غبار خاطر سے اقتباس

عفراء نے 'نثری ادب' میں ‏مئی 21, 2013 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. ابوعکاشہ

    ابوعکاشہ منتظم

    شمولیت:
    ‏اگست 2, 2007
    پیغامات:
    14,372
    چائے کے باب میں ابنائے زمانہ سے میرا اختلاف صرف شاخوں اور پتوں کے معاملے میں ہی نہیں ہوا کہ مفاہمت کی صورت نکل سکتی بلکہ سرے سے جڑ میں ہوا ۔ یعنی اختلاف فروع کا نہیں اصل الاصول کا ہے :
    دہن کا ذکر کیا ، یہاں سر ہی غائب ہے گریباں سے
    سب سے پہلے سوال چائے کے بارےمیں خود چائے کا پیدا ہوتا ہے ،میں چائے کو چائے کے لئے پیتا ہوں ،لوگ شکر اور دودھ کے لئے پیتے ہیں ۔میرے لئے وہ مقاصد میں داخل ہوئی، ان کے لئے وسائل ہیں ۔ غور فرمائیے ،میرا رخ کس طرف ہے ۔ زمانہ کدھر جارہا ہے ؟
    قلعہ احمدنگر ۱۲۔۱۹۴۳
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 3
  2. ابوعکاشہ

    ابوعکاشہ منتظم

    شمولیت:
    ‏اگست 2, 2007
    پیغامات:
    14,372
    "ایک دقیق سوال اس نوعیت کا بھی ہے۔ عام طور پر سمجھا جاتا ہے کہ جو شکر ہر چیز میں ڈالی جا سکتی ہے، وہی چائے میں بھی ڈالنی چاہیے۔ اس کے لیے کسی خاص شکر کا اہتمام ضروری نہیں۔چنانچہ باریک دانوں کی دوبارہ شکر جو پہلے جاوا اور ماریشس سے آتی تھی اور اب ہندوستان میں بننے لگی ہے، چائے کے لیے بھی استعمال کی جاتی ہے۔حالانکہ چائے کا معاملہ دوسری چیزوں سے بالکل مختلف واقع ہوا ہے۔ اسے حلوے پر قیاس نہیں کرنا چاہیے۔ اس کا مزاج اس قدر لطیف اور بے میل ہے کہ کوئی بھی چیز جو خود اسی کی طرح صاف اور لطیف نہ ہوگی فوراً اسے مکدر کر دے گی۔گویا چائے کا معاملہ بھی وہی ہوا کہ:
    ~ نسیمِ صبح چھو جائے، رنگ ہو میلا
    آزاد
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں