کون سا نظام بہتر : سمسٹر سسٹم یا سالانہ ؟

عائشہ نے 'مَجلِسُ طُلابِ العِلمِ' میں ‏جنوری 15, 2012 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,482
    آپ کے خيال ميں کون سا نظام بہتر ہے : سمسٹر سسٹم یا سالانہ ؟

    سب اپنى رائے ديں اور سبب بھی بتائيں ۔
     
  2. اہل الحدیث

    اہل الحدیث -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏مارچ 24, 2009
    پیغامات:
    4,974
    اسی حوالے سے جلد ہی اپنے ایک دوست کا مضمون شئیر کرتا ہوں ان شاء اللہ۔ جس میں اس چیز کا تفصیلی جائزہ لیا گیا ہے۔
     
  3. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,482
    ادھار نہيں نقد
     
  4. اعجاز علی شاہ

    اعجاز علی شاہ -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏اگست 10, 2007
    پیغامات:
    10,324
    میرے خیال میں تو سمسٹر سسٹم زیادہ بہتر ہے اس کی سب سے بڑی وجہ یہ ہے کہ اگر آپ کا سمسٹر ضائع ہوجائے تو پھر دوسرا سمسٹر جلد شروع ہوجاتا جس سے وقت بچ جاتا ہے لیکن سالانہ سسٹم میں پورا سال ضائع ہوجاتا ہے۔
    اس کے علاوہ پڑھائی کا بوجھ بھی متوازن رہتا ہے مطلب ہر سمسٹر آپ کو کچھ کورس کو اختیارکرناپڑتا ہے جبکہ سالانہ سسٹم میں پڑھائی کا شدید بوجھ رہتا ہے ۔
    خیر یہ میرا تجربہ ہے جوکہ غلط بھی ہوسکتا ہے
     
  5. ابوعکاشہ

    ابوعکاشہ منتظم

    شمولیت:
    ‏اگست 2, 2007
    پیغامات:
    14,373
    سمسٹرسسٹم ۔ کم وقت ہونے کی وجہ سے طالب علم محنت کرتا ہے ۔ سالانہ سسٹم میں سست رہتا ہے کہ ابھی تو وقت ہے کرلیں‌ گئے تیاری ، جلدی کیا ہے ۔
     
  6. ابن حسیم

    ابن حسیم ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏اکتوبر، 1, 2010
    پیغامات:
    891
    ہمارا تجربہ بھی کچھ ایسا ہی ہے۔ جو پڑھائ سالانہ سسٹم میں گزری اسکا رزلٹ۔۔۔۔۔ اوہ سوری پوشیدہ باتیں شئیر نہیں کرتے۔۔ :00039:
    اور بی سی ایس، ایم سی ایس، ایم فل میں ٹاپو ٹاپ فرسٹ ڈی۔۔۔۔ سمسٹر سسٹم جو تھا۔ فائینل رزلٹ میں اسائینمٹس، کوئیزز، ڈسکشنز، ٹرم پیپرز، حتی کہ ماسٹر صاحب کی چارپلوسی تک ہر چیز اپنا وزن آپ رکھتی ہے۔ بلکہ یہ آخری چیز تو ایسی فٹ ہے کہ چھڈو ساریاں گلاں۔۔۔۔ مگریہ ہے اتنی بھاری کہ مجھ سے آجتک نہیں اٹھائ جا سکی۔۔۔۔ :00010:
     
  7. جاسم منیر

    جاسم منیر Web Master

    شمولیت:
    ‏ستمبر 17, 2009
    پیغامات:
    4,638
    سمسٹر سسٹم ہی بہتر ہے۔ اگرچہ یونیورسٹی میں اس سسٹم سے شدید نفرت تھی :00005: ۔۔۔ لیکن جب ایک دو بار فیل ہوئے تو پھر اس سسٹم کی افادیت کا احساس ہوا :00039:
    ویسے اگر سکولوں میں بھی سمسٹر سسٹم ہو تو ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ :00005:
     
  8. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,482
    سكولز ميں آنا ابھی دور كى بات ہے ابھی تو يونيورسٹيز ميں بھی اس كو فلى اڈاپٹ نہيں كيا جا سكا ۔ سمسٹر سسٹم كى اچھی خوبى تحقيق ہے ليكن ہمارے يہاں ابھی تك گريجويٹس اس سے اس طرح واقف نہيں جيسا ہونا چاہیے۔ ماسٹرو ليول پر حالت بہتر ہے۔
    يہ تو افراد پر منحصر ہے الحمدللہ نہ ہم چاپلوس طالبعلم تھے نہ ہمارے اساتذہ كرام خوشامدی طلبہ كى دال گلنے ديتے تھے ۔ ايسے چند لوگ ہر جگہ ہوسكتے ہيں جوشايد وقتى فائدہ حاصل كر ليہں ليكن ان كى عزت نہيں ہوتى اور قابليت كى كمى بھی ہميشہ رہتى ہے ۔
     
  9. ابن قاسم

    ابن قاسم محسن

    شمولیت:
    ‏اگست 8, 2011
    پیغامات:
    1,719
    یہاں کی ریاست میں تو اسکولز میں بھی یہی سسٹم ہے۔
    ‏ششماہی امتحان سسٹم میں وقت محدود ہوتا ہےابھی امتحان دیے کە نتیجە ظاہر اور دوبارە پڑھائ شروع، سالانە امتحان طویل رھتا ہے اگر پڑھائ آخرع عشرے میں بھی شروع کریں تو حرج نھیں۔
    اگر اچھے نمبرات سے کامیاب ہونا ہو تو مستقل پڑھائ کرنی چاہیے چھاہے کوئی بھی سسٹم ہو۔
     
  10. dani

    dani نوآموز.

    شمولیت:
    ‏اکتوبر، 16, 2009
    پیغامات:
    4,333
    :00001:
     

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں