ایلوویرا(کوار گندل) قدرت کا ایک انمول تحفہ

حکیم ضیاء الرحمن سندھو نے 'صحت و طب' میں ‏فروری 21, 2016 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. حکیم ضیاء الرحمن سندھو

    حکیم ضیاء الرحمن سندھو محسن

    شمولیت:
    ‏مئی 17, 2013
    پیغامات:
    255
    السلام علیکم
    ایلوویرا(کوار گندل) قدرت کا ایک انمول تحفہ
    ایلو ویرا ایک قدرتی جڑی بوٹی ہے،جو اپنے اندر بے پناہ تاثیر اور فوائد چھپائے ہوئے ہے۔یہ حسن و خوبصورتی کے ساتھ ساتھ میڈیکلی بھی استعمال ہو رہی ہے۔یہ ایسا پودا ہے جسے آسانی سے گھر میں اگایا گا سکتا ہے۔
    ایلوویرا کی تاریخ:
    ایلوویرا کی تاریخ چار ہزار سال پرانی ہے ۔اس کی دستاویز جو ہمیں ملتی ہے وہ نیپال کے مٹی کے بورڈ پر لکھی ہوئی ملتی ہے جو کہ 2200 قبل مسیح پرانی ہے۔اس دور کے لوگ اس کے فوائد سے آگاہ تھے اور سے مختلف بیماریوں کے علاج کے لئے استعمال کرتے تھے۔\
    ایلوویرا جوس کا حوالہ قدیم مصری تحریروں میں بھی ملتا ہے جو کہ چھ ہزار سال پرانی ہیں۔قلوپطرا اپنے حسن کے نکھار کے لیے ایلو ویرا اپنی معمول کی زندگی میں استعمال کرتی تھی۔ الیگزینڈر کے بارے میں مشہور ہے کہ وہ جنگوں میں زخموں کی مرہم کاری کے طور پر ایلو ویرا جوس کا استعمال کرتا تھا۔ کولمبس کریسٹوفر بھی ایلو ویرا کے پودے کو مرہم کے طور پر استعمال کرتا تھا اور اپنے ساتھ بحری جہاز میں ہمیشہ ایک پودا لگائے رکھتا تھا۔
    قدیم سنسکرت میں ایلو ویرا کو گھریتا کماری کے نام سے پکارا جاتا ہے۔کیونکہ ان کا عقیدہ تھا کہ عورت کی خوبصورتی اور حسن کے زیبائش کے لیے ایلو ویرا سے بڑھ کر کوئی چیز مفید نہیں۔اور مخلتلف نسوانی بیماریوں کے علاج میں بھی اکثیر کا درجہ رکھتا ہے۔اس کے علاوہ چین کی ثقافت میں ایلو ویرا کو مختلف دوائیوں میں استعمال کیا جاتا تھا۔الغرض زمانہ قدیم سے ہی ایلو ویرا کی اہمیت مسلم ہے کہ یہ نہایت مفید جڑی بوٹی ہے۔
    اقسام:
    ایلوویرا کی پانچ سو کے قریب اقسام ہیں اور یہ للی کی فیملی سے تعلق رکھتا ہے۔اس کا آبائی وطن افریقہ ہے۔یہ گرم علاقوں میں آسانی سے اگایا جا سکتا ہے۔امریکہ،جنوبی افریکہ،چین ،پاکستان وغیرہ میں باکثرت پایا جاتا ہے۔
    ایلو ویرا میں موجود اجزاء:
    اس میں پانی،20 معدنیات،12 وٹامن،اور 200 فوٹو نیوٹرنز ہوتے ہیں۔
    وٹامنز:
    بی ون، بی ٹو، بی تھری، بی فائیو، بی سیکس، بی ٹویلو، سی ای، فولک ایسڈ، کولائن۔
    معدنیات:
    کیلشیئیم، کرومیم، کوپر، آوڈین، آئرن، میگنیشیم، میگانیز، میلوبیڈینیم، سلینیمیم، سیلکون، سوڈیم کلوراٰئیڈ، سلفر، پوٹاشییم، فاسفورس، زنک۔
    امائنوایسڈ: اس میں بیس قسم کے امائنو ایسڈ پائے جاتے ہیں۔جو کہ ہمارا جسم خود نہیں بناتا۔
    فوائد:
    ایلوویرا جسم کے مدافعتی نظام کو بہتر اور مضبوط بناتا ہے۔ بیکٹیریا کو ختم کرتا ہے اور بڑھاپے کے اثرات کو کم کرتا ہے۔سفید سیلز کو تیز کرتا ہے۔ کینسر سے بچاتا اور دل کو مضبوط کرتا ہے۔ بلڈ شوگر کے لئے بھی مفید ٹانک ہے۔ جوڑوں، مسلز، ٹیشوز اور مسوڑوں کو مضبوط بناتا ہے۔اس کا استعمال ایڈز کے مریضوں میں قوت مدافعت پیدا رہتا ہے۔
    جلد اور بالوں کی خوبصورتی کے لئے صدیوں سے آزمودہ ٹانک ہے۔الغرض اس کے بے شمار اندرونی اور بیرونی فوائد ہیں۔اطباء اور جدید طبی ماہرین کا اس بات پر اتفاق ہے کہ جراثیم کش اجزاء کی بدولت اگر جل جانے والی جگہ یا جلد کی خارش پر ایلو ویرا لگایا جائے تو جل جانے والی جگہ پر آبلہ نہیں پڑتا اور اسی طرح جلد کی خارش کو دور کرتا ہے۔ چہرے کے کیل مہاسوں پر روزانہ چند ہفتوں تک اس کا گودا نکال کر لگایا جائے تو کچھ ہی عرصے میں کیل، مہاسے ختم ہو جاتے ہیں۔ چہرہ خوبصورت اور جلد صاف و شفاف ہو جائے گی۔ گودا لگانے کا طریقہ یہ ہے کہ پودے سے تھوڑا سا ایلو ویرا کا پتہ توڑ لیں اور گودا چہرے پر لگا کر آدھا گھنٹہ بعد منہ دھو لیں۔ آج کل رنگت نکھارنے والی کریموں، صابن، شیمپو اور شیونگ کریم وغیرہ میں اس کا استعمال عام ہے۔ آپ گھر میں ایک پودا گھیکوار کا رکھیں اور فائدہ اٹھا ئیں۔
    چہرے کی رنگت نکھارنے کے لیے ہفتے میں دو بار گھیکوار کے رس میں تھوڑا سا روغن زیتون اور روغن بادام ملا کر چہرے پر لیپ کریں اور دو گھنٹے بعد چہرہ دھو لیں مستقل کچھ عرصے تک یہ عمل کریں جلد صاف شفاف اور چمکدار ہو جائے گی۔ غسل سے آدھ گھنٹہ قبل گھیکوار کا رس بالوں میں لگائیں تو اس سے خشکی اور سر کی جلد پر ہوجانے والے دانے ختم ہو جاتے ہیں۔ اور اس کے علاوہ بال مضبو ط اور چمکدار ہوجاتے ہیں۔
    اگر کوئی زہریلا کیڑا کاٹ لے تو گھیکوار کے پتے کو کاٹ کر گودے والی جگہ سے متاثرہ حصے پر باندھ لیا جائے تو زہر کا اثر ختم ہو جاتا ہے اور جلد سوزش سے محفوظ رہتی ہے اور زخم بھی نہیں ہوتا۔
    ہاتھوں کے کھردرے پن اور سختی کو دور کرنے کے لیے اور ملائم و خوبصورت کرنے کے لیے یہ طریقہ آزمائیں۔ آدھا کپ گند م کا چوکر لیں اور اس میں ایک کھانے کا چمچ گھیکوار کا عرق شامل کر کے بلینڈر میں ڈال کر بلینڈ کر لیں اور اس آمیزے کو تین منٹ تک ہاتھوں پر مساج کریں اور پھر ہاتھوں کو نیم گرم پانی سے دھو لیں یہ عمل رات کو سوتے وقت کریں تو بہتر رہے گا کیونکہ اس کے بعد آپ پانی میں ہاتھ نہ ڈالیں اگر آپ بھی بد رونق ہا تھو ں کی وجہ سے پریشان ہیں تویہ نسخہ استعمال کر یں چند روز میں ہاتھ ملائم اور خوبصورت ہو جائیں گے۔
    ایلو ویرا زمانہ قدیم سے جدید تک کئی امراض میں قدرتی آفاقی شفا بَخش عامِل کے طور پر مختلف بیماریوں کے علاج میں شفا یابی کے ساتھ استعمال ہو رہا ہے خاص کر السر اور السر کے زخموں کو مُندمِل کرنے کی اسکی مخفی شفا یابی قوتوں کو تحقیق شناسی میں السر کے سوراخوں اور زخموں کو مُندمِل اور تندرست کرنے کی حیرت انگیز صلاحیت ہے یہ ان السروں میں "منہ کا السر٬ حلق کا السر٬ غذائی نالی کا السر٬ معدہ کا السر٬ معدہ میں زخم٬ چھوٹی آنت کا السر٬ بڑی آنت کا السر٬ گیسٹرک السر اوَر کینسر٬ پیپٹیک السر اوَر کینسر٬ سیدھی آنت کا السر٬ مقعد کا السر٬ ورم قولون٬ شگاف مقعدہ یومیو پیتھک علاج میں سب سے پہلے 1864 میں کانسٹنٹائن ایلو ویرا کو بطور دوا ثابت کیا تھا۔ ۔

    نقصانات:
    ایلو ویرا کو کھانے کے طور پر استعمال کے کچھ نقصانات سامنے آئے ہیں وہ بھی اس صورت میں جب کہ اس کا استعمال زیادہ کیا جائے ۔اس کے علاوہ کچھ بیماریوں میں بھی اس کا استعمال نقصان دہ ہے۔

    کچھ لوگوں کو ایلوویرا کھانے سے الرجی ہو جاتی ہے۔چہرے کی سوزش اور سرخ ہونا، سانس کی تکلیف اور دم گھٹنا وغیرہ جن لوگوں کو ایلوویرا کھانے سے ایسی علامات سامنے آئیں وہ فوری طور پر ڈاکٹر سے رجوع کریں اور ایلو ویرا کا استعمال بند کر دیں۔

    ڈائریا اور پیٹ کی تکلیف، شدید قسم کی قبض بھی ایلو ویرا کے زیادہ استعمال سے سامنے آئی ہے۔

    اس کے علاوہ جن لوگوں کو خونی بواسیر اور تھائرائڈ کا مسئلہ ہے وہ بھی ایلو ویرا سے پرہیز کریں، ایلو ویرا کے مسلسل استعمال سے پیشاب سرخ ہونے لگتا ہے اور ڈی ہاڈریشن کا مسئلہ بھی سامنے آیا ہے۔ ایلو ویرا کو انجیکشن کی صورت میں لگوانا سخت نقصان دہ ہے۔اس کے علا وہ حاملہ عورتیں بھی حمل کے دوران اس س سے پرہیز کریں ۔مجموعی طور پر ایلو ویرا ایک مفید پودا ہے۔۔۔۔مگر کچھ صورتوں میں یا کچھ مریضوں کے لئے نقصان دہ ہو سکتا ہے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 3
    • مفید مفید x 3
  2. Asad Mehmood

    Asad Mehmood رکن اردو مجلس

    شمولیت:
    ‏اگست 24, 2015
    پیغامات:
    5
    جزاک الله
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  3. اعجاز علی شاہ

    اعجاز علی شاہ -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏اگست 10, 2007
    پیغامات:
    10,324
    وعلیکم السلام ورحمۃ اللہ وبرکاتہ
    بہت ٹائم بعد پوسٹ لیکن وہ بھی بہت زبردست !
    جزاک اللہ خیرا
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  4. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,161
    جزاک اللہ خیرا۔ بہت مفید۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  5. زبیراحمد

    زبیراحمد -: ماہر :-

    شمولیت:
    ‏اپریل 29, 2009
    پیغامات:
    3,398
    جزاک اللہ خیرا
     
  6. بابر تنویر

    بابر تنویر منتظم

    رکن انتظامیہ

    شمولیت:
    ‏دسمبر 20, 2010
    پیغامات:
    7,203
    جزاک اللہ خيرا
     
  7. رفی

    رفی -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏اگست 8, 2007
    پیغامات:
    12,280
    جزاک اللہ خیرا، بہت عمدہ معلومات!
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  8. سیما آفتاب

    سیما آفتاب ناظمہ

    رکن انتظامیہ

    شمولیت:
    ‏اپریل 3, 2017
    پیغامات:
    454
    جزاک اللہ خیرا

    عمدہ معلومات ۔۔۔ بے شک اللہ نے کوئی بھی چیز بے مصرف نہیِں بنائی
     
    • متفق متفق x 1

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں