پیرادانیا ۔۔۔ سری لنکا (Peradeniya)

عائشہ نے 'نثری ادب' میں ‏جولائی 9, 2012 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,482
    مسافر نے زندگی كى سب سے معطر سانسيں لنكا كى ايك پہاڑی پر لى ہيں ۔ جزيرے کے وسط ميں آدم چوٹی کے سائے تلے ايك پہاڑی مقام پیرادانیا ہے جہاں ايك نباتاتی ذخیرہ ہے ۔ سو سال پہلے كسى خوش مذاق نے بل كھاتے دريا كے كنارے تنگ وادى كا يہ لہريا قطعہ ہرے بھرے ذخيرے كے ليے منتخب كيا تھا ۔ اس ذخيرے كو ديكھنے كے ليے علم اور حسن كے رسيا بڑی دور دور سے آتے ہيں ۔
    اپنى اپنى بساط كے مطابق كسى كو اس ذخيرہ سے خبر ملتى ہے اور كسى كو آگہی ۔ اس ذخيرہ ميں ايك قطعہ ہے اس كى طرف رخ كريں تو خوشبو استقبال كے ليے بہت آگے تك آ جاتى ہے اوور وہاں سے رخصت ہوں تو دور تك تعاقب كرتى ہے ۔ اس قطعہ ميں ہر شجر سايہ دار ہو يا نہ ہو خوشبودار ضرور ہے حتى كہ جھاڑياں اور پودے بھی ختن کے ہرنوں كى ڈار كى طرح پرے باندھے ہوئے ہيں ۔ خوشبو اس قطعہ كو چاروں طرف سے گھيرے ہوئے ہے اور جگہ جگہ سے پھوٹ رہی ہے ۔ پھولوں سے بھرے ہوئے باغ ميں خوش رنگی بہت ہوتى ہے اور خوشبو كم كم ۔ اس قطعہ ميں پھول كم تھے اور خوشبو بہت زيادہ۔ گائيڈ نے كہا : خوشبو اس درخت كے پھل ميں ہے اور اس كے بيج ميں ، اس كے پتوں ميں ہے اور اس كى كليوں ميں ۔ اس كے چھلکے ميں ہے اور اس كى چھال ميں ۔
    پھر ايك درخت کے پاس جا كر چاقو سے زمين كريدى اور ننگی جڑ ميں اس کھبو ديا ۔ گائيڈ کے پیچھے پرا باندھ كر چلنے والے سياحوں نے حيران اور يك زبان ہو كر كہا : اور خوشبو اس درخت كى جڑ ميں ہے ۔ مسافر نے بڑھ كر اس جڑ كا ننھا سا ٹکڑا ہاتھ سے توڑنا چاہا مگر ناكام رہا ۔ اس كے ہاتھوں ميں جڑ سے لپٹی ہوئى مٹی لگ گئى جسے اس نے رومال سے پونچھ ليا ۔ رومال ہوٹل كى سٹيم لانڈرى سے واپس آيا تو يوں لگا جيسے كسى نے ابھی ابھی نہا كر كوئى شوخ اور پيچھے پڑ جانے والى خوشبو لگائى ہو۔
    گائيڈ اپنے فرائض كى ادائيگی کے انہماك ميں يہ بھول گيا كہ کچھ واجبات مسافروں کے بھی ہوتے ہيں ۔ سطح پر رہنے والے يہ بھول جاتے ہيں كہ بعض مقامات ڈوبنے كے ليے بھی ہوتے ہيں ۔ لوگ خاموشى اور تنہائى كى تلاش ميں تھے مگر گائيڈ ان كو جمع كر كے اپنا ازبر سبق بآواز بلند فرفر سنانے پر مصر تھا ۔ وہ علم ميں اضافہ كرنا چاہتا تھا مگر ايسا علم جو غير ضرورى تفصيل ہو اور لطف كو كركرا كردے آخر كس كام كا ۔ اس قطعہ ميں ادق نباتاتى اصطلاحيں دہرانا يہاں تك كہ پودوں کے عام فہم نام بتانا بھی اسى قسم كى بے مزہ محنت تھی ۔ یہ لکڑی عود ہے وہ گوند لوبان ۔ یہ پھل فلفل ہے اور وہ بیج جائفل ۔ یہ پتہ ساج ہے اور وہ تیج پات ۔ یہ کلی الائچی ہے اور وہ پوتھی لونگ ۔ یہ چھال دارچینی ہے اور وہ جڑ ملہٹی ۔ یہ دھنیا ہے اور وہ بادیاں ۔ یہ زیرہ ہے وہ الائچی ۔ بہت سى خوشبوئيں اس قبيل سے تعلق ركھتى تھيں جنہيں عرف عام ميں گرم مصالحہ كہتے ہيں ۔ ان كے نام سن كر افسوس ہوا كہ دوزخِ شكم كے ايندھن اور رسوئی كى چتا ميں كيسى كيسى خوشبو جلنے كے كام آ رہی ہے۔

    ۔۔ جارى ۔


    اقتباس از سفر نصیب : مختار مسعود
    طباعت : ام نور العين

    [​IMG]
    اقتباس ميں مذكور مقامات خريطہ ء عالم پر :
    آدم چوٹی Adam's Peak (mountain, Sri Lanka) -- Britannica Online Encyclopedia
    (http://en.wikipedia.org/wiki/Sri_Pada_%28Sri_Lanka%29)
    پیرادانیا ( Peradeniya - Wikipedia, the free encyclopedia)
    http://en.wikipedia.org/wiki/Botanical_Garden_of_Peradeniya
    http://www.botanicgardens.gov.lk/peradeniya/

     
    • اعلی اعلی x 3
    • پسندیدہ پسندیدہ x 2
  2. irum

    irum -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏جون 3, 2007
    پیغامات:
    31,582
    سبحان اللہ
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 2
  3. ابن عمر

    ابن عمر رحمہ اللہ بانی اردو مجلس فورم

    شمولیت:
    ‏نومبر 16, 2006
    پیغامات:
    13,365
  4. Ishauq

    Ishauq -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏فروری 2, 2012
    پیغامات:
    9,614
    زبر دست
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 2
  5. ساجد تاج

    ساجد تاج -: رکن مکتبہ اسلامیہ :-

    شمولیت:
    ‏نومبر 24, 2008
    پیغامات:
    38,758
    جزاک اللہ خیرا
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  6. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,482
    واياك ، ان شاء اللہ۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  7. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,482
    ۔۔مسافر کو گائیڈ سے جو خطرہ تھا سو پورا ہوا۔ گائیڈ کہہ رہا تھا، نیا آدمی فطرت سے دور ہوتا جا رہا ہے اس کی تما خوشیاں اس کی خوشبوؤں کی طرح مصنوعی ہیں۔ اب اس میں اتنی ہمت کہاں کہ جنگل میں گھوڑے کی زین میں کسا بندھا ہرنوں کی ڈار کا سرپٹ پیچھا کرے تا کہ لہو کی وہ ایک بوند حاصل ہو جسے مشکِ ازفر کہتے ہیں۔ اس میں تو اب اتنا صبر بھی نہیں رہا کہ ایک ایکڑ کاشتہ رقبہ گلاب پر پہنچے اور سال بھر جو ایک ٹن پنکھڑیوں کی یافت ہو اس میں سے صرف سولہ اونس روحِ گلاب مقطر کرے۔ آج کے مصروف آدمی کو صرف اتنی مہلت ملتی ہے کہ وہ کسی ہوائی اڈہ کی ڈیوٹی فری شاپ سے پرفیوم خرید لے۔ یہ جانے بغیر کہ وہ سراسر نقلی ہے اور جو ذرا سے خالص اجزا اس میں شامل ہیں وہ وہیل مچھلی کی رطوبت ہے یا بلی کے غدود۔ یہ علم کیمیا کا کمال ہے کہ ربڑ مصنوعی، گوشت مصنوعی اور خوشبو مصنوعی۔ کیا ان مصنوعات کے استعمال کرنے والے کی اصلیت زیادہ دنوں تک برقرار رہ سکتی ہے۔
    ذخیرہ میں چار سو خوشبو کا جال پھیلا تھا۔ مہک کا ہر حلقہ دوسرے حلقے سے مختلف تھا لیکن خوشبوئیں آپس میں یوں گڈ مڈ ہو رہی تھیں جیسے جال الجھ گیا ہو۔ شامہ کا امتحان تھا بلکہ شامت تھی۔ پہلے سب خوشبوئیں مل کر دامنِ دل کو کھینچتیں کہ جا ایں جا است، اور پھر ہر خوشبو اسے اپنی اپنی طرف کھینچ کر تار تار کر دیتی۔ مسافر بے اختیار ہو خوشبو کے ساتھ تھوڑی دور تک گیا مگر وہ اس کا ہاتھ دوسری خوشبو کے ہاتھ میں دے کر خود گم ہو گئی۔ جاتے ہوئے کہہ گئی، تمہاری طرف جو ہاتھ بڑھاتا ہے تم اس پر بیعت کر لیتے ہو۔ یہی وجہ ہے کہ تمہیں اب تک راستہ نہیں ملا۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 3

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں