امیر تکریت نجم الدین ایوب کا خواب

ابوعکاشہ نے 'تاریخ اسلام / اسلامی واقعات' میں ‏جولائی 21, 2015 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. ابوعکاشہ

    ابوعکاشہ ایڈمن

    شمولیت:
    ‏اگست 2, 2007
    پیغامات:
    14,108
    امیر تکریت نجم الدین ایوب کا خواب

    شیخ محمد بن صالح العثیمین رحمہ اللہ تعالی نے کتاب الصیام (الشرح الممتع) کی شرح کے دوران ایک واقعہ ذکر کیا تھا ـ افادہ عام کی خاطر اس کا اختصار اردو ترجمہ کے ساتھ اردو مجلس فورم "(urdumajlis.net)"پر پیش کیا جارہا ہے ـ

    " امیر تکریت نجم الدین ایوب رحمہ اللہ نے بہت عرصہ تک شادی نہیں کی تھی ـ جب اس کے بھائی اسد الدین شیراکوہ نے اس پوچھا کہ ابھی تک شادی کیوں نہیں کی ؟ـ تو انہوں نے جواب دیا کہ مجھے ابھی تک اپنے لئے کوئی مناسب لڑکی نہیں مل سکی !کہا ،کیا تمہارے طرف سے پیغام بھیجوا دوں ؟ فرمایا کون ہے ؟ ملک شاہ سلطان محمد بن ملک شاہ السلطان السلجوقی کی بیٹی یا اس کے وزیر کی بیٹی کی طرف !! ـ نجم الدین ایوب نے جواب دیا کہ میرے لئے موزوں نہیں ـ اسدالدین حیران ہوئے کہ اگر ملک کی بیٹی مناسب نہیں تو پھر تمہیں کیسی لڑکی چاہے ـ نجم الدین نے جواب دیا کہ "مجھےایسی نیک صالحہ، پاکباز بیوی چاہے ،جو میرا ہاتھ پکڑ کر جنت کی طرف لے جانے والی ہو ،میرے بیٹے کی اچھی طرح تربیت کرے ،یہاں تک کہ وہ جوان ہو -بہترین گھڑ سوا ر اور مجاہد بنے ،اور بیت المقدس کو فتح کرکے مسلمانوں کو واپس دلا دے ، یہ میرا خواب ہے " اسد الدین اپنے بھائی کی اس خواہش سے حیران نہیں ہوئے ـ صرف یہ پوچھا کہ ایسی لڑکی کہاں سے ملے گی ـ امیر نجم الدین ایوب نے جواب دیا ، جو اللہ کی رضا کے لئے نیت خالص کرلے ، اللہ اسے عطا کردیتا ہے ـ
    کچھ عرصہ بعد کی بات ہے کہ نجم الدین ایوب اپنے مشایخ میں سے ایک شیخ کے ساتھ تکریت کی مسجد میں بیٹھے تھے ـ اسی اثناء میں ایک لڑکی نے پردے کے پیچھے سے شیخ کواپنے آمد کی اطلاع دی ـ شیخ نے نجم الدین ایوب سے اجازت لی تاکہ اس سے بات کرسکے ـ انہوں نے اس لڑکی سے پوچھا کہ "تم نے اس لڑکے کا رشتہ کیوں ٹھکرایا جو کہ تمہاری طرف میں نے بھیجا تھا" ـ لڑکی نے جواب دیا کہ بلاشبہ وہ بہت ذہین ،حسین وجمیل شخصیت کا مالک تھا ـ لیکن میرے لئے موزوں نہیں ـ شیخ نے پوچھا اور تمہیں کیسا لڑکا چاہے ؟ اس نے جواب دیا "مجھےایسا شوہر چاہے جو میرا ہاتھ پکڑ کر جنت کی طرف لے جانے والا ہو ،مجھے اللہ تعالی بیٹا دے ،یہاں تک کہ وہ جوان ہو اور بہترین گھڑ سوا ر اور مجاہد بنے ،اور بیت المقدس کو فتح کرکے مسلمانوں کو واپس دلا دے " ـ یہ تقریبا وہی الفاظ ہیں جو کہ نجم الدین ایوب نے اپنے بھائی سے کہے تھے ، ملک شاہ سلطان السلجوقی اور اس کے وزیر کی حسین جمیل بیٹی کا رشتہ ٹھکرا دیا تھا ـ دونوں نے صرف اللہ کی رضا ، جنت کے حصول کے لئے معذرت کی ,تاکہ رب راضی ہو جائے ـ دونوں ہی کہ یہ خواہش تھی کہ ان کا بیٹا بیت المقدس فتح کرے ـ
    نجم الدین ایوب کھڑے ہوئے اور شیخ سے درخواست کی وہ اس لڑکی سے شادی کرنا چاہتے ہیں ـ شیخ نے جواب دیا کہ وہ علاقہ کےفقراء میں سے ہے ـ نجم الدین نے جواب دیا ـ یہی میں چاہتا ہوں ـ امیر تکریت نے اس لڑکی سے شادی کر لی ـ اللہ تعالی نے اسے نیک صالح بیٹا عطا فرمایا جس نے بیت المقدس کو فتح کیا ـ دنیا ئے تاریخ کے اس مشہور و معروف سپہ سالار،مسلم مجاہد کا نام "صلاح الدین ایوبی" تھا ـ
    شیخ ابن عثیمین رحمہ اللہ فرماتے ہیں کہ" یہ ہماری میراث ہے ـ ہمیں چاہے کہ اپنے بچوں کو اس طرح کے واقعات سنا کر ان کی تربیت کریں ـ جب انسان فقط اللہ عزوجل کی رضا کے لئے نیت خالص کر کے کچھ مانگے ـ اللہ اسے عطا کردیتا ہے "​
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 8
  2. تجمل حسین

    تجمل حسین رکن اردو مجلس

    شمولیت:
    ‏مارچ 19, 2014
    پیغامات:
    143
    بہت خوب جناب۔ بہت اچھی شیئرنگ ہے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  3. بابر تنویر

    بابر تنویر منتظم

    رکن انتظامیہ

    شمولیت:
    ‏دسمبر 20, 2010
    پیغامات:
    7,111
    بارک اللہ فیک۔ اتنی اچھی شئرنگ کا شکریہ
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  4. ابوعکاشہ

    ابوعکاشہ ایڈمن

    شمولیت:
    ‏اگست 2, 2007
    پیغامات:
    14,108
    وفیک بارک اللہ ـ شکریہ ، بہت ہی سبق آموز واقعہ ہے ـ
     
  5. انا

    انا ناظمہ خاص انتظامیہ

    شمولیت:
    ‏اگست 4, 2014
    پیغامات:
    1,400
    جزاک اللہ خیرا۔ ایسے واقعات پڑھ کر یقین نہیں آتا کہ یہ ہماری تاریخ کا حصہ ہیں ۔ ہماری معاشرے میں اس چیز کا تصور نہیں کیا جا سکتا کہ کوئی لڑکی اپنے والدین کے بغیر شادی کی بات کرنے جا پہنچے۔ یہ وہ آزادی ہے جو آج کل کی نوجوان نسل مغرب میں تلاش کر رہی ہے، اور جو انہیں تاریخ کا مطالعہ کرنے سے اپنے پاس سے ہی مل جائے۔
    اللہ تعالی ہمیں بھی ایسا ہی اخلاص اور یقین عطا فرمائے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 2
Loading...

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں