میت کی طرف سے روزے رکھنا؟؟

محمد اسد حبیب نے 'آپ کے سوال / ہمارے جواب' میں ‏اگست 27, 2011 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. محمد اسد حبیب

    محمد اسد حبیب -: رکن مکتبہ اسلامیہ :-

    شمولیت:
    ‏مئی 3, 2011
    پیغامات:
    410
    السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ
    11-8-21 کو "آزاد" بھائی کی طرف سے مندرجہ بالا عنوان کے تحت ایک مضمون شائع ہوا تھا جس میں شیخ رفیق طاہرحفظہ اللہ نے شیخ مبشر احمد ربانی حفظہ اللہ کا ہفت روزہ جرار 18رمضان المبارک 20 اگست کے حوالہ سے ایک فتویٰ نقل کیا تھا کہ میت کی طرف سے فرضی روزے بھی رکھے جائیں گے۔ یہی فتویٰ ان کا "احکام و مسائل" ، ناشر دارالاندلس جلد1صفحہ 466 پہ موجود ہے۔ لیکن اس کے برعکس ان کا ایک اور فتویٰ "آپ کے مسائل اور ان کا حل" ناشرمکتبہ قدوسیہ جلد دوم صفحہ 265 پر موجود ہےجس میں انھوں نے کہا ہے کی میت کی طرف سے نذر والے روزے رکھے جائیں گے اور فرضی روزوں کے بدلے فدیہ دیا جائے گا۔ ان دو متضاد باتوں کو کلئر کرنے کیلیئے ہمارے اسی فورم کے ایک بھائی جنکا یوزرنیم "اہل حدیث"ہے نے شیخ مبشر احمد ربانی حفظہ اللہ سے رابطہ کیا تو شیخ نے اپنے دوسرے موقف کے مطابق ہی فتویٰ دیا ہے یعنی میت کی طرف سے نذر والے روزے رکھے جائیں گے اور فرضی روزوں کے بدلے فدیہ دیا جائے گا۔ مکتبہ قدوسیہ والے فتوے کے سکین پیجز میں اسی تھریڈمیں لگا رہا ہوں۔ برائے مہربانی اس مسئلہ میں مزید تحقیق فرماکر صحیح موقف سے آگاہ فرمائیں۔ جزاکم اللہ


    [​IMG]
    [​IMG]
    [​IMG]
    [​IMG]
    [​IMG]
    [​IMG]
     
  2. رفیق طاھر

    رفیق طاھر ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏جولائی 20, 2008
    پیغامات:
    7,943
    آپکے پیش کردہ صفحات کی جگہ مینڈک نظر آرہا ہے
    بہر حال
    شیخ مبشر احمد ربانی حفظہ اللہ کا موقف تبدیل ہوگیا ہو , کوئی بعید نہیں ۔
    لیکن مسئلہ وہی ہے
    کہ حدیث " من مات وعلیہ صیام صام عنہ ولیہ " عام ہے
    اور
    نذر والی حدیث مین اسی عام کے ایک فرد کا ذکر ہے
    اور علم اصول میں یہ بات مسلمہ ہے کہ
    عام کے افراد میں سے کسی ایک فرد کا ذکر اسکے عموم کو ختم نہیں کرتا
    تفصیل کے لیے اصول فقہ کی معروف کتاب تسہیل الوصول مترجم اردو ملاحظہ فرمائیں
    نیز
    یہ بحث بھی بغور مطالعہ فرمالیں
    اعتبار الفاظ کے عموم کا کیا جائے گا ، اسباب کے خصوص کا نہیں
     
  3. محمد اسد حبیب

    محمد اسد حبیب -: رکن مکتبہ اسلامیہ :-

    شمولیت:
    ‏مئی 3, 2011
    پیغامات:
    410
  4. رفیق طاھر

    رفیق طاھر ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏جولائی 20, 2008
    پیغامات:
    7,943
    فضیلۃ الشیخ مبشر احمد ربانی صاحب حفظہ اللہ سے آج اسی مسئلہ پر بات ہوئی
    جس کا خلاصہ یہ ہے کہ
    وہ خود مستقل موقف نہیں رکھتے , البتہ انکا میلان فی الحال شیخ البانی و شیخ زبیر علی زئی حفظہ اللہ کے موقف کی طرف ہے ۔
    البتہ
    وہ اس بات کو تسلیم کرتے ہیں کہ نذر والی احادیث صحیح بخاری کی مذکورہ بالا حدیث کو خاص نہیں کرتی ۔
    رہا انکا میلان تو وہ آثار سلف کی بناء پر ہے جنکی دین میں کوئی حیثیت نہیں !
    آڈیو
     
  5. محمد اسد حبیب

    محمد اسد حبیب -: رکن مکتبہ اسلامیہ :-

    شمولیت:
    ‏مئی 3, 2011
    پیغامات:
    410
    بہت شکریہ شیخ۔ جزاک اللہ خیرا۔
     
  6. رفیق طاھر

    رفیق طاھر ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏جولائی 20, 2008
    پیغامات:
    7,943

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں