من افادات ابن القیم رحمہ اللہ

ابوعکاشہ نے 'امام ابن قيم الجوزيۃ' میں ‏اکتوبر، 25, 2011 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. ابوعکاشہ

    ابوعکاشہ منتظم

    شمولیت:
    ‏اگست 2, 2007
    پیغامات:
    14,133
    ابن القیم رحمہ اللہ فرماتے ہیں
    "ليس شيء أنفع للعبد في معاشه ومعاده وأقرب إلى نجاته: من تدبر القرآن "
    تدبر قرآن سے زیادہ بندے کے معاش اور معاد کے لیے نافع اور اس کی نجات کے قریب تر کچھ نہیں.
    ( مدارج السالکین : 450/1)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 2
  2. عبد الرحمن یحیی

    عبد الرحمن یحیی -: رکن مکتبہ اسلامیہ :-

    شمولیت:
    ‏نومبر 25, 2011
    پیغامات:
    2,313
    إبنُ القَيِّم رَحمَهُ اللّٰہ کہتے ہیں -:
    « والنَظرَةُ تَفعَلُ فِي القَلبِ مَا يَفعَلُ
    السهَمُ فِي الرَّمِيَة، فَإن لَم
    تَقتُله جَرحَته ».

    { نظر کی آوارگی دل کے ساتھ وہی معاملہ کرتی ہے جو کمان سے نکلا ہوا تیر کرتا ہے ، یہ دل کو مردہ نہ بھی کرے تو گھائل ضرور کر دیتی ہے ۔ }
    [ رَوضَةُ المُحبِين || صـ ٩٧ ].
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 2
  3. عبد الرحمن یحیی

    عبد الرحمن یحیی -: رکن مکتبہ اسلامیہ :-

    شمولیت:
    ‏نومبر 25, 2011
    پیغامات:
    2,313
    ارکان شکر
    « شُكر العبد يدور على ثلاثة أركان، لا يكون شاكرًا إلا بمجموعها:
    بندے کا شکر تین ارکان کے گرد گھومتا ہے ، ان تینوں پر عمل کر کے ہی کوئی شاکر بن سکتا ہے

    أحدها: اعترافه بنعمة الله عليه
    1 ۔ اپنے آپ پر اللہ تعالی کی نعمتوں کا اعتراف

    الثاني: الثناء عليه بها
    2 ۔ اِس پر اُس کی تعریف کی جائے

    الثالث: الاستعانة بها على مرضاته ».
    3 ۔ ان نعمتوں کی مدد سے اس کی رضامندی تلاش کی جائے

    - ابن القيم رحمه الله -
    [ عدة الصابرين || صـ ٤٧٩ ]
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  4. عبد الرحمن یحیی

    عبد الرحمن یحیی -: رکن مکتبہ اسلامیہ :-

    شمولیت:
    ‏نومبر 25, 2011
    پیغامات:
    2,313
    ‏امام ابن القيم رحمه الله لکھتے ہیں :
    اگر صدقہ دینے والے کو علم ہو جائے کہ اُس کا صدقہ فقیر کے ہاتھ میں پہنچنے سے پہلے اللہ تعالٰی کے ہاتھ میں پہنچ جاتا ہے
    تو لینے والے سے زیادہ دینے والے کو لذت محسوس ہو ۔


    لو علم المتصدق أن صدقته تقع في يد الله
    قبل يد الفقير لكانت لذة المعطي أكثر من لذة الآخذ
    مدارج السالكين 1/26
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 2
    • ظریفانہ ظریفانہ x 1
  5. سیما آفتاب

    سیما آفتاب ناظمہ

    رکن انتظامیہ

    شمولیت:
    ‏اپریل 3, 2017
    پیغامات:
    398
    جزاک اللہ خیرا
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  6. عبد الرحمن یحیی

    عبد الرحمن یحیی -: رکن مکتبہ اسلامیہ :-

    شمولیت:
    ‏نومبر 25, 2011
    پیغامات:
    2,313
    ﴿ وَلَقَدْ يَسَّرْنَا الْقُرْآنَ لِلذِّكْرِ فَهَلْ مِن مُّدَّكِرٍ ﴾
    اور بیشک ہم نے قرآن کو سمجھنے کے لیے آسان کر دیا ہے۔ پس کیا کوئی نصیحت حاصل کرنے والاہے؟ (17) سورة القمر

    ابن القيم - رحمه الله کہتے ہیں -:

    قرآن کریم کا سمجھنے کے لیے آسان ہونا کئی طرح سے آسان ہونا ہے
    1 : اس کے الفاظ حفظ کے لیے آسان ہیں
    2 : اس کے معانی فھم کے لحاظ سے آسان ہیں
    3 : اس کے اوامر اور نواھی اطاعت اور عمل کے لیے آسان ہیں

    «وتيسيره للذكر، يتضمن أنواعا من التيسير؛
    إحداها: تيسير ألفاظه للحفظ؛
    الثاني: تيسير معانيه للفهم؛
    الثالث: تيسير أوامره ونواهيه للإمتثال»

    [«الصواعق المرسلة»(١ / ٣٣٢)]
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 2
  7. عبد الرحمن یحیی

    عبد الرحمن یحیی -: رکن مکتبہ اسلامیہ :-

    شمولیت:
    ‏نومبر 25, 2011
    پیغامات:
    2,313
    حافظ ابن القيم رحمه الله کہتے ہیں :

    اور خُوشبو کی ایک خاصیت یہ بھی ہے کہ فرشتے اسے پسند کرتے ہیں اور شیاطین اس سے دور بھاگتے ہیں اور شیاطین کو متعفن اور بدبودار چیزیں پسند ہیں
    پاکیزہ روحیں خوشبو کو پسند کرتی ہیں اور خبیث روحیں بدبو کو پسند کرتی ہیں
    اور روح اُسی چیز کی طرف مائل ہوتی ہے جو اُسے اچھی لگتی ہے ۔

    ( وفي الطِّيب من الخاصيَّة أن الملائكة تحبّه والشياطين تنفر عنه .
    وأحب شيء إلى الشياطين الرائحة المُنتنة الكريهة ، فالأرواح الطيّبة تحب الرائحة الطيّبة ، والأرواح الخبيثة تحب الرائحة الخبيثة ، وكل روح تميل إلى ما يناسبها ) .
    المصدر/ الطب النبوي: ٢٢٠
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
Loading...

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں