مراقبہ اور چلہ کشی

عاکف سعید نے 'مَجلِسُ طُلابِ العِلمِ' میں ‏نومبر 24, 2010 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. عاکف سعید

    عاکف سعید محسن

    شمولیت:
    ‏مئی 16, 2010
    پیغامات:
    181
    السلام علیکم ورحمتہ اللہ وبرکاتہ

    مراقبہ اور چلہ کشی کا عمل عام طور پر آبادیوں سے دور جنگل، صحرا، سمندر یا دریا کے کنارے کیا جاتا ہے، بعض لوگ گھر میں کمرہ مخصوص کر کے بھی یہ عمل کرتے ہیں۔ مراقبے کیلیے جس شخص کو اس کے عامل یا پیر یا گرو نے جو طریقہ بتایا ہو، وہ اسے اختیار کرتا ہے۔ اسی طرح جو مختلف وظائف و عملیات بتائے جاتے ہیں، انہی پر عمل کیا جاتا ہے۔ بعض مراقبوں میں چپ سادھنا ضروری قرار دیا جاتا ہے یعنی مراقبے کے دوران کسی سے بات نہیں کرنی، خواہ مراقبہ کئی دنوں اور مہینوں تک محیط ہو۔ بعض اوقات مراقبے کی جگہ سے باہر نکلنا ممنوع کر لیا جاتا ہے حتی کہ کھانے پینے اور دیگر ضروریات کیلیے کسی اور کی مدد لی جاتی ہے۔
    جادوگراور کاہن لوگ مراقبے میں جنات کی مدد کیلیے کفریہ و شرکیہ عملیات بھی کرتے ہیں۔ عاملوں اور کاہنوں وغیرہ کے اکثر مراقبوں میں نماز و روزہ اور طہارت و پاکیزگی کا بھی خیال نہیں رکھا جاتا۔ ان مراقبوں اور چلہ کشیوں میں جسطرح حقوق اللہ سے لاپروائی کی جاتی ہے، اسی طرح حقوق العباد کو بھی بری طرح پامال کیا جاتا ہے۔
    اس بات میں کوئی شک نہیں کہ عہد نبوی صلی اللہ علیہ وسلم اور عہد صحابہ رضوان اللہ علیہم و اجمعین میں مراقبہ کے حوالے سے سوائے ایک اعتکاف کے عمل کے ہمیں کوئی اور مثال نہیں ملتی جب کہ اعتکاف میں بھی جو تعلیمات دی گئی ہیں، وہ سب کے سامنے ہیں۔ اس میں نہ کوئی کفریہ و شرکیہ عمل کیا جاتا ہے، نہ نماز، روزہ وغیرہ کی بے حرمتی کی جاتی ہے بلکہ یہ تو عبادت میں رغبت و کثرت کیلیے مسنون و مستحب قرار دیا گیا اور وہ بھی سال بھر میں چند دن کیلیے۔
    بعض لوگ مراقبے کے جواز کیلیے نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کے غارِحرا میں عبادت کیلیے خلوت نشینی کو بطور دلیل پیش کرتے ہیں حالانکہ وہ یہ بھول جاتے ہیں کہ یہ واقعہ نبوت و رسالت سے پہلے کا ہے۔ جب آپ صلی اللہ علیہ وسلم کو نبی بنا دیا گیا تو اس کے بعد آخر دم تک آپ صلی اللہ علیہ وسلم ایک مرتبہ بھی غارِحرا میں خلوت نشینی کیلیے نہیں گئے بلکہ دوسروں کو بھی ہر اس چیز سے روکتے اور منع کرتے جس سے ترک دنیا کی بو آتی۔ کیا یہ اس بات کی دلیل نہیں کہ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے چلوں اور مراقبوں کو ناپسند کیاہے۔۔۔۔۔۔۔!
    بعض لوگ مراقبوں کو روحانیت میں ترقی کا ذریعہ قرار دیتے ہیں۔ لیکن سوال یہ ہیں کہ اگر مراقبہ روحانیت میں ترقی کا ذریعہ ہے تو پھر نبی صلی اللہ علیہ وسلم اور صحابہ کرام رضوان اللہ علیہم و اجمعین اس سے کیوں پیچھے رہے، اگر وہ پیچھے رہے ہیں تو اس کا مطلب ہے کہ اسلامی روحانیت میں مراقبہ اور چلہ کشی وغیرہ کی کوئی حیثیت نہیں۔۔۔۔۔۔۔!
    کچھ عرصہ سے پاکستان میں 'مراقبہ' کو عجیب و غریب انداز سے متعارف کروایا جا رہا ہے۔ اس مقصد کی تکمیل باقاعدہ اور منظّم طریقہ سے جاری ہے اور طرہ یہ کہ اس کے کرتا دھرتا بعض نام نہاد مسلمان ہیں جن میں خواجہ شمس الدین عظیمی سر فہرست ہیں جنہوں نے سلسلہ عظیمیہ روحانیہ قائم کر رکھا ہے اور اس روحانی سلسلہ کا جال پورے ملک میں پھیلا رکھا ہے۔ کراچی اور لاہور میں بڑے بڑے 'مراقبہ حال' تیار کر رکھے ہیں جہاں مرد و زن کو مخلوط ریاضتیں کروائی جاتی ہیں (نعوذ باللہ)۔ یہ لوگ 'روحانی ڈائجسٹ' کے نام سے رسالہ جاری کرتے ہیں جس پر جلی حروف میں لکھا ہوتا ہے:
    "یہ پرچہ بندہ کو خدا تک لے جاتا ہے اور بندہ کو خدا سے ملا دیتا ہے"

    نیز ان لوگوں کا دعوی ہے کہ ہم مراقبوں کے ذریعے روحانی علاج کرتے ہیں، ہر مرض کو روحانی علاج سے دور کرتے ہیں، حالت بیداری میں اللہ تعالی اور اس کے محبوب پیغمبر صلی اللہ علیہ وسلم کا دیدار کروایا جاتا ہے اور نیک لوگوں کی روحوں سے بھی ملاقات کروائی جاتی ہیں وغیرہ وغیرہ۔۔۔۔

    حالانکہ یہ تمام دعوے جھوٹ اور فریب پر مبنی ہیں اور گیان دھیان، ریاضتوں اور مراقبوں کا ایسا کوئی نظام قرآن و سنت میں موجود ہی نہیں اور صحابہ کرام کا ایسا کوئی عمل رہا ہے، یہ سب ان کا خود ساختہ اور سراسر فریب ہے۔۔۔
    اسی طرح روحوں سے باتیں کروانا بھی ایک دھوکہ اور جادوئی و شیطانی کام ہے۔ امام ابن تیمیہ رحمتہ اللہ روحوں کے حاظر ہونے کی حقیقت واضح کرتے ہوئے رقم طراز ہیں کہ
    "بسا اوقات مشرک لوگ کسی مردے کو پکارتے ہیں اور شیطان اس مردے کی شکل میں ان کے سامنے آجاتا ہے اور بعض اوقات شیطان کسی زندہ شخص کی صورت میں ان کے سامنے نمودار ہو جاتا ہے اور وہ یہی سمجھتے ہیں کہ یہ وہی شخص ہے جسے ہم نے پکارا ہے حالانکہ وہ شیطان ہوتا ہے"
    (مجموع الفتاویٰ، ج19،ص47)
    ابن تیمیہ رحمتہ اللہ علیہ سورہ اخلاص کی تفسیر میں فرماتے ہیں کہ:
    "بعض لوگوں نے اپنے شیخ کی دہائی دی اور ان کو شیخ کی صورت نظر آگئی اور بعض اوقات تو وہ شیخ ان کا کوئی کام بھی کر دیتا ہے جس سے وہ یہ سمجھتے ہیں کہ ان کا شیخ حاضر ہوا تھا یا پھر کوئی فرشتہ اس شیخ کی صورت میں ظاہر ہوا تھا جو اس شیخ کی کرامت ہے۔ اس سے ان کا مشرکانہ عقیدہ اور زیادہ راسخ ہوجاتا ہے حالانکہ انہیں معلوم نہیں کہ اس طرح کے کام شیاطین، بت پرستوں کے ساتھ بھی کرتے رہتے ہیں اور وہ ان بت پرستوں کے سامنے بھی ظاہر ہوتے ہیں اور ان کے بعض کام بھی کر دیتے ہیں۔ لہذٰا یاد رہے کہ یہ تمام خیر القرون کے بعد کی پیداوار ہیں"
    (تفسیر سورہ اخلاص:ص118)

    بعض لوگ یہ بھی کہتے ہیں کہ اگر مرقبہ، چلہ کشی اور ریاضت وغیرہ سب غلط ہیں تو ان کا اتنا اثر کیوں ہیں ہمارے بہت سے کام کیسے ہوجاتے ہیں، تو ان کے وسوسوں کا جواب ابن تیمیہ کی بیان کردہ عبارت میں موجود ہیں کہ شیطان بت پرستوں کے بھی کام کر دیتا ہے تو کیا یہ ان کو بھی حق جانے گے۔۔۔۔۔۔؟

    روحانیت کے نام پر جو مراقبے کرائے جاتے ہیں ان سے انسان کا ذہنی توازن بھی بگڑتا ہے اور انسان کے پاگل ہونے کا بھی خطرہ رہتا ہے، مراقبے کرنے والے یہ بات اچھی طرح جانتے ہیں۔ ان کاموں میں شیطان بھی دلچسپی لیتا ہے اور ایسے لوگوں کو مزید گمراہ کرنے کیلیے اپنے وسوسے تیز کر دیتا ہے۔ کبھی خواب میں آکر اسے وہ صورتیں دکھاتا ہے جن کا وہ مراقبے میں تصور کرتا ہے یا کبھی بیداری کی حالت میں آکر اسے احساس دلاتا ہے کہ جس ہستی کا وہ مراقبہ میں تصور کرتا ہے، وہ اس کے سامنے آگئی ہے۔ حتی کہ بعض کے ساتھ تو شیطان گفتگو بھی کرتا ہے تاکہ انسان راہ حق سے ہٹا رہے اور اس کا دھیان اسی گمراہی میں لگ جائے اور سنت نبوی سے دوری رہے۔
    آج جو لوگ عامل اور کاہن اس طرح کی حرکتیں کرتے ہیں اور کم علم مسلمانوں کو گھیر کے ان سے عملیات، مراقبے اور چلہ کشی کرواتے ہیں، یہ سب ذاتی مفاد کیلیے ایسا کرتے ہیں، خود بھی گمراہ ہوتے ہیں اور دوسروں کو بھی کرتے ہیں۔ اللہ تعالہ ان کے شر سے بچائے اور جو اس طرح کی گمراہی کی راہ پر چل رہے ہیں، انہیں ہدایت عطا فرمائے۔ آمین
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 2
  2. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,482
    وعليكم السلام ورحمت اللہ وبركاتہ
    جزاكم اللہ خيرا وبارك فيكم ۔
    ممكن ہو تو سلسلہ عظيميہ نامى، نام نہاد روحانى سلسلے كى حقيقت پر مزيد تفصيل سے لکھیے۔ بارك اللہ فيكم ووفقكم لكل خير۔
     
  3. عاکف سعید

    عاکف سعید محسن

    شمولیت:
    ‏مئی 16, 2010
    پیغامات:
    181
    جزاک اللہ۔ ان شاء اللہ جلد ہی
     
  4. عاکف سعید

    عاکف سعید محسن

    شمولیت:
    ‏مئی 16, 2010
    پیغامات:
    181
    سلسلہ عظیمی کے مرید کا کفر


    [​IMG]
     

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں