اقبال عشق رسول ﷺ

عفراء نے 'مجلسِ اقبال' میں ‏نومبر 15, 2014 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. عفراء

    عفراء webmaster

    شمولیت:
    ‏ستمبر 30, 2012
    پیغامات:
    3,920
    میرے عزیز دوست محمد محمود پی سی ایس جنرل مینجر سمال انڈسٹریز حکومت مغربی پاکستان کے عہدے پر فائز ہیں۔ ۱۹۳۲ میں گورنمنٹ کالج لاہور میں فلسفہ کے طالبعلم تھے۔ ان کا آبائی وطن سیالکوٹ ہے اور وہ شاعر مشرق کے ان خوشہ چینوں مین شامل ہیں جنہیں مرحوم سے بالمشافہ گفتگو کی سعادت حاصل رہی ہے۔ ایک بار فلسفہ کے دوسرے طلباء کے ہمراہ وہ ڈاکٹر صاحب سے تبادلہ خیال کرنے اور علمی معلومات حاصل کرنے میکلوڈروڈ والی کوٹھی میں ان کے پاس گئے۔ اور ڈاکٹر صاحب کی خدمت میں عرض کیاـــــ ہم نے پڑھا ہے کہ حضرت عمرؓ فرماتے تھے کہ آنحضرت جب چلتے تو درخت تعظیم سے جھک جاتے ۔ ہمیں یقین ہے کہ عمرؓ جھوٹ نہیں بولتے تھے لیکن ہمارا دعویٰ تو یہ ہے کہ ہمارا نبی انسانیت کے لیے نمونہ ہے لیکن اگر قدرت کے مظاہر نبی کے لیے مختلف ہوں اور ہمارے لیے مختلف تو پھر نبی نمونہ تو نہیں بن سکتا۔
    ڈاکٹر صاحب نے بلا تامل جواب دیا۔ تم بالکل سچ کہتے ہو کہ حضرت عمرؓ جھوٹ نہیں بولتے تھے۔ بات یہ ہے کہ یہ واقعہ پڑھ کر تمہارا ذہن مختلف راستہ پر منتقل ہو گیا ہے۔ تم الجھ کر رہ گئے ہو قدرت کے مظاہر اور درختوں کے جھکنے میں۔
    بھائی؛ یہ واقعہ تو صرف عمرؓ کا عشق بتاتا ہے کہ ان کی آنکھ یہ دیکھتی تھی کہ درخت جھک رہے ہیں۔ اس کا درختوں کے جھکنے کے ساتھ کوئی واسطہ نہیں۔
    اگر تمہیں عمر کی آنکھ نصیب ہو تو تم بھی دیکھو گے کہ دنیا ان کے سامنے جھک رہی ہے۔
    عقل انسانی ہے فانی زندۂ جاوید عشق​

    اقتباس از روزگار فقیر (جلد اول)
    فقیر سید وحید الدین​
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 4

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں