انٹر نیٹ نے مجھے کیسے برباد کیا۔ سعودی لڑکی کی داستان

منہج سلف نے 'حالاتِ حاضرہ' میں ‏فروری 14, 2012 کو نیا موضوع شروع کیا

موضوع کی کیفیت:
مزید جوابات کے لیے کھلا نہیں۔
  1. منہج سلف

    منہج سلف --- V . I . P ---

    شمولیت:
    ‏اگست 9, 2007
    پیغامات:
    5,050


    السلام علیکم!
    میری ہر بہن و بھائی سے درخواست ہے کہ اس سبق آموز داستان کو ضرور پڑھے کہ یہ داستان ایک بدقسمت لڑکی کی ہے مکر لڑکے بھی اس سے سبق حاصل کرسکتے ہیں کہ مرد بھی اس شیطانیت سے محفوظ نہیں ہیں۔
    اللہ ہمیں انٹرنیٹ کے فتنے سے محفوظ رکھے۔ آمین
    والسلام علیکم
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 3
  2. اعجاز علی شاہ

    اعجاز علی شاہ -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏اگست 10, 2007
    پیغامات:
    10,324
    وعلیکم السلام ورحمۃ اللہ وبرکاتہ
    بے شک!!
    میں ایک ایسے شخص کو ذاتی طور پر جانتا ہوں یہاں‌سعودی عرب میں جو عمر میں بھی زیادہ ہے ، اس کی بیوی کا انتقال ہوا اس نے نیٹ پر کوئی پاکستانی عورت ڈھونڈ کر(رشتہ والی ویب سائٹس سے غالبا) شادی کی۔ بعد میں اس کی بیوی چور نکلی اور ہمیشہ پیسے کا مطالبہ کرتی اور ہمیشہ وہ پیسے کے خزانے کی چابی پر نظر رکھتی بقول اس کے۔ پھر کیا ہوا جس طرح نیٹ پر آسانی سے مل کر شادی ہوئی اسی طرح آسانی سے طلاق بھی دی!!
    موجودہ دور میں فیس بک نہ صرف مسلمان ماؤں بہنوں کیلئے شیطان کا جال بن چکا ہے بلکہ اس کی وجہ سے غیر مسلم لڑکیوں کی زندگیاں بھی برباد ہوچکی ہیں!
    فیس بک پر کسی بھی شخص بالخصوص عورت کی معلومات حاصل کی جاسکتی ہیں جیسے:
    دوست اور فیملی ممبرز کے بارے میں معلومات
    دلچسپیاں اور پسندیدہ مشغلہ
    لکھائی کا طرز
    اس کے علاوہ بہت سی چیزیں ہیں جن کو ہم نہیں جانتے۔
    اس لیے ہمیشہ احتیاط سے کام لینا چاہیے اور نیٹ کی دنیا میں کبھی بھی ذاتی معلومات کسی کو نہیں دینی چاہیے ، آج وہ پکا دوست ہے تو کل وہ پکا دشمن بن کر بلیک میلنگ اور دھمکیوں پر اتر آئےگا۔
     
  3. ابن قاسم

    ابن قاسم محسن

    شمولیت:
    ‏اگست 8, 2011
    پیغامات:
    1,719
    صرف مرد حضرا ت ظالم نہیں ہوتے اور خواتین محفوظ عن الخطا نہیں ہوتیں۔۔
    ایک صاحب کو فیس بک پر لڑکی نے اپنی محبت کا شکار بنایا۔ ابھی مستقبل کے خوابوں خیالوں میں تھے کہ لڑکی فراؤڈ کرکے چلے گئی۔۔
    اب بے چارہ شرم سے نہ پولیس میں کمپلین کرسکتا ہے نہ کسی کو اپنی آپ بیتی سنا سکتا ہے۔ ۔
     
  4. ابومصعب

    ابومصعب -: منفرد :-

    شمولیت:
    ‏اپریل 11, 2009
    پیغامات:
    4,067

    السلام علیکم

    تحریر میں‌جس چیز کا عکس ہے، وہ آج کل نیٹ اور موبائل کے بے جا استعمال کرنے والے ہرذہن سے یہ چیز متوقع ہے کہ شیطان کے حربے ہوتے ہیں‌کہ انسان کو حرام کاری میں‌مبتلا کرے۔

    یہ تحریر عبرتنا ک ہے، اور ایسی بہت سی عبرتیں‌وقوق پذیر ہورہی ہیں‌جس کی وجہ سے سوسائیتی کھوکھلی ہوتی جارہی ہے، (مسلم سوسائیٹی)، غیر مسلم سوسائیٹی کو تو ذکر ہی فضول ہے، اور مسلم سوسائیٹی میں‌بھی یہ بات کنڈیشنل ہے، بہرحال جہاں‌جہاں الکٹرانک میڈیا فضول استعمال ہورہا ہے، وہاں‌شیطان کے کارندے لگے ہیں‌کہ خوشحال زندگیوں‌کو غلیظ لذتوں‌کی خواہش کے تلے دبا کر، اچھے خاص دلکش اور خوبصورت گھر، افراد اس لعنت میں‌مبتلا ہوجاتے ہیں۔

    میں‌ یہاں‌پر دو ایسی چھوٹی مثالیں‌پیش کرونگا جو کہ ایسے ہیں‌کہانیوں‌جیسی کچھ مثال ہے، تھوڑے سے فرق کے ساتھ۔۔۔

    ایک کپل جو کہ دونوں‌طرف بہترین مذہبی گھرانے رکھتا ہے، میں‌شادی کے 5 سال بعد خلع/طلاق کی نوبت آئی پتہ چلا کہ لڑکی کی طرف سے مسئلہ ہے، اسکو شوہر میں وہ ماڈل نظر نہیں‌آیا جو کہ آج کل "سوکالڈ" ماڈلز بنے ہیں‌۔ (تشریح‌کی ضرورت نہیں‌ہونی چاہئے)

    دوسری مثال جہاں‌ بیوی کے ایس ۔ایم ۔ ایس پکڑے گئے جہاں اسکے اپنے کزنز کے ساتھ ، ولگر انداز کے ایسے مسجس جو کہ ۔۔۔فائنلی پھر سپریشن تک بات لے گئی۔

    بہرحال یہ ایک طر ف کی مثالیں‌ہیں، جہاں‌پاک دامن شریف النفس لڑکیاں‌بیاہی گئی ہیں وہاں‌ان کا واسطہ بھی شریف اور دیندار گھرانے سے ہی ہوا، لیکن پھر چاٹنگ، کولیگز، فونز، سوشل نٹورکس وغیرہ نے بہت سی بری مثالیں‌قائم کی ہیں۔

    خوف خدا کے ساتھ یہ تمام مسائل کا حل ہے، لیکن ساتھ ہی ساتھ، وہ ٹولز جو کہ ڈائرکٹلی شیطان کے لئے حربے کے طور پر استعمال ہوتے ہوں‌احتیاط بہتر ہے۔

    بہرحال زمانہ جس ڈائرکش میں رواں‌دواں‌ہے، وہاں‌ عریانیت، اور بے حیائی کی چنگاری، محفوظ سے محفوظ اخلاقی قلعوں‌کو بھی لپیٹ میں‌لینے کے درپے ہیں، اسلئے ہمیں‌ضروری ہے کہ ، اپنے گھر کے باہر کی غلاظتوں سے بھی اویر رہیں‌تاکہ اسکی اسمیل اخلاقی طور پر مزین گھروں‌کو بھی اپنے سے ایفکٹ نہ کردے۔۔

    اللہ ہم سب کی شیطان مردود کے ہر کارندے سے حفاظت فرمائے۔۔آمین ثم آمین
     
  5. نعیم یونس

    نعیم یونس -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏نومبر 24, 2011
    پیغامات:
    7,923
    جزاکم اللہ خیرا.
     
  6. ابن قاسم

    ابن قاسم محسن

    شمولیت:
    ‏اگست 8, 2011
    پیغامات:
    1,719
    کم از کم پانچ سال بعد تو اسے اپنی چوائس کا علم ہوا۔۔ اور 10 سال بعد ہوتا تو شاید ماڈل بھی ضعیف ہوجاتا۔۔ :smile:
     
  7. ابومصعب

    ابومصعب -: منفرد :-

    شمولیت:
    ‏اپریل 11, 2009
    پیغامات:
    4,067
    بہرحال ساری مثالوں‌اور مضمون کا اصل مقصد یہی ہے کہ، اسلامی خطوط پر زندگی گذارتے ہوئے، شیطان کے ہر حربے کو ناکام کرنا ہے، اور اسکے قریب بھی نہیں‌جانا ہے، اور اللہ سے مستقلا اسکی رحمت اور شیطان سے پناہ طلب کرتے رہنا ہے۔تب ہم خود کو دنیا کی آزمائشی مدت میں‌ سرخرو ہو سکتے ہیں اور روز آخرت ہمارے چہرے سیاہ ہونے سے محفوظ رہ سکتے ہیں۔ ان شااللہ
     
  8. ایک دم ریڈی

    ایک دم ریڈی -: معاون :-

    شمولیت:
    ‏فروری 14, 2012
    پیغامات:
    4
    بڑی ڈراؤنی کہانی ہے یار۔ اس لیے اسلام کہتا ہے کہ ہر چیز اعتدال پسندی سے کرنی چاہیے۔ اعتدال سے انٹرنٹ استعمال کرنا، اعتدال سے کھانا، اعتدال سے سونا، اعتدال سے خرچنا، وغیرہ۔۔۔
     
  9. محمد آصف مغل

    محمد آصف مغل -: منتظر :-

    شمولیت:
    ‏نومبر 18, 2011
    پیغامات:
    3,848
    اللہ تعالیٰ ہم سب پر رحمت فرما دے۔ آمین۔ اور شیطان اور اس کے تمام جالوں اور جیالوں سے محفوظ فرما لے۔ آمین۔
     
Loading...
موضوع کی کیفیت:
مزید جوابات کے لیے کھلا نہیں۔

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں