ڈی بگ (debug) کی بنیاد

انا نے 'پروگرامنگ' میں ‏ستمبر 11, 2015 کو نیا موضوع شروع کیا

Tags:
  1. انا

    انا ناظمہ خاص انتظامیہ

    شمولیت:
    ‏اگست 4, 2014
    پیغامات:
    1,400
    پروگرامنگ کی دنیا میں قدم رکھنے کے بعد جس چیز پر بہت زیادہ زور دیا جاتا ہے وہ ڈی بگنگ ہے ۔ یعنی اپنے کوڈ یا پروگرام میں سے غلطیاں دور کرنا۔ڈی بگنگ کرنا جتنا محنت طلب کام ہے اس کی تاریخ اتنی ہی دلچسپ ہے ۔ تو ہوا کچھ یوں تھا کہ 1945 میں گریس ہوپر نامی ایک خاتون سائنس دان Relay کیلکولیٹر (قدیم کمپیوٹر) پر کام کر رہی تھیں ، کہ انہین کچھ مسائل کا سامنا کرنا پڑا ۔ جب انہوں نے مشین میں جھانکا تو انہیں اندر کیڑا نظر آیا جس کی وجہ سے اس مشین نے کام کرنا بند کر دیا تھا ۔ تو یوں وہ پہلا bug تھا جسے گریس ہوپر نے ختم کیا اور وہیں سے ڈی بگ کی تاریخ شروع ہوئی ۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 6
  2. بابر تنویر

    بابر تنویر منتظم

    رکن انتظامیہ

    شمولیت:
    ‏دسمبر 20, 2010
    پیغامات:
    7,203
    بہت خوب
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  3. ابن قاسم

    ابن قاسم محسن

    شمولیت:
    ‏اگست 8, 2011
    پیغامات:
    1,718
    کیا 1945 میں بھی کمپیوٹر ہوا کرتے تھے؟ ایم ایس ڈاس وغیرہ تو 1970 میں شاید وجود میں آئے ہیں اس سے پہلے کمپیوٹر میں کون سے پروگرام تھے
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 2
  4. انا

    انا ناظمہ خاص انتظامیہ

    شمولیت:
    ‏اگست 4, 2014
    پیغامات:
    1,400
    1980 کے شروع میں غالبا ایم ایس ڈاس ریلیز ہوا تھا ۔ لیکن اس سے بھی پہلے 1960-70 میں مین فریم(Main Frame) ہوا کرتے تھے۔مین فریم سے پہلے کوئی اور ممبر اضافہ کر دیں کے مجھے نہیں یاد کون سے تھے ۔ لیکن پہلا کمپیوٹر ENIAC تھا جو 1940 کے شروع میں بنا تھا ۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 3
  5. ابن قاسم

    ابن قاسم محسن

    شمولیت:
    ‏اگست 8, 2011
    پیغامات:
    1,718
    مین فریم تو ڈھانچہ رہا ہوگا مجھے یہ جاننا ہے کہ پروگرام کون سا استعمال کیا جاتا تھا۔ خیر گوگل پر اس بارے میں معلومات ہوں گی۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  6. عفراء

    عفراء webmaster

    شمولیت:
    ‏ستمبر 30, 2012
    پیغامات:
    3,919
    واہ بہت خوب! ویسے کیا اتفاق ہے ' گریس ہوپر' نے 'bug' ختم کیا :)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  7. انا

    انا ناظمہ خاص انتظامیہ

    شمولیت:
    ‏اگست 4, 2014
    پیغامات:
    1,400
    ٹھیک ٹھیک۔ اگر آپریٹنگ سسٹم کی بات ہے تو میرا بھی یہی خیال ہے کہ ڈاس پہلا آپریٹنگ سسٹم تھا ۔
    جتنے بھی پہلے زمانے کے کمپیوٹر تھے وہ مشین لینگویج استعمال کیا کرتے تھے-ابھی بھی کرتے ہیں لیکن اب اتنی ترقی ہو گئی ہے کہ سافٹ وئر کے ذریعے یہ کام کافی آسان ہو گیا ہے۔ اس زمانے میں کمپیوٹر جب نئے نئے ایجاد ہوئے تھے تو ان کا مقصد صرف numerical پرابلمز حل کرنا ہوتا تھا۔ جس کے لیے مشین لینگویج بہت بڑی کامیابی تھی۔ مشین لینگویج کی تفصیل میں جائیں تو یہ ایک بائنری لینگویج ہے ۔ یعنی ایک اور صفر کی زبان آپ کمپیوٹر کو ڈائیریکٹ 1 اور 0 کی زبان میں بات سمجھاتے تھے ۔ کسی کی بورڈ کی ضرورت ہی نہیں : )۔
    جو معلومات ملیں وہ یہاں بھی شیئر کر دیجیے گا۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 2
    • معلوماتی معلوماتی x 1
  8. انا

    انا ناظمہ خاص انتظامیہ

    شمولیت:
    ‏اگست 4, 2014
    پیغامات:
    1,400
    :ROFLMAO:
     
  9. اعجاز علی شاہ

    اعجاز علی شاہ -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏اگست 10, 2007
    پیغامات:
    10,324
    بالکل صحیح !
    پہلے پنچ اور ری لے وغیرہ ہوتے تھے اور کمپیوٹر کا تصور بہت پہلے چارلس بیبج نے analytical engine کی صورت میں پیش کیا تھا بس فرق یہ تھا کہ وہ کام سافٹ وئیر کی بجائے ہارڈوئیر پر کرتا تھا۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 2
  10. ابن قاسم

    ابن قاسم محسن

    شمولیت:
    ‏اگست 8, 2011
    پیغامات:
    1,718
    میں نے کہیں پڑھا تھا اباکس کو بھی کمپیوٹر کہتے تھے جسے چینیوں نے دریافت کیا تھا۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
Loading...

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں