوح ميں مذكور ہے: حضرت نوح عليہ السلام نے اپنی قوم كو نصيحت كى :
    [QH]وَيَا قَوْمِ اسْتَغْفِرُوا رَبَّكُمْ ثُمَّ تُوبُوا إِلَيْهِ يُرْسِلِ السَّمَاءَ عَلَيْكُم مِّدْرَارًا وَيَزِدْكُمْ قُوَّةً إِلَىٰ قُوَّتِكُمْ وَلَا تَتَوَلَّوْا مُجْرِمِينَ [/QH]
    ے میری قوم کے لوگو! تم اپنے پالنے والے سے اپنی تقصیروں کی معافی طلب کرو اور اس کی جناب میں توبہ کرو، تاکہ وه برسنے والے بادل تم پر بھیج دے اور تمہاری طاقت پر اور طاقت قوت بڑھا دے اور تم جرم کرتے ہوئے روگردانی نہ کرو۔
    اس آيت ميں حضرت نوح عليہ السلام نے توبہ اور استغفار كا حكم ديتے ہوئے اس كے فوائد گنوائے ہیں:
    1- رحمت الہی كا نفع بخش بارش كى صورت ميں نزول
    2- قوت ميں اضافہ، ہر قسم كى قوت ، جسمانى روحانى انفرادى اجتماعى ۔
    گويا توبہ اور استغفار ہر حال ميں ہر طرح كى ترقى كا آسان طريقہ ہیں !

    استغفار كے بہترين مسنون الفاظ اور ان كے فوائد نبي كريم صلى اللہ عليہ وسلم كے الفاظ ميں يہاں ملاحظہ فرمائیں :
    سیدالاستغفار - URDU MAJLIS FORUM

    مزيد امام ابن القيم رحمہ اللہ کے قلم سے ۔۔۔

     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 2
  3. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,042
    بدقسمت بستياں

    بسم اللہ الرحمن الرحيم ​

    سورة الطلاق (65) كى درج ذيل آيات كريمہ ميں ان بدقسمت بستيوں (اہل بستى ) كا ذكر ہے جنہوں نے دنيا ميں بھی اپنے كرتوتوں كا مزا چکھا اور آخرت ميں بھی سخت عذاب ان كا منتظر ہے:

    [QH]وَكَأَيِّن مِّن قَرْيَةٍ عَتَتْ عَنْ أَمْرِ رَبِّهَا وَرُسُلِهِ فَحَاسَبْنَاهَا حِسَابًا شَدِيدًا وَعَذَّبْنَاهَا عَذَابًا نُّكْرًا ﴿٨﴾ فَذَاقَتْ وَبَالَ أَمْرِهَا وَكَانَ عَاقِبَةُ أَمْرِهَا خُسْرًا ﴿٩﴾ أَعَدَّ اللَّـهُ لَهُمْ عَذَابًا شَدِيدًا ۖ فَاتَّقُوا اللَّـهَ يَا أُولِي الْأَلْبَابِ الَّذِينَ آمَنُوا ۚ قَدْ أَنزَلَ اللَّـهُ إِلَيْكُمْ ذِكْرًا ﴿١٠﴾رَّسُولًا يَتْلُو عَلَيْكُمْ آيَاتِ اللَّـهِ مُبَيِّنَاتٍ لِّيُخْرِجَ الَّذِينَ آمَنُوا وَعَمِلُوا الصَّالِحَاتِ مِنَ الظُّلُمَاتِ إِلَى النُّورِ ۚ وَمَن يُؤْمِن بِاللَّـهِ وَيَعْمَلْ صَالِحًا يُدْخِلْهُ جَنَّاتٍ تَجْرِي مِن تَحْتِهَا الْأَنْهَارُ خَالِدِينَ فِيهَا أَبَدًا ۖ قَدْ أَحْسَنَ اللَّـهُ لَهُ رِزْقًا ﴿١١﴾[/QH]
    (ترجمہ: مولانا محمد جونا گڑھی)اور بہت سی بستی والوں نے اپنے رب کے حکم سے اور اس کے رسولوں سے سرتابی کی تو ہم نے بھی ان سے سخت حساب کیا اور انہیں عذاب دیا ان دیکھا (سخت) عذاب (8) پس انہوں نے اپنے کرتوت کا مزه چکھ لیا اور انجام کار ان کا خساره ہی ہوا (9) ان کے لیے اللہ تعالیٰ نے سخت عذاب تیار کر رکھا ہے، پس اللہ سے ڈرو اے عقل مند ایمان والو۔ یقیناً اللہ نے تمہاری طرف نصیحت اتار دی ہے (10)(یعنی) رسول جو تمہیں اللہ کے صاف صاف احکام پڑھ سناتا ہے تاکہ ان لوگوں کو جو ایمان ﻻئیں اور نیک عمل کریں وه تاریکیوں سے روشنی کی طرف لے آئے، اور جو شخص اللہ پر ایمان ﻻئے اور نیک عمل کرے اللہ اسے ایسی جنتوں میں داخل کرے گا جس کے نیچے نہریں جاری ہیں جن میں یہ ہمیشہ ہمیشہ رہیں گے۔ بیشک اللہ نے اسے بہترین روزی دے رکھی ہے (11)
    قرآنى متن اور ترجمہ: Tanzil - Quran Navigator | القرآن الكريم

    (ترجمہ: مولانا ابو الكلام آزاد ): اور كتنى ہی آبادياں تھيں جن كے رہنے والوں نے اپنے پروردگار اور اس كے رسولوں كى صداقتوں سے سرتابى كى اور عصيان و طغيان پر اتر آئےـ تب ہم نے بڑی سختى كے ساتھ ان كے كاموں كا حساب كيا اور انہيں بڑے ہی سخت عذاب ميں گرفتار كيا (8) بالآخر ان كے اعمال كا وبال ان کے آگے آيا اور وہ گو طاقت وعظمت ميں بہت بڑھ چکے تھے ليكن انجام كار گھاٹا ہی گھاٹا ہوا۔(9) اللہ نے ان كے ليے سخت عذاب تيار كر ركھا ہے ، پس اے دانشمند لوگو (يعنى) ايمان والو تم خدا سے ڈرتے رہو ، بے شك اللہ تعالى نے تم پر ايك نعمت نازل كى ہے(10) ايك ايسا رسول جو تم كو اللہ تعالى كى آيات پڑھ كر سناتا ہے جو احكام الہی كو واضح كرنے والى ہيں تا كہ ان لوگوں كو جو ايمان لائے اور نيك عمل كیے، تاريكيوں سے نكال كر روشنى ميں لے آئے۔ اور جو بھی اللہ پر ايمان لائے اور نيك عمل كرے اللہ اسے جنتوں ميں داخل كرے گا جن كے نيچے نہريں بہہ رہی ہوں گی، يہ لوگ ان ميں ہميشہ رہيں گے بے شك اللہ تعالى نے ان كے ليے عمدہ رزق ركھا ہے۔
    (ترجمان القرآن جلد سوم / صفحات : 498، 499)
    عتت ہے عتو سے جس كا ايك مطلب ہے: [QH]حالة لاسبيل إلى إصلاحها و مداواتها [/QH] يعنى ايسى حالت جس كى اصلاح ناممكن ہو چکی ہو۔
    ان آيات كے مطالعے كے بعد ايك نظر اپنے معاشرے پر دوڑائیے۔ آج كل ايام عيد منائے جا رہے ہيں۔ كيا ايك مومن ، ايك رب سے ڈرنے والا، كبھی گندی اور خبيث چيزوں سے تفريح حاصل كر سكتا ہے؟ پھرآخر بات كيا ہے؟ بات يہ ہے کہ ايمان وتقوى كے دعوے تھے جو رمضان المبارك کے ساتھ ہی رخصت ہوئے ....
    ہم ميں سے جو بھی ايك گھر كا نگران ہے اور تفريح كے نام پر خبائث اور شياطين اس كے گھر پر چھائے ہوئے ہيں ، اور اس كے ہمسائے بھی اس کے گھر سے اٹھتی شيطانى آوازوں سے پناہ مانگتے پھرتے ہيں، وہ ياد ركھے اللہ تعالى كسى سے غافل نہيں ليكن وہ سب كو مہلت ديتا ہے اور جب پکڑتا ہے تو اس كى پکڑ سے كوئى بچ نہيں سكتا ۔ ابھی وقت ہے ۔۔۔ كہيں ہمارى بستياں بدقسمت بستيوں كى فہرست ميں شامل ہو كر برباد نہ ہو جائيں ۔
     
  4. جاسم منیر

    جاسم منیر Web Master

    شمولیت:
    ‏ستمبر 17, 2009
    پیغامات:
    4,630
    میں اس اللہ کی عبادت کرتا ہوں جو تمہیں موت دیتا ہے

    بسم اللہ الرحمٰن الرحیم

    آج کے ہمارے فہمٍ قرآن و حدیث کے سبق میں‌ سورۃ یونس کی آیت 104 شامل تھی:

    قُلۡ يَـٰٓأَيُّہَا ٱلنَّاسُ إِن كُنتُمۡ فِى شَكٍّ۬ مِّن دِينِى فَلَآ أَعۡبُدُ ٱلَّذِينَ تَعۡبُدُونَ مِن دُونِ ٱللَّهِ وَلَـٰكِنۡ أَعۡبُدُ ٱللَّهَ ٱلَّذِى يَتَوَفَّٮٰكُمۡ‌ۖ

    اے نبی صلی اللہ علیہ وسلم کہہ دیجئے کہ اے لوگو اگر تم میرے دین کے بارے میں شک میں ہو تو (سن لو) میں ہرگز ان کی عبادت کرنے والا نہیں ہوں جنکی تم اللہ کے علاوہ عبادت کرتے ہو۔ بلکہ میں تو اس اللہ کی عبادت کرتا ہوں جو تمہیں موت دیتا ہے

    استاد محترم نے قرآن کا ایک بہترین اسلوب اس آیت کے حوالے سے یہ بیان کیا کہ قرآن میں جہاں جہاں‌مشرکین سے خطاب کیا گیا یا اللہ پر ایمان کے حوالے سے انہیں کوئی بات سمجھائی گئی، تو اکثر ایسی بات کا ہی ذکر کیا گیا جس پر مشرکین ایمان رکھتے تھے۔ مثلا ان کا ایمان تھا کہ موت دینے والی اور بچانے والی ذات اللہ ہی کی ذات ہے۔ اب یہاں لفظ خلقکم بھی استعمال کیا جا سکتا تھا، لیکن یہاں یہ الفاظ يَتَوَفَّٮٰكُمۡ‌ۖ استعمال کر کے گویا ان پر ایک کاری ضرب لگائی گئی کہ وہ ذات جو تمہیں موت دیتی ہے اور تمہیں پتہ بھی ہے کہ صرف وہی ذات موت دیتی ہے، وہی صرف عبادت کے لائق ہے۔ اسی لیے جیسے تمہیں موت کے معاملے میں اللہ کی ہستی پر یقین ہے، ویسے ہی ہر معاملے میں‌ صرف اور صرف اللہ پر ایمان لے آؤ۔
    آج ہم بھی اپنے معاشرے میں نظر دوڑائیں تو کہیں پیراں دتا، فقیراں دتا کے نام تو نظر آتے ہیں کہ جی یہ فلاں پیر نے دیا، فلاں فقیر کی دعا نے دیا، لیکن کوئی یہ نہیں کہتا کہ فلاں فقیر نے لیا، یا فلاں پیر نے موت دی۔۔۔۔۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 2
  5. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,042
    جزاك الله خيرا وبارك فيك ۔
    درست ، ليكن ايك گروہ ايسا بھی ہے جو ان پيروں فقيروں كى موت كو موت نہيں مانتا ، بلكہ اسے پردہ فرمانا كہتے ہیں۔
     
  6. ساجد تاج

    ساجد تاج -: رکن مکتبہ اسلامیہ :-

    شمولیت:
    ‏نومبر 24, 2008
    پیغامات:
    38,712
    اللہ تعالی مشرکین کے بارے میں‌ قرآن پاک میں‌ فرماتا ہے !

    [​IMG]


    [​IMG]

    اللہ تعالی مشرکین کے بارے میں‌ قرآن پاک میں‌ فرماتا ہے !

    [​IMG]




    مشرکین کہتے ہیں‌ کہ اللہ کے سوا نبی اور ولی کو مدد کے لیے پُکارا جا سکتا ہے

    غلط کہتے ہیں‌ یہ لوگ جاہل لوگ۔

    قرآن کہتا ہے

    "اگر اللہ تم کو کوئی تکلیف دے اُس کے عللاوہ اِسے کوئی دور کر نہیں‌ سکتا

    سورہ انعام : آیت نمبر 17​




    اور مشرکین کے بارے میں‌ قرآن کہتا ہے

    "اور جن لوگوں‌کو یہ اللہ کے علاوہ پکارتے ہیں‌وہ کسی چیز کو پیدا نہیں‌کر سکتے بلکہ وہ خود پیدا کیئے گئے ہیں‌۔"

    سورہ النحل : آیت نمبر 20



    اور مومنوں‌کے بارے میں‌ قرآن کہتا ہے

    "جب میرے بارے میں‌میرے بندے آپ صلی اللہ علیہ وسلم سے سوال کریں‌ تو آپ صلی اللہ علیہ وسلم کہہ دیں‌ کہ میں‌ بہت قریب ہوں‌۔ ہر پکارنے والے کی پکار جو جب کبھی وہ مجھے پکارے قبول کرتا ہوں"

    سورہ البقراء : آیت نمبر 186


    [​IMG]
     
  7. irum

    irum Web Master

    شمولیت:
    ‏جون 3, 2007
    پیغامات:
    31,606
    چند روزه زندگی کا سامان

    [​IMG]

    چند روزه زندگی کا سامان

    [ar]زُيِّنَ لِلنَّاسِ حُبُّ الشَّهَوَاتِ مِنَ النِّسَاءِ وَالْبَنِينَ وَالْقَنَاطِيرِ‌ الْمُقَنطَرَ‌ةِ مِنَ الذَّهَبِ وَالْفِضَّةِ وَالْخَيْلِ الْمُسَوَّمَةِ وَالْأَنْعَامِ وَالْحَرْ‌ثِ ۗ ذَٰلِكَ مَتَاعُ الْحَيَاةِ الدُّنْيَا ۖ وَاللَّـهُ عِندَهُ حُسْنُ الْمَآبِ ﴿١٤﴾ [/ar]

    مرغوب چیزوں کی محبت لوگوں کے لئے مزین کر دی گئی ہے، جیسے عورتیں اور بیٹے اور سونے اور چاندی کے جمع کئے ہوئے خزانے اور نشاندار گھوڑے اور چوپائے اور کھیتی، یہ دنیا کی زندگی کا سامان ہے اور لوٹنے کا اچھا ٹھکانا تو اللہ تعالیٰ ہی کے پاس ہے

    سورة آل عمران (3) آيت: 14
     
  8. irum

    irum Web Master

    شمولیت:
    ‏جون 3, 2007
    پیغامات:
    31,606
    غرور الله کو پسند نہیں

    غرور الله کو پسند نہیں



    [ar]وَاعْبُدُوا اللَّـهَ وَلَا تُشْرِ‌كُوا بِهِ شَيْئًا ۖ وَبِالْوَالِدَيْنِ إِحْسَانًا وَبِذِي الْقُرْ‌بَىٰ وَالْيَتَامَىٰ وَالْمَسَاكِينِ وَالْجَارِ‌ ذِي الْقُرْ‌بَىٰ وَالْجَارِ‌ الْجُنُبِ وَالصَّاحِبِ بِالْجَنبِ وَابْنِ السَّبِيلِ وَمَا مَلَكَتْ أَيْمَانُكُمْ ۗ إِنَّ اللَّـهَ لَا يُحِبُّ مَن كَانَ مُخْتَالًا فَخُورً‌ا ﴿٣٦﴾[/ar]


    اور اللہ تعالیٰ کی عبادت کرو اور اس کے ساتھ کسی کو شریک نہ کرو اور ماں باپ کے ساتھ سلوک واحسان کرو اور رشتہ داروں سے اور یتیموں سے اور مسکینوں سے اور قرابت دار ہمسایہ سے اور اجنبی ہمسایہ سے اور پہلو کے ساتھی سے اور راه کے مسافر سے اور ان سے جن کے مالک تمہارے ہاتھ ہیں، (غلام کنیز) یقیناً اللہ تعالیٰ تکبر کرنے والوں اور شیخی خوروں کو پسند نہیں فرماتا (36)

    سورة النساء
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  9. irum

    irum Web Master

    شمولیت:
    ‏جون 3, 2007
    پیغامات:
    31,606
    بدترين دشمن

    بدترين دشمن​



    [ar]وَمِنَ النَّاسِ مَن يُعْجِبُكَ قَوْلُهُ فِي الْحَيَاةِ الدُّنْيَا وَيُشْهِدُ اللَّـهَ عَلَىٰ مَا فِي قَلْبِهِ وَهُوَ أَلَدُّ الْخِصَامِ ﴿٢٠٤﴾ وَإِذَا تَوَلَّىٰ سَعَىٰ فِي الْأَرْ‌ضِ لِيُفْسِدَ فِيهَا وَيُهْلِكَ الْحَرْ‌ثَ وَالنَّسْلَ ۗ وَاللَّـهُ لَا يُحِبُّ الْفَسَادَ ﴿٢٠٥﴾[/ar]


    بعض لوگوں کی دنیاوی غرض کی باتیں آپ کو خوش کر دیتی ہیں اور وه اپنے دل کی باتوں پر اللہ کو گواه کرتا ہے، حاﻻنکہ دراصل وه زبردست جھگڑالو ہے (204) جب وه لوٹ کر جاتا ہے تو زمین میں فساد پھیلانے کی اور کھیتی اور نسل کی بربادی کی کوشش میں لگا رہتا ہے اور اللہ تعالیٰ فساد کو ناپسند کرتا ہے (205)

    سورة البقره
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  10. محمد زاہد بن فیض

    محمد زاہد بن فیض -: منفرد :-

    شمولیت:
    ‏جنوری 2, 2010
    پیغامات:
    3,693
  11. محمد زاہد بن فیض

    محمد زاہد بن فیض -: منفرد :-

    شمولیت:
    ‏جنوری 2, 2010
    پیغامات:
    3,693
  12. محمد زاہد بن فیض

    محمد زاہد بن فیض -: منفرد :-

    شمولیت:
    ‏جنوری 2, 2010
    پیغامات:
    3,693
  13. irum

    irum Web Master

    شمولیت:
    ‏جون 3, 2007
    پیغامات:
    31,606
    وایاکم
     
  14. irum

    irum Web Master

    شمولیت:
    ‏جون 3, 2007
    پیغامات:
    31,606
    وایاکم
     
  15. irum

    irum Web Master

    شمولیت:
    ‏جون 3, 2007
    پیغامات:
    31,606
    وایاکم
     
  16. irum

    irum Web Master

    شمولیت:
    ‏جون 3, 2007
    پیغامات:
    31,606
    اپنے آپ کو قتل نہ کرو

    اپنے آپ کو قتل نہ کرو
    [ar]

    يَا أَيُّهَا الَّذِينَ آمَنُوا لَا تَأْكُلُوا أَمْوَالَكُم بَيْنَكُم بِالْبَاطِلِ إِلَّا أَن تَكُونَ تِجَارَ‌ةً عَن تَرَ‌اضٍ مِّنكُمْ ۚ وَلَا تَقْتُلُوا أَنفُسَكُمْ ۚ إِنَّ اللَّـهَ كَانَ بِكُمْ رَ‌حِيمًا ﴿٢٩﴾ وَمَن يَفْعَلْ ذَٰلِكَ عُدْوَانًا وَظُلْمًا فَسَوْفَ نُصْلِيهِ نَارً‌ا ۚ وَكَانَ ذَٰلِكَ عَلَى اللَّـهِ يَسِيرً‌ا ﴿٣٠﴾
    [/ar]

    اے ایمان والو! اپنے آپس کے مال ناجائز طریقہ سے مت کھاؤ، مگر یہ کہ تمہاری آپس کی رضا مندی سے ہو خرید وفروخت، اور اپنے آپ کو قتل نہ کرو یقیناً اللہ تعالیٰ تم پر نہایت مہربان ہے (29) اور جو شخص یہ (نافرمانیاں) سرکشی اور ﻇلم سے کرے گا تو عنقریب ہم اس کو آگ میں داخل کریں گے اور یہ اللہ پرآسان ہے (30)

    سورة النساء
     
  17. irum

    irum Web Master

    شمولیت:
    ‏جون 3, 2007
    پیغامات:
    31,606
    حوصلے کا کام

    حوصلے کا کام


    [ar]الَّذِينَ قَالُوا لِإِخْوَانِهِمْ وَقَعَدُوا لَوْ أَطَاعُونَا مَا قُتِلُوا ۗ قُلْ فَادْرَ‌ءُوا عَنْ أَنفُسِكُمُ الْمَوْتَ إِن كُنتُمْ صَادِقِينَ ﴿١٦٨﴾ [/ar]


    یہ وه لوگ ہیں جو خود بھی بیٹھے رہے اور اپنے بھائیوں کی بابت کہا کہ اگر وه بھی ہماری بات مان لیتے تو قتل نہ کئے جاتے۔ کہہ دیجئے! کہ اگر تم سچے ہو تو اپنی جانوں سے موت کو ہٹا دو (168)

    سورة آل عمران
     
  18. irum

    irum Web Master

    شمولیت:
    ‏جون 3, 2007
    پیغامات:
    31,606
    الله سب کچه جانتا ہے

    الله سب کچه جانتا ہے


    [ar]قُلْ إِن تُخْفُوا مَا فِي صُدُورِ‌كُمْ أَوْ تُبْدُوهُ يَعْلَمْهُ اللَّـهُ ۗ وَيَعْلَمُ مَا فِي السَّمَاوَاتِ وَمَا فِي الْأَرْ‌ضِ ۗ وَاللَّـهُ عَلَىٰ كُلِّ شَيْءٍ قَدِيرٌ‌ ﴿٢٩﴾[/ar]

    کہہ دیجئے! کہ خواه تم اپنے سینوں کی باتیں چھپاؤ خواه ﻇاہر کرو اللہ تعالیٰ (بہرحال) جانتا ہے، آسمانوں اور زمین میں جو کچھ ہے سب اسے معلوم ہے اور اللہ تعالیٰ ہر چیز پر قادر ہے (29)

    سورة آل عمران
     
  19. irum

    irum Web Master

    شمولیت:
    ‏جون 3, 2007
    پیغامات:
    31,606
    اعمال ضائع ہو گئے

    اعمال ضائع ہو گئے



    [ar]أُولَـٰئِكَ الَّذِينَ كَفَرُ‌وا بِآيَاتِ رَ‌بِّهِمْ وَلِقَائِهِ فَحَبِطَتْ أَعْمَالُهُمْ فَلَا نُقِيمُ لَهُمْ يَوْمَ الْقِيَامَةِ وَزْنًا ﴿١٠٥﴾[/ar]


    یہی وه لوگ ہیں جنہوں نے اپنے پروردگار کی آیتوں اور اس کی ملاقات سے کفر کیا، اس لئے ان کے اعمال غارت ہوگئے پس قیامت کے دن ہم ان کا کوئی وزن قائم نہ کریں گے (105)
     
  20. محمد زاہد بن فیض

    محمد زاہد بن فیض -: منفرد :-

    شمولیت:
    ‏جنوری 2, 2010
    پیغامات:
    3,693

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں