خلافت و جمہوریت

ابوبکرالسلفی نے 'مَجلِسُ طُلابِ العِلمِ' میں ‏نومبر 16, 2010 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. طارق اقبال

    طارق اقبال محسن

    شمولیت:
    ‏اگست 3, 2009
    پیغامات:
    316

    مگر جو طریقہ آپ بتلاتے ہیں۔ وہ تو بالکل ناقابل عمل اورفضول ہے ۔ صرف قرآن وسنت اور شرک کی رٹ لگانے سے خلافت قائم نہیں‌ ہوگی ۔ اس کیلے کوئی قابل عمل طریقہ اختیار کرنا پڑے گا۔ آپ تو اس طرح‌ خلافت و جمہورت پر دلائل لا رہے ہیں کہ اہل اقتدار نے گویا آپ سے پوچھا ہے کہ بھائی کون سا طریقہ اختیار کرنا چاہیے ۔ بس آپ کے بتانے کی دیر ہے اور وہ کردیں گے ۔ اگر کوئی بھائی شرک و کفر کی فضول بحث سے ہٹ کر کسی قابل علم طریقے پر بات کرنا چاہتا ہو تو میں حاظر ہوں۔ شرک اور کفر کا سب کو پتہ ہے اور شاید آپ سے زیادہ ہی کا علم ہو۔ ۔۔۔۔
     
  2. ابوبکرالسلفی

    ابوبکرالسلفی محسن

    شمولیت:
    ‏ستمبر 6, 2009
    پیغامات:
    1,672
    ماشاء اللہ شرک و کفر کا آپ کو معلوم ہے پھر بھی اسی طرف دعوت ہے ؟؟؟؟ سبحان اللہ
    جناب والا جسے آپ فضول طریقہ کہہ رہے ہیں یہی طریقہ حق ہے جسے سلف نے بھی اپنایا ہے۔ یہ عقلی دلائل دینا اور مجبوری بتانا یہ کسی کام کا نہیں!!!!
    آپ کی صرف ایک ہی دلیل ہے کہ"ہماری مجبوری ہے" اور یہ دلیل ناکافی ہے کسی شرک وکفر کو اپنانے کے لئے!! کیا اللہ پر بھروسہ نہیں؟؟؟؟؟ اگر ہے تو اللہ تعالی پر بھروسہ کیجئے اور اللہ تعالی کا وعدہ یاد کیجئے ۔
    جو لوگ تم میں سے ایمان لائے اور نیک کام کرتے رہے ان سے خدا کا وعدہ ہے کہ ان کو ملک کا حاکم بنادے گا جیسا ان سے پہلے لوگوں کو حاکم بنایا تھا اور ان کے دین کو جسے اس نے ان کے لئے پسند کیا ہے مستحکم وپائیدار کرے گا اور خوف کے بعد ان کو امن بخشے گا۔ وہ میری عبادت کریں گے اور میرے ساتھ کسی چیز کو شریک نہ بنائیں گے۔ اور جو اس کے بعد کفر کرے تو ایسے لوگ بدکردار ہیں۔۔ النور 55

    مگر جناب کو تو اسباب زیادہ عزیز ہیں اور اسباب بھی ایسے جن کے باطل ہونے میں کوئی شک و شبہ نہیں!!!
    آپ کا علم مجھ سے بے شک زیادہ ہوگا میں تو ایک طالب علم ہوں جتنا معلوم ہوتا ہے اسی کے مطابق سوال و جواب کے ذریعے علم حاصل کرتا ہون۔، مگر پھر بھی میں یہ کہونگا کہ آپ کے پاس کوئی بھی شرعی دلیل ان شاء اللہ نہیں‌ہوگی کہ مجبوری میں اس جمہوریت کے ذریعے بھی اسلام لایا جا سکتا ہے!!
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  3. طارق اقبال

    طارق اقبال محسن

    شمولیت:
    ‏اگست 3, 2009
    پیغامات:
    316
    میرے بھائی کیا آپ کو اللہ پر بھروسہ نہیں‌ کہ وہ آپ کو رزق دے گا۔ تو پھر گھر پر کیون‌ نہیں بیٹھتے ؟ تگ ودو کیوں‌ کرتے ہیں ۔

    اگر کوئی اور بھائی بات کرنا چاہیں تو موسٹ ویلیکم ۔ اعجاز بھائی سے بڑی اچھی بات چیت چل رہی تھی اس تھریڈ میں‌ مگر وہ خاموش ہوگئے ہیں‌۔ بھائی میں‌ نے اپنے علم کی ہی بات نہیں‌ کی تھی بلکہ ان سب جماعتوں بشمولیت محترم ساجد میر اور علامہ ابتسام الہی ظہیر کی بات کی تھی ۔ آپ کا ان کے بارہ میں‌ کیا فتوٰی ہے ؟؟
     
  4. ابوبکرالسلفی

    ابوبکرالسلفی محسن

    شمولیت:
    ‏ستمبر 6, 2009
    پیغامات:
    1,672

    جی ہاں!!! یہی سمجھانا چاہتا ہوں کہ جب مجھے بھوک لگتی ہے تو میں حلال ذریعہ سے رزق حاصل کرتا ہوں نا کہ، چوری و ڈکیتی کی مدد سے اپنے رزق کا انتظام کرتا ہوں۔
    اور اللہ پر بھروسہ کرکے ہی حلال رزق کمانے کی کوشش کرتا ہوں اور حرام سے بچتا ہوں۔ الحمدللہ اللہ کی توفیق ہے۔

    میرے دوست آپ کو تو معلوم ہے کہ ہم شخصیت پرست نہیں!!!! اس لئے ابتسام الٰہی صاحب کا اپنا موقف ہے مگر دیکھا جائیگا کہ دلیل کیا ہے؟؟؟؟ ہماری دلیل بھی سامنے ہے اور حافظ صاحب کی دلیل بھی موجود ہے۔

     
  5. طارق اقبال

    طارق اقبال محسن

    شمولیت:
    ‏اگست 3, 2009
    پیغامات:
    316
    محترم یہی مسئلہ ہے ہمارا کہ ہم بات تو کرجاتے ہیں مگر یہ نہیں‌ سوچتے کہ اس کی ذد میں‌ کون کون آتا ہے ؟ میرے بھائی یہ سب کہنے کی باتیں کہ ہم شخصیت پرست نہیں ہیں‌۔ وگرنہ اتنی جماعتیں اور گروہ نہ ہوتے ۔ بات صرف اپنے اپنے موقف کی کریں تو اچھا ہے یہ کفر و شرک کی رٹ نہ لگایا کریں ۔ آپ کوئی اس کے ٹھیکیدار نہیں ہیں ۔ اسی سے ایک دوسرے کے خلاف تعصب اور نفرت بڑھتی ہے ۔ یا شاید یہ الفاظ ادا کرنا آپ کی مجبوری ہے کہ اس کے بغیر لوگ آپ کی بات نہیں‌ سنیں گے۔ موجودہ آئین پاکسان کے ہوتے ہوئے کوئی اس کو کفر و شرک بتلائے تو وہ خود اپنی اصلاح کرے ۔
     
  6. ابوبکرالسلفی

    ابوبکرالسلفی محسن

    شمولیت:
    ‏ستمبر 6, 2009
    پیغامات:
    1,672
    اعلٰحضرت میں آپ کے گوش گزار کر دینا چاہتا ہوں کہ اس بات کا اقرار آپ بھی کر چکے ہیں‌کہ جمہوریت کفر ہے!!!! اور آپ کہہ رہے ہیں‌کہ ہم کفر و شرک کی رٹ لگا رہے ہیں!!!‌ جب یہ بات معلوم ہو چکی ہے کہ موجودہ جمہوریت اور کوئی بھی جمہوریت ہو وہ کفر و شرک پر مبنی ہے جس کے لئے میں‌نے عبد الرحمن کیلانی حفظہ اللہ کی کتاب سے کچھ مضمون بھی پیش کئے مگر آپ نے ان کو پڑھنے کی زحمت نہ کی شاید کہ آپ اسے پڑھ لیتے تو آئین کی رٹ سے گریز کرتے۔

    شخصیات کو تو آپ بیچ میں‌حاضر کر رہے ہیں‌، جیسے ساجد میر اور حافظ صاحب وغیرہ جبکہ میں‌نے ابھی تک کسی شخصیت کا نام نہیں‌لیا اور اگر لیا ہے تو اس کا مضمون بھی پیش کیا ہے اور اس کے موقف میں دلیل بھی موجود ہے!! اگر آپ چاہیں‌تو جمہورت اور جمہوریت میں‌شمولیت کے بارے میں، میں‌عرب علماء کے اقوال بھی پیش کرسکتا ہوں۔
    ویسے بہترہےکہ اس موضوع کو یہیں‌ختم کر دیا جائے کیوں‌کہ بظاہر یہ معلوم ہوتا ہے کہ آپ کے پاس صرف بحث برائے بحث کرنے کے اور دوسرا کوئی راستہ نہیں‌کیوں‌کہ جمہوریت کے اسلامی ہونے یا جمہوریت کے کفر ہوتے ہوئے اس میں شمولیت اختیار کرنے کے دلائل نہیں‌ ہیں۔ سوائے "مجبوری" !!!
    میں اس بحث کو یہیں‌ختم کرتا ہوں۔
    والسلام علیکم



     
  7. ابو انس سلفی

    ابو انس سلفی -: محسن :-

    شمولیت:
    ‏اکتوبر، 23, 2010
    پیغامات:
    128
    ابوابکراسلفی بھائی،اللہ آپ کے علم اور عمل میں برکت دے۔جمہوریت کے گرداب میں پھنسے لوگ اسلام کو کیا جانیں
     
  8. ابوبکرالسلفی

    ابوبکرالسلفی محسن

    شمولیت:
    ‏ستمبر 6, 2009
    پیغامات:
    1,672
    الممادئ المفیدۃ فی التوحیدوالفقہ العقیدہ ، سے ایک اقتباس!

    بسم اللہ الرحمن الرحیم


    الممادئ المفیدۃ فی التوحیدوالفقہ العقیدہ​
    توحید ، عقیدہ فقہ کا بنیادی علم
    تألیف: فضیلۃ الشیخ یحیی بن علی الحجوری(حفظہ اللہ)
    (دارالحدیث دماج، یمن)
    مترجم: طارق علی بروہی​



    45۔اگر آُ پ سے کہا جائے کہ: ڈیموکریسی(جمہوریت) کیا ہے؟ تو آپ کہیں کہ: یہ کتاب وسنت کو چھوڑ کر معاشرے کا اپنے لئے آپ ہی احکام تجویز کرنا ہے۔

    46-اگر آپ سے کہا جائے کہ: اس کا کیا حکم ہے؟ تو آپ کہیں کہ: یہ شرکِ اکبر ہے، اس کی دلیل اللہ تعالی کا فرمان ہے:
    إِنِ الْحُكْمُ إِلَّا لِلَّـهِ(یوسف:67)
    (حکم تو صرف اللہ تعالی ہی کا ہے)
    وَلَا يُشْرِكُ فِي حُكْمِهِ أَحَدًا(الکھف:26)
    (اور اس (اللہ تعالیٰ) کے حکم میں کوئی شریک نہیں)
    47- اگر آپ سے کہا جائے کہ: انتخاب (الیکشن) کی کیا حقیقت ہے؟ تو آپ کہیں کہ: یہ جمہوری نظام کی پیداوار ہے جو برحق شریعت الہی کے مخالف ہے، اور یہ کافروں سے مشابہت بھی ہے جبکہ کافروں سے مشابہت جائز نہیں، اس میں بہت ہی عظیم نقصانات بھی ہیں اور اس میں مسلمانوں کا کوئی نفع یا فائدہ نہیں۔ اس کے اہم ترین نقصانات میں سے: حق وباطل اسی طرح حق پرست وباطل پرست میں اکثریت کے اعتبار سے مساوات وبرابری پیدا کرنا ، الولاء والبراء (اللہ تعالی کے لئے دوسری ودشمنی) جیسے اہم عقیدے کوضائع کردینا، مسلمانوں کی شان وشوکت کو پارہ پارہ کرکے ان کے درمیان بغض وعداوت اسی طرح حزبیت وتعصب کو جنم دینا، دھوکہ بازی ، مکروفریب کاری، جھوٹ فراڈ ، اوقات واموال کا ضیاع، عورتوں کی (حقیقی) جاہ وحشمت کا ختم ہونا، علومِ شریعت اوراس کے اہل پر اعتماد متزلزل ہونا ہے۔
    48- اگر آپ سے کہا جائے کہ: حزبیت (جماعت بندی، تنظیم سازی، پارٹی بازی، فرقہ بندی، حزبِ اختلاف) کا کیا حکم ہے؟ تو آپ کہیں کہ: یہ حرام ہے، اسکی دلیل اللہ تعالی کا فرمان :
    وَلَا تَكُونُوا مِنَ الْمُشْرِكِينَ ، مِنَ الَّذِينَ فَرَّقُوا دِينَهُمْ وَكَانُوا شِيَعًا ۖ كُلُّ حِزْبٍ بِمَا لَدَيْهِمْ فَرِحُونَ(الروم: 31-32)
    (اور ان مشرکین میں سے مت ہونا، جنہوں نے اپنے دین میں تفرقہ کیا اور گروہ ہوگئے ، ہر حزب(گروہ) اسی چیز پر مگن ہے جو اس کے پاس ہے)
    وَاعْتَصِمُوا بِحَبْلِ اللَّـهِ جَمِيعًا وَلَا تَفَرَّقُوا(آل عمران: 103)
    (اور تم سب مل کر اللہ تعالیٰ کی رسی کو مضبوطی سے تھامے رہنا اور تفرقہ نہ کرنا)
    إِنَّ هَـٰذِهِ أُمَّتُكُمْ أُمَّةً وَاحِدَةً وَأَنَا رَبُّكُمْ فَاعْبُدُونِ(الانبیاء: 92)
    (یہ تمہاری امت ایک ہی امت ہے اور میں تمہارا(اکیلا) رب ہوں تو میری ہی عبادت کرنا)
    أَلَا إِنَّ حِزْبَ اللَّـهِ هُمُ الْمُفْلِحُونَ(المجادلۃ: 22)
    (خبردار! بیشک حزبُ اللہ(اللہ تعالیٰ کی جماعت) ہی فلاح پانے والی ہے)
    عبد اللہ بن عمر وبن العاص ؓ سے روایت ہے کہ رسول اللہ (ﷺ) نے فرمایا:"وَتَفتَرقُ أُمَّتیِ عَلَی ثَلاثِ وَسَبعِین مِلَّۃ کُلُّھُم فی النَّارِ الَّا مِلَّۃُ(أی فرقۃ) وَاحِدَۃ"(میری امت بھی تہتر (73) فرقوں میں بٹ جائے گی تمام کے تمام فرقے جہنم میں جائیں گے سوائے ایک فرقے کے) پوچھا: وہ کون سا فرقہ ہوگا اے اللہ کے رسول(ﷺ) ؟ فرمایا:"مَاأَنَا عَلَیہ وَأَصحَابِی" (جو اس چیز پر ہوگا جس پر میں اور میرے صحابہ ہیں) اسے ترمزی نے روایت کیا(5/26) اس کا ایک شاہد معاویہ ؓ کی حدیث میں بھی ہے جسے ابو داؤد رقم (4597) اور احمد (4/102) نے روایت فرمایا،ان کے علاوہ بھی اس حدیث کے اور شواہد موجود ہیں، لہٰذا یہ حدیث حسن ہے۔
    اس حدیث میں رسول اللہ(ﷺ) کا یہ فرمانا کہ سب کے سب جہنم میں جائیں گے، اس میں اہل اہوا(خواہش پرستوں) کا حال اور ان کی جرح کا بیان ہے۔

     
  9. محمد ارسلان

    محمد ارسلان -: Banned :-

    شمولیت:
    ‏جنوری 2, 2010
    پیغامات:
    10,422
  10. ابو انس سلفی

    ابو انس سلفی -: محسن :-

    شمولیت:
    ‏اکتوبر، 23, 2010
    پیغامات:
    128
    جزاک اللہ ابوبکر سلفی بھائی
     
  11. فرقان خان

    فرقان خان -: محسن :-

    شمولیت:
    ‏مارچ 4, 2010
    پیغامات:
    208
    ابوبکر بھائی آج تو آپ بھی تکفیریوں والی باتیں نہیں کر رہے...کفر اکبر،حاکمیت الٰہی وغیرہ وغیرہ!!!

    جو میں کہہ دوں تو سمجھا جائے مجھ کو دار کے قابل
    جو تو کہہ دے تو تیری بزم کا دستور ہو جائے
     
  12. ابوبکرالسلفی

    ابوبکرالسلفی محسن

    شمولیت:
    ‏ستمبر 6, 2009
    پیغامات:
    1,672
    سبحان اللہ
    اس میں‌تکفیر والی کون سی بات ہے؟؟؟؟؟
    تکفیریوں‌اور اہل سنۃ کے منھج میں‌زمین آسمان کا فرق ہے۔
    اللہ تعالی ہمیں‌ ایسے فتنہ سے محفوظ رکھے آمین
     
  13. نعیم یونس

    نعیم یونس -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏نومبر 24, 2011
    پیغامات:
    7,923
    جزاک اللہ خیرا یا اخی ابو بکر السلفی
     

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں