مرزا قادیانی انگریز کا ایجنٹ

راجپوت نے 'غیر اسلامی افکار و نظریات' میں ‏جون 3, 2011 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. راجپوت

    راجپوت -: محسن :-

    شمولیت:
    ‏دسمبر 28, 2009
    پیغامات:
    116
    مرزا غلام احمد قادیانی انگریزوں کا ایجنٹ اور اس کا خاندان انگریز کا نمک خوار تھا اس بات کو ہم خود مرزا قادیانی کی کتاب سے ثابت کرنے جارہے ہیں حق کے متلاشی قادیانیوں کیلئے:

    مرزا لکھتا ہے کہ: "وہ قدیم سے سرکار انگریزی کے پکے خیر خواہ اور خدمت گذار ہیں۔ اس خود کاشتہ پودے کی نسبت نہایت احتیاط اور تحقیق اور توجہ سے کام لے اور اپنے ماتحت حکام کو اشارہ فرمائے کہ وہ بھی اس خاندان کی ثابت شدہ وفاداری اور اخلاص کا لحاظ رکھ کر مجھے اور میری جماعت کو ایک خاص عنایت اور مہربانی کی نظر سے دیکھیں ہمارے خاندان نے سرکار انگریزی کی راہ میں اپنے خون بہانے اور جان دینے سے فرق نہیں کیا اور نہ اب فرق ہے۔ لہٰذا ہمارا حق ہے کہ ہم خدمات گذشتہ کے لحاظ سے سرکار دولتمند کی پوری عنایات اور خصوصیت توجہ کی درخواست کریں"۔
    (روحانی خزائن جلد 13 صفحہ 350)

    اور مجھ سے سرکار انگریزی کے حق میں جو خدمت ہوئی وہ یہ تھی کہ میں نے پچاس ہزار کے قریب کتابیں اور رسائل اور اشتہارات چھپواکر اس ملک اور نیز دوسرے بلاد اسلامیہ میں اس مضمون کے شائع کئے کہ گورنمنٹ انگریزی ہم مسلمانوں کی محسن ہے۔ لہٰذا ہر ایک مسلمان کا یہ فرض ہونا چاہیئے کہ اس گورنمنٹ کی سچی اطاعت کرے اور دل سے اس دولت کا شکر گذار اور دعاگو رہے۔اور یہ کتابیں میں نے مختلف زبانوں یعنی اردو۔ فارسی۔ عربی میں تالیف کرکے اسلام کے تمام ملکوں میں پھیلادیں۔ یہاں تک کہ اسلام کے دو مقدس شہروں مکہ اور مدینہ میں بھی بخوبی شائع کردیں۔ اور روم کے پایہ تخت قسطنطنیہ اور بلاد شام اور مصر اور کابل اور افغانستان کے متفرق شہروں میں جہاں تک ممکن تھا اشاعت کردی گئی جس کا نتیجہ ہوا کہ لاکھوں انسانوں نے جہاد کے وہ غلط خیالات چھوڑ دئیے جو نافہم ملاؤں کی تعلیم سے ان کے دلوں میں تھے۔
    (روحانی خزائن جلد 15 صفحہ 114)

    سرکار انگریزی کے سچے خیر خواہ کا بیٹا ہوں جن کا نام مرزا غلام مرتضٰی تھا۔
    (مجموعہ اشتہارات جلد دوم صفحہ 366)

    اور میں بذات خود سترہ برس سے سرکار انگریز کی ایک ایسی خدمت میں مشغول ہوں کہ درحقیقت وہ ایک ایسی خیر خواہی گورنمنٹ عالیہ کی مجھ سے ظہورمیں آئی ہے کہ میرے بزرگوں سے ذیادہ ہے اور وہ یہ کہ میں نے بیسیویں کتابیں عربی اور فارسی اور اردو میں اس غرض سے تالیف کی ہیں کہ اس گورنمنٹ محسنہ سے ہرگزجہاد درست نہیں بلکہ سچے دل سے اطاعت کرنا ہر ایک مسلمان کا فرض ہے
    (مجموعہ اشتہارات جلد دوم صفحہ 366)

    اور جو لوگ میرے ساتھ مریدی کا تعلق رکھتے ہیں وہ ایک ایسی جماعت تیار ہوتی جاتی ہے کہ جن کے دل اس گورنمنٹ کی سچی خیر خواہی سے لبالب ہیں۔
    (مجموعہ اشتہارات جلد دوم صفحہ 367)

    [​IMG]
    [​IMG]
    [​IMG]
    [​IMG]

    لنک

     
Loading...

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں