جماعت اسلامی کو حب علی نہیں بغض معاویہ یے .......

سوئےمقتل نے 'مضامين ، كالم ، تجزئیے' میں ‏مارچ 28, 2015 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. سوئےمقتل

    سوئےمقتل -: رکن مکتبہ اسلامیہ :-

    شمولیت:
    ‏فروری 28, 2015
    پیغامات:
    83
    جماعت اسلامی کو حب علی نہیں بغض معاویہ یے .......

    جماعت اسلامی پاکستان کے بننے سے لیکر اپنے متنازعہ بیانات کی وجہ سے بدنام رہی ہے پاکستان کا بننا ان کو قبول نہ تھا ........
    لیکن عجیب اتفاق ہے بننے کے بعد اقتدار کا سب سے زیادہ حقدار بھی خود کو سمجھتے رہے ........

    پاکستان نے جہاد کشمیر کو شروع کیا تو مولانا مودودی نے اس جہاد کو غلط کہا بلا دلیل .....
    لیکن پھر وہی جماعت اسلامی ہے جہاد کشمیر میں لڑتی ہے جو ان کا اچھا اقدام ہے..........

    جہاد افغان آتا ہے جماعت اسلامی وہاں بھی لڑتی ہے لیکن وہاں بھی دھنگا فساد اور امارات اسلامی کنڑ کے امیر کا قتل کا الزام بھی گلبدین پہ ہے ......

    جب پاک فوج ٹی ٹی پی کے خلاف لڑتی ہے تو وہ ان کو مردار نظر آتی ہے اور لیکن حکیم اللہ ان کو شہید نظر آتا ہے .......
    لیکن پھر یو ٹرن اور آپریشن کی حمایت بھی کی جو ایک اچھا قدم ہے........

    ایرانی خمینی انقلاب ان کو اسلامی لگتا ہے جبکہ صحابہ کے خلافت و ملوکیت کے اندر کیڑے نکالنے کے لیےلی کتاب لکھ مارتے ہیں ...........

    مصر میں مرسی صاحب آئے ان کی جمہوری حکومت تھی لیکن جماعت اسلامی اس کو الہامی حکومت سمجھنے لگی حالانکہ ایک سال میں شریعت کا نفاذ بھی عمل میں نہ لایا گیا .....
    مرسی کا تختہ الٹا گیا تو ایسا رونا شروع کیا کہ جیسے خلافت ختم ہوئی ہے. ........

    سعودی عرب میں بادشاہت ہے جس کے بارے میں نبی پاک صلی اللہ علیہ وسلم نے کہا رحمت ہے اور وہاں شریعت کا نفاذ بھی ہے ان میں ہزار خامیاں ہیں لیکن جماعت اسلامی نے معیار صرف اپنی سوچ کو رکھا .............

    اب یمن کا معاملہ یے اس پہ بھی اپنا بغض انہوں نے سعودیہ سے ظاہر کیا اور پرو ایرانی انقلاب ے حامی ہونا ظاہر کیااور پاک سعودی اتحاد کی مخالفت کی اور خود کو ANP جیسی لادین اور شیعہ تنظیموں کی صف میں لا کھڑا کیا حالانکہ نہ تو ان کو پاک آرمی کا مفاد عزیز ہے نہ کچھ اور
    بس یہ بغض سعودیہ ہے نہ کہ حب پاکستان ........
    اور یہ ان کی پالیسی کا دوغلا پن یے
    کوئی بھائی طعن و تشنیع کی بجائے با دلیل بات کرے حاضر ہیں
    احیائےاسلام
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  2. ابوعکاشہ

    ابوعکاشہ منتظم

    شمولیت:
    ‏اگست 2, 2007
    پیغامات:
    14,373
    شکریہ، یہاں پر تھوڑا سا فرق رکھا جائے ـ جماعت اسلامی کے قائدین اور ان کے کارکنان یا ان جماعت سے وابستہ بیشترلوگوں کا منج یکساں نہیں ـ اور نا ہی وہ لوگ بغض معاویہ میں مبتلا ہیں ـ ہمارے بعض بھائی جلدی میں یا جذبات میں آکر سب کو ایک ہی صف میں شامل کردیتے ہیں جو کہ نامناسب ہے ـ جہاں تک جماعتی موقف کی بات ہے تو اس میں دو رائے نہیں ـ وہ سبیل المؤمنین سے ہٹ کرہے ـاللہ انہیں ہدایت دے ـ
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 3
  3. سوئےمقتل

    سوئےمقتل -: رکن مکتبہ اسلامیہ :-

    شمولیت:
    ‏فروری 28, 2015
    پیغامات:
    83
    بالکل بجا فرمایا آپ نے
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  4. عطاءالرحمن منگلوری

    عطاءالرحمن منگلوری -: ماہر :-

    شمولیت:
    ‏اپریل 9, 2012
    پیغامات:
    1,473
    عکا شہ بھائ نے پانی ڈال دیا ہے ورنہ سوئے مقتل تو ننگی تلوار لئے جماعت اسلامی کے تعاقب میں نظر آتے ہیں..غیر سیاسی آدمی ہوں لیکن یہ عنوان حقیقت کے برعکس ہے جو اچھا نہیں لگا.
    اللہ نہ کرے سعودیہ کی طرف کوئ ہاتھ بڑھے.اگر خدانخواستہ ایسا ہو جاتا ہے تو جماعت اسلامی سمیت ہر مسلمان حرم کی پاسبانی کرتا نظر آئے گا.باقی رہ گئ بات اختلاف رائے کی تو یہ ان کا حق ہے جس طرح آپ کا حق ہے.خامیوں سے پاک کوئ نہیں.سعودی شاہی خاندان اگر ھزاروں خامیوں کے باوجود ہمیں قبول ہے تو دوسروں کو بھی برداشت کریں.رائے کے پہاڑ کھڑے کرنے اور گڑے مردے زندہ کرنے سے امت مسلمہ کو فائدہ نہیں نقصان ہی ہوتا ہے.

    ایک ہوں مسلم حرم کی پاسبانی کے لیے
    نیل کے ساحل سے لے کر تابخاک کاشغر
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 2
  5. Ishauq

    Ishauq -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏فروری 2, 2012
    پیغامات:
    9,614
    اپنے اپنے حصے کا غصہ نکالنے کا موقع ہم لوگ کبھی ضائع نہی کرتے۔ چاھے مصر کی صورت حال ھو، چاھے یمن کی، چاھے شام کی۔۔۔۔۔۔۔۔ ابتسامہ
    اللہ سے یہی دعا ھے کہ اس صورت حال میں امت مسلمہ کے لیے خیر کا پہلو نکلے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
    • متفق متفق x 1
  6. ابوعکاشہ

    ابوعکاشہ منتظم

    شمولیت:
    ‏اگست 2, 2007
    پیغامات:
    14,373
    ابتسامہ محب ۔ فرق یہ ہے کہ ہم اصولوں پر چلتے ہیں ۔ اسلام کی بنیاد ہی اصولوں پر رشتہ استوار رکھنے کی ہے ۔ ورنہ جماعتوں اور شخصیات سے ہمارا کوئی لینا دینا نہیں کہ بلاوجہ انسان کسی مسلمان سے عداوت رکھی جائے ۔ہر انسان اپنی جگہ پر محبت کا حقدار ہے ۔ لیکن اہل ایمان جہاں بھی مشکل میں ہوں ۔وہاں ان کا دفاع اور ان کے لئے دعا یہ ان کا حق ہے ۔ خود اللہ جل شانہ نے یہ حق اداکرنے کا ذکر کیا ہے اور باقی سے برات ۔إن الله يدافع عن الذين آمنوا ۔۔۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 2
  7. T.K.H

    T.K.H رکن اردو مجلس

    شمولیت:
    ‏نومبر 18, 2014
    پیغامات:
    234
    مجھے تو لگتا ہے کہ مولانا مودودیؒ سے ” خلافت و ملوکیت“ کسی ”رافضی“ نے ”بندوق “کی نوک پر لکھوائی ہے۔
     
  8. ابوعکاشہ

    ابوعکاشہ منتظم

    شمولیت:
    ‏اگست 2, 2007
    پیغامات:
    14,373
    اختلاف نظریات سے رکھیے . شخصیات سے نہیں . ورنہ کوئی بھی قابل احترام نہیں رہے گا
     
  9. T.K.H

    T.K.H رکن اردو مجلس

    شمولیت:
    ‏نومبر 18, 2014
    پیغامات:
    234
    میرا اشارہ ان کے نظریات ہی کی طرف تھا۔ ورنہ دینی لحاظ سے میں انکو اپنا راہنما مانتا ہوں۔میری نظر میں مولانا مودودی ؒ جیسے بالغ النظر عالم ِدین اب اسلام کو کبھی میسر نہیں آئے گا۔میں اتنی تمنا کرتا ہوں کہ کاش مولانا مودودیؒ” خلافت و ملوکیت “ نہ لکھتے۔ یا یہ تحریر میری آنکھوں سے اوجھل رہتی۔غلام احمد پرویز صاحب کے باطل نظریات کا مولانا مودودی ؒ نے جس طرح علمی و مدلل محاسبہ کیا ہے، اس سے بہتر کسی نے نہیں کیا۔
     
  10. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,482
    ہم انسانوں سے مثالیت کی توقع کیوں رکھتے ہیں، اگر ہم خود کو اور دوسرے انسانوں کو ان کے عیبوں سمیت قبول کرنا شروع کر دیں تو سعودی حکمرانوں اور مولانا مودودی پر تاؤ آنا ختم ہو جائے گا۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  11. ابوعکاشہ

    ابوعکاشہ منتظم

    شمولیت:
    ‏اگست 2, 2007
    پیغامات:
    14,373
    شاید آپ کو سمجھ نا آئے. یہ قدرت کا نظام ہے. جب اس کی پیداکردہ مخلوق میں سے کسی کو بغیر دلیل و برہان کے مسیحا سمجھا جانے لگے. اس کے پیروکار اسے معصوم سمجھنے لگیں . وہ خود بھی یہ خیال کرنے لگے کہ خدانخواستہ وہ صدی کے مجدد ہو سکتے ہیں ، تو پھر اس کا عرش سے فرش پر آنا لازم ہوجاتا ہے. اور یہی کچھ مولانا مودودی رحمہ اللہ کے ساتھ ہوا. وہ آخر وقت تک اپنے موقف پر قائم رہے. اس کو حق سمجھتے تھے. ان سے جو غلطیاں ہوئی ہیں . وہ فروعی مسائل نہیں بلکہ ان کے نظریات سے سب سے زیادہ محمد عربی کے ساتھی متاثر ہوئے ہیں . اور صحابہ کا دفاع ایمان کا حصہ ہے . یہ کوئی غریب بات نہیں کہ ان سے غلطی کیسے ہوئی . بلکہ یقین اس پر ہونا چاہے کہ پیغمبر کے علاوہ کوئی معصوم نہیں . سب سے غلطی ہو سکتی ہے . لیکن غلطی ہر اصرار کرنا درست نہیں
     
  12. T.K.H

    T.K.H رکن اردو مجلس

    شمولیت:
    ‏نومبر 18, 2014
    پیغامات:
    234
    اسی لیے میں نے ”کاش“ کا لفظ استعمال کیا تھا۔ ویسے مجھے خود بھی مولانا مودودیؒ کے کچھ ”نظریات “ سے اختلاف ہے۔ میری نظر میں کوئی ”کامل“ نہیں اور نہ ہی ”معصوم عن الخطاء“۔میں غلطی کو غلطی ہی کہتا ہوں،اس لیے الفاظ کو ” تاویلی بھٹی“ سے گزارنا مجھے پسند نہیں ۔
     
  13. عمر اثری

    عمر اثری -: رکن مکتبہ اسلامیہ :-

    شمولیت:
    ‏نومبر 21, 2015
    پیغامات:
    460
    محترم یہ کونسی تاویل ہے؟ کیا یہ کوئی مثل ہے؟
     
  14. ابو محمد

    ابو محمد -: محسن :-

    شمولیت:
    ‏ستمبر 24, 2008
    پیغامات:
    129
    پلیز اس پر ذرا روشنی ڈال دیں بادشاہت رحمت ہے کا ذکر کسی حدیث میں آیا ہے؟
     
  15. T.K.H

    T.K.H رکن اردو مجلس

    شمولیت:
    ‏نومبر 18, 2014
    پیغامات:
    234
    محترمی میں نے لفظ ”تاویل“کو ایک ایسی ”بھٹی “ سے تشبیہ دی ہے جس میں بات ”جل بھن“ کر من مانے مطلب کے” موافق و مطابق“ ہو جاتی ہے، یا پھر ”دن “ رات میں اور ”رات “ دن میں تبدیل ہو جاتی ہے۔
     
    • متفق متفق x 1
    • معلوماتی معلوماتی x 1
  16. عمر اثری

    عمر اثری -: رکن مکتبہ اسلامیہ :-

    شمولیت:
    ‏نومبر 21, 2015
    پیغامات:
    460
    شکریہ جناب عالی.
    اللہ آپکو بہتر بدلہ عطا فرماۓ. آمین
     

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں