انٹرنیٹ پر وقت ضائع کرنے سے بچیے! مفید ایکسٹینشنز کی بدولت

عفراء نے 'سوفٹ وئیرز پر تبصرے' میں ‏نومبر 30, 2013 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. عفراء

    عفراء webmaster

    شمولیت:
    ‏ستمبر 30, 2012
    پیغامات:
    3,919
    بسم اللہ الرحمن الرحیم
    السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ​

    مستقل انٹرنیٹ استعمال کرنے والے لوگ کئی بار کسی ویب سائٹ کے عادی ہوجاتے ہیں اور اس پر بلا وجہ وقت ضائع کرنے لگتے ہیں۔ اس طرح ضروری کاموں کی طرف توجہ کم رہ جاتی ہے۔
    اسی طرح آجکل والدین کو بھی بچوں کی طرف سے یہ شکایت رہتی ہے کہ سوشل سائٹس پر سارا دن بیٹھے وقت ضائع کرتے ہیں۔
    اس مشکل کا ایک حل یہ ہے کہ آپ اپنے براؤزر میں ایسی ایکسٹینشن ایڈ کر لیں جو ان سائٹس کو مکمل بلاک کر دے جن کے آپ عادی ہوچکے ہیں یا پھر اگر مکمل بلاک کرنا آپ کو مشکل لگ رہا ہے تو دن کے کچھ مخصوص دورانیے کے بعد ان ویبسائٹس کو نہ کھلنے دے۔
    ایسی مفید ایکسٹینشن ہے : https://idderall.com
    یہ آپ کو سہولت دیتی ہے کہ آپ کسی بھی مخصوص ویبسائٹ کو بلاک کریں اور ہر 24 گھنٹوں کے دوران محض منتخب کردہ دورانیہ مثلاً 10 منٹ کے لیے اس کو کھول سکیں۔
    اس ایکسٹینشن کا ایک اہم فائدہ یہ ہے کہ آپ اپنی مرضی سے جب چاہیں بلاک شدہ ویبسائٹ کھول نہیں سکتے! کیونکہ ویبسائٹ بلاک کرتے وقت آپ کو اپنے کسی دوست کا ایڈرس دینا ہوگا، جس کو یہ ایکسٹینشن از خود ای میل کر کے پاسورڈ بھیج دے گی۔ اب اگر آپ کو ویبسائٹ کھولنا ہوگی تو دوست سے پاسورڈ مانگنا پڑے گا اور دوست تو یقیناً آپ کا خیرخواہ ہی ہو گا۔۔۔۔!
    یہ ایکسٹینشن فائرفاکس اور کروم دونوں کے لیے موجود ہے۔
    اس کو ایڈ کرنے کے لیے یہاں جائیے: https://idderall.com/download
    اس کے علاوہ اس سے ملتے جلتے کئی ایکسٹینش موجود ہیں۔ کروم کے لیے StayFocusd اور فائرفاکس کے لیے LeechBlock بھی مفید ہیں۔
    ایکسٹینشن انسٹال یا استعمال کرنے میں کوئی مشکل پیش آئے تو ضرور پوچھیے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 5
    • اعلی اعلی x 1
    • معلوماتی معلوماتی x 1
  2. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,094
    وعلیکم السلام ورحمۃ اللہ وبرکاتہ
    : ) بہت خوب ۔ سوشل میڈیا کی تو خبر نہیں لیکن بعض لوگ گیمز کے بہت رسیا ہوتے ہیں ۔
    سمجھدار لوگ کسی بھی چیز کو اپنے اوپر اتنا حاوی ہونے نہیں دیتے ۔
     
  3. اعجاز علی شاہ

    اعجاز علی شاہ -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏اگست 10, 2007
    پیغامات:
    10,324
    جزاک اللہ خیرا سسٹر
    ویسے ایک دفعہ Router میں فلٹرنگ کا آپشن دیکھا تھا جس کے ذریعے آپ مخصوص سائٹس کو فلٹر کرکے بلاک کرسکتے ہیں لیکن تجربہ نہیں کیا۔
     
  4. ام محمد

    ام محمد -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏فروری 1, 2012
    پیغامات:
    3,123
    جزاک اللہ خیرا
    یہ تووہی کرے گا جس کو احساس ہو گا کہ وہ وقت ضائع کر رہا ہے -
    ورنہ حال یہ ہے کہ بڑے کہتے ہیں کہ بچے کمپیوٹر پر بیٹھ کر وقت ضائع کرتے اور بچے کہتے ہیں کہ بڑے خود یہ کرتے ہیں-اللہ تعالی سب کو عقل دے کہ وقت کا صحیح استعمال کریں آمین-
     
    • متفق متفق x 2
  5. عفراء

    عفراء webmaster

    شمولیت:
    ‏ستمبر 30, 2012
    پیغامات:
    3,919
    جی ہاں کافی لوگ گیمز کے شوقین دیکھے گئے ہیں۔ مجھے تو لگتا ہے کچھ گیمز سے دماغ تیز ہوتا ہے۔۔۔ لیکن بہرحال اعتدال میں ہونی چاہیے ہر چیز۔ ایسے سافٹوئیرز بھی پائے جاتے ہیں جو اس ایکسٹینشن کی طرح کمپیوٹر پروگرامز کو بھی بلاک کر سکیں۔ قوت ارادی ہو تو وہ بھی کارآمد ہوں گے عادت بدلنے میں۔ سمجھداری کا فقدان ہو تو ایسی چیزیں غنیمت ہوتی ہیں باجی!
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  6. عفراء

    عفراء webmaster

    شمولیت:
    ‏ستمبر 30, 2012
    پیغامات:
    3,919
    ہارڈ وئیر کے ذریعے یا سافٹوئیر میں؟ اس کے لیے پھر شاید سروس پرو وائیڈر سے رابطہ کرنا پڑے گا؟ مجھے اتنی معلومات نہیں اس بارے میں۔
    یہ ایکسٹینشن ان لوگوں کے لیے مفید ہے جن کو اتنی لمبی چوڑی معلومات نہیں ہوتیں اور دوسرا یہ کہ اگر کوئی والدین اپنے چھوٹے بچوں کے لیے بلاک کرنا چاہیں تو پاسورڈ اپنے پاس رکھ سکتے ہیں۔
    کچھ ذہین بچے سافٹوئیر کے ذریعے بلاک کی گئی چیزیں کھول سکتے ہیں اس کے لیے پھر ہارڈ وئیر والے فائر وال لگانا پڑتے ہیں۔ میں نے کہیں پڑھا تھا کہ ڈاکٹر ذاکر نائیک کے سکول میں ایسا سسٹم ہے اور انہوں نے والدین پر بھی یہ پابندی لگائی ہے کہ وہ گھروں میں بھی اس طرح کے فائروالز لگائیں۔
     
  7. عفراء

    عفراء webmaster

    شمولیت:
    ‏ستمبر 30, 2012
    پیغامات:
    3,919
    جی ہاں، یہ وہی کر سکے گا جس کو احساس ہو گا اور وہ عادت بدلنا چاہ رہا ہو گا تو یہ سافٹوئیرز بس ایک معاون کا کردار ادا کریں گے۔ ورنہ دیکھ لیں کہ ایک کام کو کرنے کے چور دروازے کئی ہیں جیسے تعلیمی اداروں میں فیس بک وغیرہ پر پابندی ہوتی ہے لیکن لوگ چور دروازے نکال لیتے ہیں۔
    آپ کی بات درست ہے کہ آجکل بڑے زیادہ وقت ضائع کرتے ہیں بنسبت بچوں کے۔ کئی کئی گھنٹے موبائل اور کمپیوٹر پر بچوں سے زیادہ بڑے ہی بیٹھے رہتے ہیں۔ کام کم اور ادھر ادھر کی چیزیں زیادہ دیکھی جاتی ہیں۔
    اس کی مثال ان سپر سٹورز سے دی جاسکتی ہے جن میں ہر طرح کی چیز ایک چھت کے نیچے موجود ہوتی ہے۔ آپ جاتے ایک چیز خریدنے ہیں اور خواہمخواہ ہی چار اور اٹھا لاتے ہیں کہ پسند آگئیں۔ عین اسی طرح انٹرنیٹ پر ایک چیز ڈھونڈیں تو دس اور ملتی جلتی نکل آئیں گی اور پھر ہر ایک کے آگے مزید اور۔۔۔ سلسلہ چلتا رہتا ہے، معلوم تب ہوتا ہے جب بہت سا وقت ضائع ہوچکا ہوتا ہے : ( اس لیے احتیاط اور پلانننگ (پلاننگ میں اس قسم کے سافٹوئیر کا استعمال بھی آ جاتا ہے جن کا اوپر ذکر کیا گیا) سے نیٹ استعمال کرنا پڑتا ہے ورنہ کھسکنے کے تو بہت خطرات ہیں۔
    اللہ تعالیٰ ہم سب کو اپنے اصل مقصد پر قائم رہنے کی توفیق عطا فرمائے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  8. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,094
    : ) اور اللہ تعالی بڑوں کو اپنے چھوٹوں کے لیے مثبت مصروفیات پیدا کرنے کا ہنر دے ۔ صرف ہٹو بچو یہ نہ کرو وہ نہ کرو سے تربیت نہیں ہوتی ۔ ان کو نعم البدل دینا پڑتا ہے ۔
    اصل میں جب کسی لحاظ سے زندگی میں کوئی خلا ہوتا ہے تو انسان کسی دوسری طرف سے اس کی کمی پورا کرتا ہے ۔ جس گھر کے بڑے مقصد بھری زندگی گزار رہے ہوتے ہیں وہاں بچوں کی سمت کافی حدتک درست رہتی ہے ۔
    بعض اوقات بڑے ٹیکنالوجی کو نہ سمجھنے کی وجہ سے خوامخواہ کی الرجی بھی پال لیتے ہیں اور سمجھتے ہیں کہ ہر نئی چیز بری ہے اور بچے کچھ الٹا ہی کر رہے ہیں ۔ بعض اوقات ماں باپ اپنے زمانے سے باہر نکلنے کو تیار ہی نہیں ہوتے ، ان کو اپنے بچوں کی دلچسپیوں کو سمجھنا چاہیے اور کچھ حد تک ان کا ساتھ دینا چاہیے تا کہ انہیں معلوم ہو وہ کیا کر رہے ہیں ۔ یہ جنریشن گیپ کمیونکیشن کے اس ترقی یافتہ دور میں بھی وہیں کا وہیں ہے بلکہ بڑھ گیا ہے کیونکہ ٹیکنالوجی بہت تیزی سے ترقی کر رہی ہے اور انسانی زندگی کا نقشہ ہر لمحے بدلتا جا رہا ہے ۔
    پچھلے دنوں عفراء اور میں ایک دوسرے کو گھر کی مرغی دال برابر کے نئے معنی سمجھا رہے تھے۔ یقین کریں ہر گھر میں یہی مسئلہ ہے کہ اماں ابا کو خبر ہی نہیں ان کے بچے جنہیں وہ نکمے سمجھتے ہیں کتنے لائق اور ہوشیار ہیں اور کتنے چیلنجز سے گزر کر بھی وہ اپنے دین کی تعلیم اور والدین کی تربیت کا ہر ممکن خیال کر کے کامیابیاں حاصل کر رہے ہیں ۔
     
  9. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,094
    آمین ۔ نماز کی برکات میں سے یہ ہے کہ یہ آپ کو وقت گزرنے کا احساس دلا دیتی ہے۔ اس لیے پکے نمازی پر اللہ کا فضل ہے کہ وہ بے کار چیزوں کا اتنا عادی نہیں ہوتا۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  10. عفراء

    عفراء webmaster

    شمولیت:
    ‏ستمبر 30, 2012
    پیغامات:
    3,919
    درست۔ اور لوڈشیڈنگ کی بھی کچھ ایسی برکات ہیں : )
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
Loading...

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں