تباہ کن بارش، سیلاب ۔۔۔ وقت دعا ہے !

dani نے 'موسم' میں ‏جولائی 29, 2010 کو نیا موضوع شروع کیا

موضوع کی کیفیت:
مزید جوابات کے لیے کھلا نہیں۔
  1. dani

    dani نوآموز.

    شمولیت:
    ‏اکتوبر، 16, 2009
    پیغامات:
    4,333
  2. ابن عمر

    ابن عمر رحمہ اللہ بانی اردو مجلس فورم

    شمولیت:
    ‏نومبر 16, 2006
    پیغامات:
    13,365
  3. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,485
    آمین

    نالہ لئی میں شدید سیلابی صورتحال کے باعث فوج کو طلب کرلیا گیا
    AAJ TV URDU
     
  4. ابن عمر

    ابن عمر رحمہ اللہ بانی اردو مجلس فورم

    شمولیت:
    ‏نومبر 16, 2006
    پیغامات:
    13,365
  5. جاسم منیر

    جاسم منیر Web Master

    شمولیت:
    ‏ستمبر 17, 2009
    پیغامات:
    4,638
    یا اللہ تو اپنا رحم فرما، اپنا کرم فرما آمین۔ یا رب العالمین


    اللَهمَّ حَوَالَينَا وَلَا عَلَينَا اللّهُمَّ عَلَى الآكَامِ وَ الظُّرُوبِ وَ بُطُونِ الاَودِيَةِ وَ مَنَابِتِ الشَّجَرَةِ

    ترجمہ : اے اللہ ! ہمارے اطراف ميں بارش برسا، ہم پر نہ برسا، اے اللہ ! ٹیلوں، پہاڑوں، واديوں اور باغوں كو سيراب كر دے ۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  6. dani

    dani نوآموز.

    شمولیت:
    ‏اکتوبر، 16, 2009
    پیغامات:
    4,333
    آمین !
     
  7. dani

    dani نوآموز.

    شمولیت:
    ‏اکتوبر، 16, 2009
    پیغامات:
    4,333
  8. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,485
    انا للہ وانا الیہ راجعون
     
  9. ابومصعب

    ابومصعب -: منفرد :-

    شمولیت:
    ‏اپریل 11, 2009
    پیغامات:
    4,067
    آمین ثم آمین
    یہ وقت مصیبت کا ہے۔۔اور ہمیں‌مالک حقیقی سے دعا مانگنی چاہئے۔۔۔!
    یا اللہ ساری امت پر رحم فرما خاص طور پر سیلاب سے متاثرہ پاکستان کے مختلف ایریاجات کے عوام پر اپنی خاص رحمت سے انکے مسائل آسان کردے۔۔آمین ثم آمین
     
  10. مشتاق احمد مغل

    مشتاق احمد مغل -: منفرد :-

    شمولیت:
    ‏اپریل 6, 2007
    پیغامات:
    1,216
    آمین ثم آمین یا ارحم الراحمین یا رب العالمین
    اس وقت توبہت ہی خطرناک صورتحال ہے
    اسی وجہ سے ماہرین ڈیمز بنانے پر برسہا برس سے زور دے رہے ہیں
    لیکن ملک دشمن عناصر ان ڈیموں کو بننے نہیں دے رہے۔
    بھارت ہمارا پانی روک رہا ہے اسے تو کچھ بھی نہیں کہا جارہا مگر صوبے آپس میں ہی پانی کے مسئلے پر دست و گریباں ہیں
    پنجاب پر سندھی قوم پرست تو اتنے برہم ہیں کہ جیسے سارا پانی پنجاب پی رہا ہے جب کہ اسوقت صورتحال یہ ہے کہ پنجاب اپنے حصے کا پانی بھی سندھ و بلوچستان کو دے رہاہے۔
    کیسی ستم ظریفی کی بات ہے۔ایشیائی ترقیاتی بینک کی حالیہ رپورٹ کے مطابق سندھ میں صدرپاکستان ، اسپیکر سندھ اسمبلی اور سارے بڑے بڑے وڈیرے وزراء اپنی زمینوں کوسیراب کرنے کے لئے براہ راست کئی گنا زیادہ پانی چوری کرہے ہیں۔ اور چھوٹے کسان اور ٹیل والے پانی کو ترس رہے ہیں۔ اور الزام پنجاب پر دھر رہے ہیں۔بڑے ہی افسوس اور دکھ کا مقام ہے۔
    یہ سب آفت انہی وجوہات کی بناء پر ہے۔
    بہرحال اس وقت بہت ہی خطرناک صورتحال ہے۔ کئی بڑے بڑے بند ٹوٹ چکے ہیں۔کچھ کو شہروں کو بچانے کے لئے دھماکوں سے اڑایا جارہا ہے۔

    اللہ رحیم و کریم رحم فرمائیں۔
     
    Last edited by a moderator: ‏جولائی 31, 2010
  11. مشتاق احمد مغل

    مشتاق احمد مغل -: منفرد :-

    شمولیت:
    ‏اپریل 6, 2007
    پیغامات:
    1,216
    جناح برج انتہائی خطرے کی زد میں ہے۔ پاور ہاؤس میں پانی داخل ہوچکا ہے۔
    وقت دعا ہے ۔
    اب تک ہلاک ہونے والوں کی معلوم تعداد 750ہوگئی ہے۔
    اربوں روپے کانقصان ، فصلوں، شہروں کو ہونے والا نقصان اس کے علاوہ۔
    ہر طرف تباہی اور بربادی کے مناظر
    اللہ رحم فرمائیں
     
  12. منصف

    منصف -: منفرد :-

    شمولیت:
    ‏جولائی 10, 2008
    پیغامات:
    1,920
    یا اللہ رحم کر۔۔۔۔۔۔ہمارے گناہوں کو بخش دے اور سرزمین پاک کو تباہی سے بچا لے ۔۔۔۔(آمین)
    اس وقت اشد ضرورت ہے اجتماعی توبہ کی ۔۔۔۔

    [qh]اهْدِنَا الصِّرَاطَ الْمُسْتَقِيمَ () صِرَاطَ الَّذِينَ أَنْعَمْتَ عَلَيْهِمْ غَيْرِ الْمَغْضُوبِ عَلَيْهِمْ وَلَا الضَّالِّينَ[/qh]



    (آمین)
     
  13. dani

    dani نوآموز.

    شمولیت:
    ‏اکتوبر، 16, 2009
    پیغامات:
    4,333
    آمین
     
  14. Fawad

    Fawad -: ماہر :-

    شمولیت:
    ‏دسمبر 19, 2007
    پیغامات:
    962
  15. Fawad

    Fawad -: ماہر :-

    شمولیت:
    ‏دسمبر 19, 2007
    پیغامات:
    962
    Fawad – Digital Outreach Team – US State Department

    پاکستان ميں سيلاب کی تباہکاری – امريکی امداد کی تفصيل

    امريکہ نے جولائ 29 کو شروع ہونے والے تباہ کن سيلاب اور اس کے اثرات سے نبردآزما ہونے کے ليے پاکستان کی درخواست پر فوری ردعمل اور کاروائ کا آغاز کيا ہے۔ اس ضمن ميں ہمارا ردعمل ہماری انسانی قدروں اور پاکستان کے ساتھ ہمارے گہرے روابط کا آئينہ دار ہے۔

    اس وقت دو امريکی فلائٹس 51،840 حلال کھانوں کی ترسيل کے عمل ميں شامل ہيں۔ امريکی ٹرانسپورٹ کمانڈ کے روح رواں ڈنکن مکنيب اگست 2 کو اسلام آباد کے طے شدہ دورے پر آ رہے ہيں۔ ان کے طيارے ميں 12،288 مزيد حلال کھانوں کا سامان بھی شامل ہے۔

    سات امريکی ہيلی کاپٹرز جو کہ وزارت داخلہ کے 50 ويں ائر سکوارڈن ميں شامل ہيں، اس وقت ريليف اور معاونت کے عمل کا حصہ ہيں۔ اتوار کے روز ان ہيلی کاپٹرز کے ذريعے 5100 پاؤنڈز راشن سيلاب کے متاثرين تک پہنچايا گيا۔ اس کے علاوہ ان ہيلی کاپٹرز کے ذريعے 165 افراد کو محفوظ مقام تک پہنچانے کے علاوہ 9 افراد کو نوشہرہ کے ہسپتال بھی منتقل کرنے کا کام کيا گيا۔

    ان عملی اقدامات کے علاوہ امريکہ نے پاکستان نيشنل ڈيذاسٹر ريليف اورگانائزيشن کے زير انتظام انسانی بنيادوں پر 10 ملين ڈالرز کی امداد کا اعلان کيا ہے۔

    افغانستان اور خطے ميں ميسر امريکی سٹاک ميں موجود سامان سے 10 مختلف فلائٹس پر 189،072 حلال کھانوں کو فوری بنيادوں پر سويلين اور ملٹری افسران تک منتقل کيا گيا ہے۔

    جولائ 30 سے اب تک وزارت داخلہ کے سکوارڈن 50 کے زير انتظام امريکی ہيلی کاپٹرز مجموعی طور پر 733 افراد کو محفوظ مقامات تک پہنچانے کے علاوہ 11،873 پاؤنڈ خوراک کا سامان متاثرين تک پہنچا چکے ہيں۔

    ان اقدامات کے علاوہ امريکہ کی جانب سے 4 ذوڈيک کشتياں اور پانی کے 2 عدد فلٹريشن يونٹس بھی مہيا کيے گۓ ہيں جو پمپنگ، پانی کی صفائ، ذخيرہ اور بوتلوں میں صاف پانی کی تقسيم کے عمل ميں قريب ايک لاکھ افراد تک سہولت پہنچانے ميں معاونت فراہم کر رہے ہیں۔

    اس کے علاوہ پشاور اور کرم ايجنسی ميں ہائ وے پلوں کی ٹوٹ پھوٹ اور تبائ سے پيش آنے والی صورت حال سے نبردآزما ہونے کے لیے عارضی طور پر 12 پری فيبريکيٹٹ سٹيل پلوں کا بھی انتظام کيا گيا ہے۔

    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ
    digitaloutreach@state.gov
    U.S. Department of State
     
  16. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,485

    آمين ، اب تو مدد كى بھی بہت ضرورت ہے ۔ ايك ايك پیسے كى ضرورت ہے ۔سيلاب متاثرين كے ليے يہ رمضان بہت مشكل ہو گا ۔ اور اگر بحالى كے كام ميں تاخير ہوئی تو ستمبر سے سرديوں كا آغاز مزيد مشكل كر دے گا ۔ اگر ہم روايتى افطاريوں اور عيد كى تياريوں کی بجائے ذرا كفايت شعارى سے كام ليں تو بہت کچھ ڈونیٹ كر سكتے ہیں ۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  17. مشتاق احمد مغل

    مشتاق احمد مغل -: منفرد :-

    شمولیت:
    ‏اپریل 6, 2007
    پیغامات:
    1,216
  18. مشتاق احمد مغل

    مشتاق احمد مغل -: منفرد :-

    شمولیت:
    ‏اپریل 6, 2007
    پیغامات:
    1,216
    سیلاب کی تباہی 2004 کی سونامی سے زیادہ ہے: اقوام متحدہ

    سیلاب کی تباہی 2004 کے سونامی سے زیادہ ہے
    اقوام متحدہ


    اقوام متحدہ نے کہا ہے کہ پاکستان میں حالیہ سیلاب 2005کے زلزلے اور 2004کے سونامی سے زیادہ تباہ کن ہے جس کے نتیجے میں ایک کروڑ40لاکھ افراد متاثر ہوئے جبکہ پاکستان نے متاثرین سیلاب کیلئے عالمی برادری سے اپیل کی ہے کہ سیلاب زدگان کیلئے بھرپورمدد کی جائے۔ اقوام متحدہ کے ذیلی ادارہ برائے انسانی امداد نے کہا ہے کہ متاثرین میں سندھ کے متاثر ین کی تعداد شامل نہیں صرف پنجاب میں 14لاکھ ایکڑ رقبے پر فصلیں تباہ ہوگئی، متاثرین کی بحالی کیلئے زلزلہ زدگان سے زیادہ امداد کی ضرورت ہے۔ اقوام متحدہ کے انسانی امداد کے کوآرڈینیٹر مارٹن مگونجا نے کہا کہ متاثرین کیلئے شیلٹر، پلاسٹک شیٹس اور گھریلو اشیاء کی زیادہ ضرورت ہے۔ انہوں نے امداد دینے والے اداروں اور ممالک پر زور دیا کہ وہ پاکستان کے سیلاب زدگان کیلئے زیادہ سے زیادہ امداد فراہم کریں۔ اقوام متحدہ نے گزشتہ روز ایک ایمرجنسی ریلیف فنڈ قائم کیا ہے جس میں اب تک 10 ملین ڈالر وصول ہو چکے ہیں۔ اقوام متحدہ کے دیگر ذیلی اداروں نے بھی 16 ملین ڈالر کی امداد جمع کی ہے۔

    (یاد رہے 2004کو آنے والی سونامی نے کئی ملکوں کو ہٹ کیا تھا اور بڑی تباہی پھیلائی تھی۔جبکہ اس سیلاب نے پاکستان کو مجموعی طور پر ان ملکوں سے کہیں زیادہ تباہ و برباد کردیا ہے۔)


    ماخذ
     
    Last edited by a moderator: ‏اگست 10, 2010
  19. آزاد

    آزاد ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏دسمبر 21, 2007
    پیغامات:
    4,564
    اللھم ارحم علی حالنا ولا تنظر الی سوء اعمالنا۔
     
  20. dani

    dani نوآموز.

    شمولیت:
    ‏اکتوبر، 16, 2009
    پیغامات:
    4,333
    آمین :00002:
     
موضوع کی کیفیت:
مزید جوابات کے لیے کھلا نہیں۔

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں