اُردو نیوز 12 مارچ 2012ء ڈاکٹر ذاکر نائیک کا خطاب

دارالسلام نے 'اسلامی ذرائع ابلاغ' میں ‏مارچ 29, 2012 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. دارالسلام

    دارالسلام دارالسلام پاکستان

    شمولیت:
    ‏فروری 3, 2012
    پیغامات:
    10
    اُردو نیوز 12 مارچ 2012ء
    مسلم دنیا اسلام کے بارے میں غلط تصورات کا سدباب کرے: ذاکر نائیک
    دارالسلام عالم اسلام کا بڑا اشاعتی ادارہ ہے، انگریزی میں اس کی مطبوعات کو حوالے کے طور پر پیش کیا جا سکتا ہے۔
    ریاض (جاوید اقبال) دین اسلام کو آج سب سے زیادہ نقصان بین الاقوامی ذرائع ابلاغ پہنچا رہے ہیں۔ اس لیے اسلامی دنیا کا فرض ہے کہ اسلام کے بارے میں پھیلائے جانے والے غلط تصورات کی تصحیح کے لیے اپنے میڈیا کی پسماندگی دور کرنے پر توجہ دیں۔ ان خیالات کا اظہار معروف دینی اسکالر اور مبلغ ڈاکٹر ذاکر نائیک نے مکتبہ دارالسلام کے جنرل منیجر عبدالمالک مجاہد کی طرف سے اپنے اعزاز میں ایک فائیو سٹارہوٹل میں دیئے گئے عشائیہ میں کیا۔ اس موقع پر ملائیشیا اور مالدیپ کے سفراء، پاکستانی سفارتخانے کے ڈپٹی ہیڈ آف مشن خیام اکبر، ملٹری اتاشی بریگیڈیئر حسن جلیل شاہ، قونصلر زاہد رضا، کمیونٹی ویلفیئر اتاشی کیپٹن (ر) سید حماد عابد، معروف سعودی دانشور ڈاکٹر یوسف الحزیم اور پاکستانی عمائدین شہر کی ایک بڑی تعدادموجود تھی۔ ذاکر نائیک نے واضح کیا کہ پرنٹ، آڈیو، ویڈیواور آئی ٹی کی چار اقسام ان دنوں انسانی ذہن کو متاثر کر رہی ہیں۔ خواندہ مواد کا صرف 10 فیصد جبکہ شنیدہ کا 20 فیصد رہتا ہے۔ ٹی وی پر دیکھا منظر بعد میں 30 فیصد یاداشت میں محفوظ رہتا ہے اور اگر کسی منظر کی آواز اور نظارے دونوں سے مستفید ہوا جائے تو 50 فیصد یاداشت پر باقی رہتا ہے۔ تاہم رسائل اور جرائد اب بھی اپنی اہمیت قائم رکھے ہوئے ہیں اور مغرب اس میدان میں عالم اسلام کو بہت پیچھے چھوڑ گیا ہے۔ ذاکر نائیک نے کہا کہ ہندوستان میں سب سے بڑا اسلامی مجلہ ہر ماہ 15 ہزار سے بھی کم تعداد میں شائع ہوتا ہے جبکہ امریکہ میں ایک غیر معروف عیسائی فرقے کے 2 مذہبی رسالے 83 زبانوں میں 10 کروڑ سے زیادہ کی تعداد میں اشاعت پذیر ہوتے ہیں۔ اب عیسائی مشنری گمراہ کن لٹریچر شائع کر کے مسلمانوں میں بھی تقسیم کر رہے ہیں۔ ڈاکٹر ذاکر نائیک نے مکتبہ دارالسلام کو عالم اسلام کے بڑے ناشرین میں شمار کرتے ہوئے اس کے معیار طباعت کو مثالی قرار دیا اور اس بات پر اطمینان کا اظہار کیا کہ دارالسلام نے 30 سے زائد زبانوں میں اپنے دینی مواد اور 23 زبانوں میں قرآن مجید کی اشاعت کا اہتمام کیا ہے۔انہوں نے عبدالمالک مجاہد کی مساعی کو سراہتے ہوئے واضح کیا کہ دارالسلام کا انگریزی زبان میں مواد حوالے کے طور پر پیش کیا جا سکتا ہے۔ انہوں نے دارالسلام کی نئی کھلنے والی شاخ کے لیے نیک خواہشات کا اظہار کرتے ہوئے اس کی کامیابی کے لیے دعا کی۔ اجتماع سے ڈاکٹر یوسف عثمان الحزیم، ڈاکٹر کاشف خواجہ، ڈاکٹر منصور میمن، عبدالمالک مجاہد اور شمشاد علی صدیقی نے بھی خطاب کیا اور مکتبہ دارالسلام کی تاریخ اور عبدالمالک مجاہد کی مساعی پر روشنی ڈالی۔ عبدالغفار مجاہد کی تلاوت قرآن حکیم سے تقریب کا آغاز ہوا۔ نظامت عکاشہ مجاہد نے کی۔

    [​IMG]
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  2. محمد آصف مغل

    محمد آصف مغل -: منتظر :-

    شمولیت:
    ‏نومبر 18, 2011
    پیغامات:
    3,848
    قرآن و سنت پر عمل سے ہی غلط تصورات کا خاتمہ ہو گا۔ اللہ مجھے اور آپ سب کو بھی عمل کی توفیق عطا فرمائے۔ آمین۔
     
  3. حرب

    حرب -: مشاق :-

    شمولیت:
    ‏جولائی 14, 2009
    پیغامات:
    1,082
    درست فرمایا۔۔۔ لیکن میں اپنے تجربے کی بنیاد پر ایک رائے پیش کرنا چاہتا ہوں۔۔۔ لیکن اس سے اتفاق کرنا یا نہ کرنا وہ پڑھنے والے منحصر کرتا ہے۔۔۔ حق اور باطل نظریات میں فتح کس کی ہوتی ہے یہ ہم سب جانتے ہیں۔۔۔ لیکن بات وہی ہے کے میں سامنے والے کو چاہوں کے وہ پورا پورا اسلام میں داخل ہوجائے مگر اُسے اسلام میں داخل کروانے والا طریقہ جو میں نے اپنایا ہوا ہے وہ ہی سرے سے غلط ہو تو کیا ان حالات میں کسی بھی شخص کو قرآن وسنت پر عمل کرنے کے قائل بنایا جاسکتا ہے۔۔۔
     
  4. محمد آصف مغل

    محمد آصف مغل -: منتظر :-

    شمولیت:
    ‏نومبر 18, 2011
    پیغامات:
    3,848
    فذکر انما انت مذکر۔ لست علیہم بمصیطر
    اور نصیحت تو اُنہی کو کی جا سکتی ہے جو اللہ سے ڈرتے ہوں، حق کے طالب ہوں۔ زبان کی شیرینی، عمل کی خوشبو، کردار کی مضبوطی اور اخلاص پر مبنی دعوت داعی برحق کا خاصہ ہے۔ اے اللہ ہمیں بھی ایسا ہی داعی بنا دے۔ آمین۔
     

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں