کون پڑھے وہ تھریڈ، پھیکا جسکا عنوان!

رفی نے 'گپ شپ' میں ‏جون 13, 2010 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. رفی

    رفی منتظمِ اعلٰی

    رکن انتظامیہ

    شمولیت:
    ‏اگست 8, 2007
    پیغامات:
    12,210
    السلام علیکم اردو مجلس!

    یوں تو اردو مجلس پر بے شمار قیمتی تھریڈز اور پوسٹس موجود ہیں، لیکن زیادہ تر قارئین ایک دل کو چھو جانے والے عنوان کو دیکھ کر ہی مضمون کو پڑھتے ہیں۔ اس لئے عنوان کی اہمیت کو نظر انداز نہیں کیا جا سکتا، میں نے اس موضوع پر کچھ لکھنے سے پہلے جب نیٹ پر موجود مواد کی تلاش شروع کی تو انگلش میں تو بہت سی سائیٹس پر گائیڈ لائنز موجود ہیں لیکن اردو میں بھی ایسی ہی ایک رہنما تحریر موجود ہے جس پر مزید کچھ کہنا سورج کو چراغ دکھانے کے مترادف ہے اس لئے یہ تحریر پیشِ خدمت ہے:

    عنوان میں کچھ جان ہونی چاہیے
    اکثر دیکھنے میں آیا ہے کہ نئے مصنفین اپنے مضامین کے عنوان پر توجہ نہیں دیتے جس کی وجہ سے بڑی محنت اور خوبصورتی سے تحریر کردہ مضمون بھی وہ توجہ حاصل نہیں کر پاتا جس کا وہ حقدار تھا۔ جہاں اتنی محنت مضمون لکھنے پر اور اس کی نوک پلک سنوارنے پر کی جاتی ہے وہیں کچھ توجہ عنوان پر کرنے سے بطور مصنف آپ جلدی ترقی کر سکتے ہیں۔

    عنوان کو پرکشش ہونا چاہیے
    عنوان آپ کے مضمون کی مارکیٹنگ کا کام کرتا ہے۔ اگر آپ کے عنوان میں جان نہیں ہے تو آپ کا مضمون کتنا بھی اچھا کیوں نہ ہو اس مقدار میں توجہ اور قارئین نہیں مل پائیں گے جس کا وہ حقدار ہے۔ چنانچہ عنوان پر خصوصی توجہ رکھیے۔

    عنوان آپ کا 80 فیصد بجٹ کھا جاتا ہے
    ایڈورٹائزنگ میں یہ بات مشہور ہے کہ 80 فیصد افراد صرف عنوان سے ہی اشتہار کا اندازہ لگاتے ہیں۔ چنانچہ جب آپ عنوان لکھ کر فارغ ہوتے ہیں تو آپ اپنے ایڈورٹائزنگ بجٹ کا 80 فیصد خرچ کر چکے ہوتے ہیں۔

    کیونکہ اس بات کی اہمیت نہیں ہے کہ آپ نے اشتہار میں کیا لکھا۔ صرف عنوان
    ہی قارئین کو اشتہار پڑھوانے کا باعث بنے گا۔ اگر آپ عنوان لکھنے میں کمزور ہیں تو باقی تمام صلاحیت کی اہمیت صرف بیس فیصد رہ جاتی ہے۔ اس بات کا یہ مطلب نہیں کہ مضمون لکھنے میں محنت نہیں کرنی چاہیے۔ صرف اس بات پر تاکید مقصود ہے کہ عنوان کی کمزوری پورے مضمون کو قارئین کی 80 فیصد تعداد سے محروم کر سکتی ہے۔

    عنوان کا مضمون سے کوئی تعلق ہونا چاہیے
    اچھے سے اچھا عنوان بھی قاری کی توجہ تو کھینچ کر اسے پڑھنے پر مجبور کر سکتا ہے لیکن اس سے آگے اگر مضمون کمزور اور غیر مدلل ہو گا تو اچھا تاثر نہ ملنا یقینی ہے۔ کیونکہ اعتماد پہلی چیز ہے اور انٹرنیٹ پر اپنا اعتماد ابھی آپ نے بنانا ہے۔ اس لیے اگر آپ دلچسپ مگر مکمل غیر متعلق عناوین لکھیں گے تو آپ کا اعتبار ختم ہو جائے گا پھر آپ کے قارئین آپ کی تحریروں کو دور سے ہی سلام کہہ دیں گے۔ چنانچہ عنوان مضمون سے متعلق ہونا چاہیے۔

    اہم الفاظ پہلے لکھیں
    سرچ انجنز میں عنوان کی اہمیت ھے۔ گوگل ، یاہو ، بنگ وغیرہ جیسے سرچ انجنز مضامین اور ویب سائٹس کو انڈیکس کرتے ہوئے عنوان کو خاص اہمیت دیتے ہیں ۔ چنانچہ اگر آپ کے عنوان میں مضمون کے اہم الفاظ پائے جاتے ہیں تو قارئین کی تلاش کے نتیجے میں آپ کے مضمون کے ظاہرہونے کے امکانات بڑھ جاتے ہیں ۔

    بہترین عنوان کیسے لکھا جائے؟
    اگر آپ کسی مسئلے کا حل تحریر کر رہے ہیں تو عنوان اسی طرح کا رکھیں ۔ جیسے اس پیرا گراف کا عنوان ہے۔ تیزی سے پیسہ کمانے کے سات طریقے ، آج ہی اپنے تعلقات بہتر کیسے کریں، ایک انڈہ سات ڈشز وغیرہ وغیرہ

    مشہور جملات میں معمولی تبدیلی
    بعض اوقات مشہور محاورات، اشعار، ضرب الامثال، گیتوں، اشتہاری جملات میں معمولی سے تبدیلی سے بھی اچھا عنوان بن سکتا ہے۔ جیسے خدا بندے سے خود پوچھے بتا تیری رضا کیا ہے۔ پٹرول سے گرا بجلی میں اٹکا، حکومت کے دانت کھانے کے اور دکھانے کے اور ۔وہ بات ان کو بہت ناگوار گزری ہے۔

    عنوان ایک دن پہلے لکھ لیں
    بہت سے مصنفین اپنے مضمون کا عنوان پہلے تجویز کرتے ہیں اور اس سے ایک ، دو دن بعد مضمون تحریر کرتے ہیں ۔ گویا وہ دلچسپ عنوان کی تلاش میں رہتے ہیں جب انہیں عنوان مل جاتا ہے تو پھر اس پر مضمون لکھتے ہیں ۔ یہ مضمون بھی میں نے عنوان لکھنے کے تقریبا سات دن بعد تحریر کیا ہے۔

    عنوان میں کم الفاظ رکھیے
    عنوان کو انتہائی طویل نہ رکھیں۔ ایک تو عنوان کے لیے جگہ کم ہوتی ہے ۔ عنوان پوری جگہ میں نہ سمایاتو نامکمل نظر آئے گا جس سے بات پوری سمجھ نہیں آئے گی۔ دوسرے قاری کو لمبے لمبے عناوین سے گھبراہٹ ہو گی۔ سات سے دس الفاظ کافی ہیں۔

    باوزن عناوین لکھیں
    اگر آپ کچھ شعر جوڑ سکتے ہیں تو کوشش کیجیے کہ عناوین کسی مشہور و مانوس وزن کے مطابق ہوں۔ یوں نیا عنوان بھی پہلی مرتبہ پڑھتے وقت نیا نہیں لگے گا اور آپ کو زیادہ قارئین میسرآ سکیں گے۔

    بشکریہ: شہزاد قیس

    آن لائن ربط: shahzadqais.com

     
    Last edited: ‏اپریل 18, 2018
    • پسندیدہ پسندیدہ x 7
  2. ابن عمر

    ابن عمر رحمه الله تعالى

    بانی و مہتمم اردو مجلس فورم

    شمولیت:
    ‏نومبر 16, 2006
    پیغامات:
    13,365
  3. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,054
    بہت عمدہ مضمون نقل کیا ہے ۔ بہت شکریہ + پوائنٹس ۔

    ویسے ابھی تو مجلس کی پوسٹس شمار کے قابل ہیں بے شمار کیسے ؟
     
  4. رفی

    رفی منتظمِ اعلٰی

    رکن انتظامیہ

    شمولیت:
    ‏اگست 8, 2007
    پیغامات:
    12,210
    شیئرنگ پسند کرنے کا شکریہ شداد بھائی و عین سسٹر!

    عین سسٹر، آپ ذرا اچھی اچھی پوسٹس شمار کر کے بتائیے گا!
    میں تو نہیں گن سکتا!!
     
  5. irum

    irum Web Master

    شمولیت:
    ‏جون 3, 2007
    پیغامات:
    31,582
    اچھی شیئرنگ ہے
     
  6. رفی

    رفی منتظمِ اعلٰی

    رکن انتظامیہ

    شمولیت:
    ‏اگست 8, 2007
    پیغامات:
    12,210
    ہلا؟
     
  7. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,054
    اففسوس اتنى كمزور رياضى ؟
     
  8. فرینڈ

    فرینڈ -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏مئی 30, 2008
    پیغامات:
    10,713
    بہت زبردست شیئرنگ ہے! گریٹ!
     
  9. یاسمین

    یاسمین -: مشاق :-

    شمولیت:
    ‏اپریل 5, 2009
    پیغامات:
    385
    بہت خوب،ماشا اللہ
     
  10. حجاب

    حجاب -: ماہر :-

    شمولیت:
    ‏جون 10, 2010
    پیغامات:
    666
    انسان کی فطرت ہے کہ جس کام سے روکا جائے وہی کرتا ہے ۔ اس عنوان کو پڑھ کر سبھی نے تفصیل پڑھی ہو گی۔
     
Loading...

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں