برائی سے روکنا

عائشہ نے 'مَجلِسُ طُلابِ العِلمِ' میں ‏اکتوبر، 6, 2011 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,485
    بسم الله الرحمن الرحيم
    السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

    ::: مجلسِ گرافک ::: کے ايك تھريڈ ميں مجھ سے ايك سوال كيا گيا تھا ، اور سوال بھی پٹھان کا تھا ليكن تھريڈ بھی پٹھان كا تھا .... اور مذكوره تھريڈ كو ڈی ٹريک كيے بغير جواب بھی ضرورى تھا ... اسى ليے يہ تھريڈ شروع كيا ہے۔
    يہ امر باعث مسرت ہے کہ ہمارے بہن بھائى امر بالمعروف اور نھی عن المنكر كى اہميت اور ضرورت كو سمجھتے ہيں اور اس حكم پر عمل پيرا ہيں ۔ ليكن بعض اوقات ہم اس كى شرائط اور آداب سے صرف نظر كر جاتے ہيں۔
    جب امر بالمعروف اور نھی عن المنكر يعنى نيكى كا حكم دينا اور برائى سے روكنا شرعى فريضہ ہے تو اس كى تعميل بھی شرعى آداب و شرائط كو ملحوظ ركھ كر كى جانى چاہیے۔
    اس سلسلے ميں تفصيل عرض كرنا تو اس عجالت ميں ممكن نہيں ليكن مختصرا اتنا عرض كيا جا سكتا ہے کہ كسى بات كے نيكى يا برائى ہونے كا فيصلہ شريعت كى رو سے كيا جائے گا تب ہی اس كا حكم ديا جائے گا يا اس سے روكا جائے گا ۔ يا دوسرے الفاظ ميں اگر آپ كو شريعت كى رو سے كسى بات كے برائى ہونے كا سو في صد يقين نہيں تو اس كو برائى سمجھ كر اس سے اس وقت تك منع نہ كريں جب تك تصديق نہ ہو جائے ۔ كسى بھی بات كو خود نيكى يا برائى فرض كر كے اس كا حكم دينا يا اس سے روكنا شريعت ميں ايسى بات كا اضافہ كرنا ہے جو اس كا حصہ نہيں تھی۔
    اس بات كو ايك مثال سے واضح كرتے ہيں ۔ آج ہی ماہا جواد سسٹر نے ايك "..... اينكر" كى وڈيو شئير كى ہے جو علماء كرام سے كہہ رہا ہے کہ ميرے نزديك آپ لوگوں كو "مولانا" كہنا شرك ہے۔ اب اس مسكين نے ايك بات كو خود سے شرك سمجھ كر برائى قرار دے ديا ہے ۔ شريعت اس معاملے ميں كيا كہتی ہے؟ اس بات كى تصديق كى اس نے ضرورت ہی محسوس نہيں کی۔ شريعت تو كجا وہ عربى زبان كى رو سے لفظ کے اصل مطلب كى تصديق ہی كر ليتا تو اتنى تعلى كى ضرورت پيش نہ آتى ۔
    بہرحال يہ مذكورہ موضوع ميں ميرى گزارش كا مقصد تھا ، اميد ہے محترم بھائى وضاحت ميں تاخير سے صرف نظر فرمائيں گے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 2
  2. جاسم منیر

    جاسم منیر Web Master

    شمولیت:
    ‏ستمبر 17, 2009
    پیغامات:
    4,638
    جزاک اللہ خیرا سسٹر
    اللہ ہمیں عمل کی توفیق عطا فرمائے۔ آمین۔
     
  3. ساجد تاج

    ساجد تاج -: رکن مکتبہ اسلامیہ :-

    شمولیت:
    ‏نومبر 24, 2008
    پیغامات:
    38,758
    جزاک اللہ خیرا آپی
    اللہ ہمیں عمل کی توفیق عطا فرمائے۔ آمین۔
     
  4. irum

    irum -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏جون 3, 2007
    پیغامات:
    31,582
    وعليكم السلام ورحمة الله وبركاته

    جزاک اللہ خیرا
     
  5. محمد زاہد بن فیض

    محمد زاہد بن فیض نوآموز.

    شمولیت:
    ‏جنوری 2, 2010
    پیغامات:
    3,702
    جزاک اللہ خیرا باجی
    اللہ تعالیٰ ہمیں ان باتوں کو سمجھنے اور ان پر عمل کرنے کی توفیق عطا فرمائے۔آمین
     
  6. ابوعکاشہ

    ابوعکاشہ منتظم

    شمولیت:
    ‏اگست 2, 2007
    پیغامات:
    15,440
    وعلیکم السلام ورحمتہ اللہ وبرکاتہ ۔
    جزاکم اللہ خیرا وبارک فیکم ۔ گویا کہ نہی عن المنکر کے لیے علم کا ہونا ضروری ہے ۔ بغیر علم کے نہی عن المنکر بھی نہیں ۔
     
  7. بنت واحد

    بنت واحد محسن

    شمولیت:
    ‏نومبر 25, 2008
    پیغامات:
    11,962
    جزاک اللہ
     
  8. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,485
    واياكم ، جى درست فرمايا بھائى ، اور اگر كسى كو علم نہ ہو تو اہل علم سے تصديق كر لے پھر بات كرے۔

    ايك اور رويہ بھی بعض اوقات سامنے آتا ہے۔ برائى سے روكنے كا بہانا بنا كر ذاتى انتقام لينا ۔ ايك زمانے ميں اردو مجلس پر خواتين اركان كى موجودگی كو لے كر فتنہ فتنہ كى يوں گردان كى گئی گويا وجودِ زن بذات خود فتنہ ہے اور باقى دنيا ميں کہيں وجودِ زن ہے ہی نہيں ۔ اور اب حالت يہ ہے کہ فتنہ كا شور مچانے والے اور والى محترمہ خود دوسرے فورمز پر نہ صرف موجود ہيں بلكہ فلمی گانے شئير كرتے پائے جاتے ہيں ۔ مقام حيرت ہے ۔ ايسی صورت ميں يہی كہا جا سكتا ہے کہ بعض نفوس مريضہ نہی عن المنكر كے پردے ميں انتقامى حس كى تسكين كا كام كرتے ہيں ۔ الله تعالى ہمارى نيتوں كو اخلاص بخشے۔ دينى اصطلاحات كا يہ كيا ہی برا استعمال ہے۔
     
Loading...

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں