اقوال سلف

عبدالرحیم نے 'مَجلِسُ طُلابِ العِلمِ' میں ‏مارچ 24, 2016 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. عبدالرحیم

    عبدالرحیم -: ماہر :-

    شمولیت:
    ‏جنوری 22, 2012
    پیغامات:
    949
    شیخ صالح بن فوزان الفوزان فرماتے ھیں۔۔۔۔۔
    حق بات کا یہ حق ہے کہ اس کی اتباع کی جائے.
    ● مسلک کے لئے عصبیت جائز نہیں.
    ● افراد کے لئے عصبیت جائز نہیں.
    ● اور قبائل کے لئے عصبیت جائز نہیں.
    ✅ ایک مسلمان کا کام یہ ہے کہ حق جہاں کہیں ملے، وہ اس کی اتباع کرتا ہے.
    ○ وہ تعصب نہیں کرتا.
    ○ حق بات کو نہیں چهوڑتا.
    مسلمان تو وہ ہے، اسے جہاں حق مل جائے، اس کے ساتھ رہتا ہے.
    ■ خواہ یہ حق اس کے مسلک میں ہو یا دوسرے کے مسلک میں.
    ■ اس کے امام کے پاس ہو یا دوسرے کے امام کے پاس.
    ■ اس کے قبیلے اور برادری کے ساتھ ہو یا دوسرے کے قبیلے اور برادری کے ساتھ.
    ■ یہاں تک کہ اگر حق اس کے دشمن کے پاس ہو تب بھی وہ اسے اختیار کرتا ہے.
    ↩ کیونکہ حق کی رجوع کرنا.
    باطل پر جم جانے سے بہتر ہے.
    [ إعانة المستفيد (2/115)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 8
    • متفق متفق x 2
    • مفید مفید x 2
    • اعلی اعلی x 1
  2. بابر تنویر

    بابر تنویر منتظم

    شمولیت:
    ‏دسمبر 20, 2010
    پیغامات:
    7,313
    جزاک اللہ خیرا
     
  3. نصر اللہ

    نصر اللہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏دسمبر 19, 2011
    پیغامات:
    1,845
    بارک اللہ فیک.
    اللہ ہمیں ان حقوق کو سمجھ کر عمل کی توفیق دیں..

    Sent from my ALE-L21 using Tapatalk
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 2
  4. ابوعکاشہ

    ابوعکاشہ منتظم

    شمولیت:
    ‏اگست 2, 2007
    پیغامات:
    14,367
    جزاکم اللہ خیرا ، بلاشبہ حق وہی ہے جس کا معیار ایک ہی ہوتا ہے ۔اسےہی قبول کرنا ہے ۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 2
    • متفق متفق x 1
  5. رفی

    رفی -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏اگست 8, 2007
    پیغامات:
    12,448
    جزاک اللہ خیرا
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 2
  6. ام محمد

    ام محمد -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏فروری 1, 2012
    پیغامات:
    3,122
    جزاکم اللہ خیرا
    اللہ تعالی ہمیں ہر حال میں حق کو سننے والا اور حق پر عمل کرنے والا بنائے آمین یا رب العالمین
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 4
  7. عبدالرحیم

    عبدالرحیم -: ماہر :-

    شمولیت:
    ‏جنوری 22, 2012
    پیغامات:
    949
    استاد محترم علامہ شيخ صالح الفوزان نے فرمایا :

    جب کسی کو کہا جائے تم نے صحیح دلیل کے برخلاف بات کہی.
    یا سنت کے خلاف بات کی ہے اور فورا رجوع کرلے اور حق کی اتباع کرے تو جان لو کہ یہ شخص حق کا متلاشی ہے.

    رہا وہ شخص جس سے کیا جائے کہ تم نے صحیح دلیل کے خلاف اور سنت کے خلاف بات کی ہے اور وہ اپنی بات اڑجائے، غصے کا اظہار کرے اور اشتعال میں آجائے تو وہ خواہش نفس اور ہوائے نفس کا بندہ ہے.

    شرح السنة للبربهاري【صـ 56】
    ══════ ❁✿❁ ══════
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 6
    • مفید مفید x 1
  8. انا

    انا -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏اگست 4, 2014
    پیغامات:
    1,400
    لوگوں کی زندگیاں گزر جاتی ہیں ۔لیکن یہ دو جملے سمجھ نہین آتے۔ شاید آ جاتے ہوں لیکن عمل نہیں کر پاتے۔
    اللہ تعالی ہم سب کو صحیح راہ اختیار کرنے کی توفیق عطا فرمائے۔
    ابھی یہ دعا کرتے ہوئے خیال آیا کہ اکثر ہم لوگ اسی طرح ایک دعا مانگتے ہیں سیدھی راہ اختیار کرنے کی ۔سیدھی راہ کا مطلب اتنا سیدھا نہین ہوتا۔ اس میں دائیں بائیں کئی موڑ بھی آ سکتے ہیں ۔ یو ٹرن لینا ہوتو حق بات کے لیے وہ بھی لے لینا چاہیے۔ اپنے اندر لچک رکھنی چاہیے۔
    کل ایک ڈاکیومینٹری دیکھنے کا اتفاق ہوا ۔کسی ایشین ملک کی تھی لیکن لوگ وہاں کے بھی ہمارے جیسے جذباتی ۔ امریکہ کی دشمنی میں عام عوام کو مارنے اور ملکی املاک برباد کرنے میں لگے ہوئے تھے۔
    باطل دین ،دنیا ،مسلک ، دولت یا اپنے نفس کسی کے لیے بھی ہو بہت تباہی لاتا ہے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 3
    • متفق متفق x 1
  9. عبدالرحیم

    عبدالرحیم -: ماہر :-

    شمولیت:
    ‏جنوری 22, 2012
    پیغامات:
    949
    ‏تین سخت ترین کام
    =============
    امام شافعی علیہ الرحمہ کہتے ہیں :
    تین کام سب سے سخت ( مشکل ) ہیں : تنگ دستی کے باوجود سخاوت کرنا ، تنہائی میں پرہیز گاری اختیار کرنا ، اور اس کے سامنے کلمہ حق کہنا جس سے خوف یا کسی چیز کی امید ہو .
    _____________________
    قال الشافعی :
    (( اشد الاعمال ثلاثة : الجود من قلة ، والورع فی خلوة ، و كلمة الحق عند من يرجی و يخاف . ))
    [ المنتظم ١٣٧/١٠ ]
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 3
    • متفق متفق x 2
  10. عبدالرحیم

    عبدالرحیم -: ماہر :-

    شمولیت:
    ‏جنوری 22, 2012
    پیغامات:
    949
    امام حسن بصری ﺭﺣﻤﻪ ﺍﻟﻠﻪ نے فرمایا:
    اے ابن آدم !
    تمہیں تنہا موت آئے گی.
    تم تنہا اٹھائے جاؤ گے.
    تم تنہا اپنے اعمال کا حساب دو گے.
    اے ابن آدم !
    اگر پوری انسانیت نیک و صالح اور اللہ کی مطیع و فرمان ہوجائے.
    اور تم نافرمان بنے رہو
    تو پوری انسانیت کی فرمانبرداری تمہارے کسی کام نہ آئے گی.
    اور اگر پوری انسانیت نافرمان ہو
    اور تم اللہ کی اطاعت پر قائم رہو
    تو پوری انسانیت کی نافرمانی
    تمہیں نقصان نہیں پہنچائے گی.
    اے ابن آدم!
    تمہارا دین تمہارا دین ہے
    یہی تمھارا جسم و جان ہے.
    اگر تمهارا دین سلامت ہے
    تو تمھارا جسم و جان سلامت ہے.


    زﻫﺪ از امام حسن بصری ص 23
    ════════ ❁✿❁ ═══════
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 4
  11. عبدالرحیم

    عبدالرحیم -: ماہر :-

    شمولیت:
    ‏جنوری 22, 2012
    پیغامات:
    949
    ❒ شيخ الإسلام ابن تيميہ رحمہ الله نے فرمایا :

    جس نے اللہ کی عبادت محض اللہ سے محبت کی بنا پر کی تو وہ زندیق ہے.

    اور جس نے خوف کی بنا پر اللہ کی عبادت کی تو وہ خارجی ہے.

    اور جس نے محض رحمت کی امید پر اللہ کی عبادت کی تو وہ مرجئ ہے.

    اور جس نے اللہ کی محبت، خوف اور امید کے ساتھ اللہ کی عبادت کی تو وہی مومن اور موحد ہے.

    مجموع الفتاوى 21/15
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 4
  12. عبدالرحیم

    عبدالرحیم -: ماہر :-

    شمولیت:
    ‏جنوری 22, 2012
    پیغامات:
    949
    علامہ حافظ ابن قيم رحمہ الله نے فرمایا :

    آخرت کی طرف رغبت دنیا کی قناعت کے بغیر ممکن نہیں...

    اور دنیا کی قناعت دو چیزیں کے بغیر ممکن نہیں :

    پہلی یہ کہ :

    دنیا کو حقیر جانے. اس کے لہو و لعب ہونے کو جانے اور اس کے زوال کو سمجھے.
    اور یہ کہ دنیا چند روزہ ہے جس کی جستجو لاحاصل ہے.

    دوسری یہ کہ :

    آخرت پر نظر ہو. اس بات کا یقین ہو کہ وہی جائے قرار اور مستقر ہے. جنت کی نعمتیں ذہن میں تازہ ہوں اور اس بات پر یقین ہو کہ یہ نعمتیں لازوال ہیں.

    جیسا کہ اللہ نے فرمایا :
    { والآخرةُ خيرٌ وأبقى }
    آخرت ہی بہتر اور باقی رہنے والی ہے.

    الفوائد: (94)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 3
  13. عبدالرحیم

    عبدالرحیم -: ماہر :-

    شمولیت:
    ‏جنوری 22, 2012
    پیغامات:
    949
    جادوگردنیا

    ابن الجوزی لكھتے هیں :

    " میرے بھائیو ! دنیا سے بچو , یه هاروت ماروت سے بھی بڑھ كر جادو گر هے ___ هاروت ماروت تو میاں بیوی میں جدائی ڈالتے تھے یه دنیا الله اور بندے كے درمیان جدائی ڈالتی هے _______ "

    ______________________

    قال ابن الجوزي رحمه الله :

    (( أخواني احذروا الدنيا ، فإنها أسحر من هاروت وماروت ، ذانك يفرقان بين المرء وزوجه ، وهذه تفرق بين العبد وربه . ))

    [ في المدهش 1/386 ]
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 3
  14. عبدالرحیم

    عبدالرحیم -: ماہر :-

    شمولیت:
    ‏جنوری 22, 2012
    پیغامات:
    949
    بدعت حسنه كوئی نهیں
    ===============
    عبد الله بن عمر رضی الله عنه فرماتے هیں :

    " هر بدعت گمراهی هے اگرچه لوگ اسے اچھا خیال كریں ___ "

    _________________
    قال ابن عمر :

    (( كل بدعۃ ضلالۃ و ان رآها الناس حسنۃ))

    [ السنۃ للمروزی , رقم : 68 ]
    ( اسناده صحیح )
    ………………………………………

    امام مالك فرماتے هیں :
    " جس نے اسلام میں كوئی بدعت ایجاد كی , اس كو حسنه بھی خیال كیا تو یقینا اس نے گمان كیا كه محمد صلی الله علیه و سلم نے رسالت سے خیانت كی هے ________ "

    _______________________

    قال الإمام مالك رحمه الله :

    (( من ابتدع في الإسلام بدعة يراها حسنة؛ فقد زعم أن محمدا ﷺ خان الرسالة . ))

    [ الاعتصام للشاطبي:١/٦٤-٦٥ ]
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 2
  15. عبدالرحیم

    عبدالرحیم -: ماہر :-

    شمولیت:
    ‏جنوری 22, 2012
    پیغامات:
    949
    مالك بن دینار كهتے هیں :

    " آدمی كے برا هونے كے لیے یهی كافی ہے كہ وه خود نیك نہ هو اور نیك لوگوں پر طعن كرے ____ "

    ______________________

    قال مالك بن دينار رحمه الله :-

    (( كفى بالمرء شراً أن لا يكون صالحاً وهو يقع في الصالحين ))

    [ شعب الإيمان للبيهقي : 5/316 ]
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  16. عبدالرحیم

    عبدالرحیم -: ماہر :-

    شمولیت:
    ‏جنوری 22, 2012
    پیغامات:
    949
    رجب کے من گھڑت فضائل

    ابن تيميه کهتے هیں :

    " رجب کے روزوں سے متعلق تمام احادیث ضعیف بلکه من گھڑت هیں،، اهل علم ان میں سے کسی پر اعتماد نهیں کرتے___ اور یه احادیث ان میں سے نهیں جن کو فضائل میں بیان کیا جاتا هے بلکه یه من گھڑت اور جھوٹی احادیث هیں ،،،،،، "

    ابن قیم کهتے هیں :

    " هر وه حدیث جو رجب کے روزوں یا اس کی کسی رات میں نماز پڑهنے سے متعلق هے وه جھوٹی اور من گھڑت هے____ "

    حافظ ابن حجر کهتے هیں :

    " رجب کی فضیلت، اس کا روزه، اس کے مخصوص کسی دن کا روزه اور اس کی کسی مخصوص رات میں قیام کی کوئی ایسی حدیث نهیں جس سے دلیل پکڑی جا سکے ___ " ( سب جھوٹی احادیث هیں )

    ➖➖➖➖➖

    قال ابن تيمية - رحمه الله - :

    « وأما صوم رجب بخصوصه فأحاديثه كلها ضعيفة بل موضوعة لا يعتمد أهل العلم على شيء منها ، وليست من الضعيف الذي يروى في الفضائل بل عامتها من الموضوعات المكذوبات . »

    [ مجموع_الفتاوى ٢٩٠ / ٢٥ ]

    قال ابن القيم - رحمه الله - :

    « كل حديث في ذكر صوم رجب وصلاة بعض الليالي فيه فهو كذب مفترى . »

    [ المنار المنيف ص : ٩٦ ]

    ️قال الحافظ ابن حجر رحمه الله :

    " لم يرد في فضل شهر رجب، ولا في صيامه ولا صيام شيء منه معين، ولا في قيام ليلة مخصوصة فيه حديث صحيح يصلح للحجة ".

    [ تبيين العجب، ص: 11 ]
     
  17. بابر تنویر

    بابر تنویر منتظم

    شمولیت:
    ‏دسمبر 20, 2010
    پیغامات:
    7,313
    جزاک اللہ خیرا
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  18. عبدالرحیم

    عبدالرحیم -: ماہر :-

    شمولیت:
    ‏جنوری 22, 2012
    پیغامات:
    949
    حضرت عوف اعرابی رحمه الله نے کہا :

    ایک آدمی امام حسن بصری رحمہ الله سے کہا کہ مجھے موت سے خوف ہے!

    فرمایا :
    یہ اس لئے ہے کہ تم نے اپنا مال اپنے پاس محفوظ کر رکھا ہے.
    اگر تم اسے آگے بھیجتے تو اس کے پاس جانے سے تمہیں مسرت ہوتی.

    المجالسة وجواهر العلم : 1569
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 2
  19. عبدالرحیم

    عبدالرحیم -: ماہر :-

    شمولیت:
    ‏جنوری 22, 2012
    پیغامات:
    949
    ☄☄مرده كون
    ========
    ابن جوزی كهتے هیں :

    " میت وه نهیں جس كی روح پرواز كر گئی , میت تو وه هے جو سمجھتا نهیں كه اس كے رب كے اس پر كیا حقوق هیں ___ "

    __________________________

    قال ابن الجوزي :

    ليس الميت من خرجت روحه من جنبيه وإنما الميت من لا يفقه ماذا لربه من الحقوق عليه .

    [التذكرة ١٨]
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
    • متفق متفق x 1
  20. عبدالرحیم

    عبدالرحیم -: ماہر :-

    شمولیت:
    ‏جنوری 22, 2012
    پیغامات:
    949
    علامہ حافظ ابن قيم - رحمہ الله نے فرمایا :

    ⬅️ لوگ جہنم میں تین دروازوں سے داخل ہوں گے.

    شبہات کا دروازہ جس نے اللہ کے دین میں شک پیدا کردیا.

    شہوات کا دروازہ جس نے فرمانبرداری کے مقابلے میں ہوائے نفس پیدا کیا.

    غصہ اور انا کا دروازہ جس نے مخلوق پر زیادتی کو پیدا کیا.

    كتاب الفوائد ص 58
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 5

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں