سعودی عرب اور ان کی حکومت پر کیے گئے چنداعتراضات کا جواب

اہل الحدیث نے 'مضامين ، كالم ، تجزئیے' میں ‏جنوری 28, 2015 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. اہل الحدیث

    اہل الحدیث -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏مارچ 24, 2009
    پیغامات:
    4,974
    سابق خادم الحرمین الشریفین شاہ عبداللہ رحمہ اللہ آل سعود کی دولت

    سابق خادم الحرمین الشریفین شاہ عبداللہ رحمہ اللہ آل سعود کی دولت کو لے کر چند نام نہاد تبصرہ نگاروں نے خوب مزے لیے۔ نتیجہ یہ ہوا کہ بہت سے لوگوں کا بغض جہاں نظر آیا وہاں سوشل میڈیا پر منچلوں نے بھی شاہ عبداللہ پر دل کھول کر بھڑاس نکالی اور یہی نہیں بلکہ سعودی عرب اور عربوں کو خوب گالیاں دیں۔

    اس تھریڈ میں ایک ایک کر کے ان چند اعتراضات کو پیش کیا جائے گا اور ایسے لوگوں کی منافقت کا پردہ بھی چاک کیا جائے گا۔ ان شاء اللہ

    پہلا اعتراض:
    شاہ عبداللہ نے اپنی اولاد کے لیے 18 ارب ڈالر کے اثاثے چھوڑے جب کہ دنیا میں بے شمار لوگ اور مسلمان غربت و بھوک سے مر رہے ہیں

    جواب:

    سب سے پہلا جواب تو یہ ہے کہ شاہ عبداللہ کی دولت ان کی اپنی تھی۔ یہ نام نہاد تبصرہ نگار اس پر تبصرہ کرنے والے کون ہوتے ہیں۔ اگر اتنے ہی یہ حاتم طائی کی قبر پر لات مارنے والے ہیں تو ذرا اپنی خیرات کی گئی انکم بھی دکھائیں۔ ماسوائے اپنے کالے دھن کو سفید کرنے اور ٹیکس سے بچنے کے سوا کچھ نہیں کیا ہو گا۔

    دوسرا جواب یہ کہ تبصرہ کرنے والوں نے شاہ عبداللہ کو اپنے بچوں کے لیے اثاثہ چھوڑنے پر تو مطعون کیا لیکن بل گیٹس کی بطور امیر ترین آدمی تعریف و توصیف بیان کرتے ہوئے نہیں تھکتے۔ جب بھی بل گیٹس کا نام آتا ہے کہتے ہیں۔۔۔ واؤ یو نو، دنیا کا سب سے امیر آدمی ہے۔ اس کے اثاثے 81 ارب ڈالر سے بھی زیادہ ہیں۔

    اس طرح ایپل کمپنی کی تعریف و توصیف بیان کرتے ہوئے نہیں تھکتے جو پوری دنیا میں لوگوں کا اتنا استحصال کرتی ہے کہ صرف 2014 کا ریونیو ہی 182 بلین ڈالر ہے۔ یعنی شاہ عبداللہ کی عمر بھر کی پونجی سے دس گنا زیادہ اور صرف 2014 کا منافع بھی 39 بلین یعنی ارب ڈالر ہے ۔ لیکن یہاں سب کو سانپ سونگھ جاتا ہے۔

    ہو سکتا ہے کہ کچھ لوگ یہ بھی کہیں کہ بل گیٹس اور سٹیو جابز نے خیراتی کاموں میں بھی کافی حصہ ڈالا تو ان سے گزارش ہے کہ ذرا گوگل کر کے شاہ عبداللہ کے خیراتی کاموں پر بھی نظر ڈال لیں۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 8
Loading...

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں