کتب بینی کا ذوق کیسے پیدا ہو ؟

ابوعکاشہ نے 'مطالعہ' میں ‏مئی 18, 2016 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. ابوعکاشہ

    ابوعکاشہ منتظم

    شمولیت:
    ‏اگست 2, 2007
    پیغامات:
    15,440
    جی یہ تو کتابوں سے تعلق قائم رکھنا ہے ۔ کتاب ختم کرنے کے لئے کوئی بھی طریقہ اختیار کیا جاسکتا ہے ۔عناوین یا ابواب میں بھی تقسیم کیا جاسکتا ہے ۔
     
  2. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,485
    مائیکروسافٹ ایج میں سیٹنگز میں جا کر کتاب پڑھنے کے لیے اچھی تبدیلیاں کی جا سکتی ہیں۔ جس کے بعد یہ آپ کی پسندیدہ کتاب کو فیورٹس میں شامل کر لیتا ہے اور جس صفحے پر مطالعہ رکا تھا اس کو بک مارک بھی کر لیتا ہے۔ اگلی مرتبہ ایک کلک سے آپ وہیں سے مطالعہ شروع کر سکتے ہیں۔
    اگر آپ ایج کو براؤزر کے طور پر استعمال کر رہے ہوں تو نیٹ سے پہلے آپ کی گزشتہ مطالعہ کردہ کتاب کھلتی ہے۔ جس سے کتاب بینی کی مفید عادت پڑنے کے امکانات بڑھ جاتے ہیں۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  3. ابوعکاشہ

    ابوعکاشہ منتظم

    شمولیت:
    ‏اگست 2, 2007
    پیغامات:
    15,440
    Stages of Reader

    FB_IMG_1504543223001-1.jpg
     
    • مفید مفید x 1
  4. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,485
    جن کو انٹرنیٹ مطالعے میں رکاوٹ لگتا ہے ان کے لیے یو ٹیوب بکس موجود ہے۔ فری وڈیو بکس ڈاؤن لوڈ کریں اور گھر سے منزل تک پہنچنے تک سنتے سنتے کتاب ختم کر لیں ۔
    اسلام ہاؤس ڈاٹ کام پر انگریزی، عربی اردو سمیت کئی زبانوں میں آڈیو بکس موجود ہیں۔اس سمسٹر اردو کی دس سے زائد کتابیں مفت طالبات کے لیے حاصل کیں اور بغیر پرنٹ کیے پڑھیں کیوں کہ میری کلاس میں فون پر کوئی پابندی نہیں۔
     
  5. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,485
    جنہوں نے مطالعہ کرنا ہے وہ انٹرنیٹ پر بھی پڑھتے ہیں۔ ایک آسان طریقہ یہ ہے کہ کلاؤڈ فولڈر میں اپنے کام کی کتابیں ڈال کر رکھ لیں۔ جہاں وقت ملے کھول کر مطالعہ جاری رکھیں۔
    روایتی لائبریری سے اب میرا دم گھٹتا ہے کیوں کہ اپنی لائبریری پاس ہوتی ہے۔ لائبریرین کی تنک مزاجی برداشت کرنے کی ضرورت نہیں رہی۔
     
  6. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,485
    [QUOTE="بابر تنویر, post: 491625, member: 8"
    شوق کیسے پیدا کیا جاۓ؟ مطالعہ کرنے کے لیے دن یا رات کا کوئ وقت مقرر کر لیجیے۔ میرے خیال میں سب سے بہتر وقت سونے سے پہلے کا ہے۔ سونے سے آدھا گھنٹہ پہلے اپنے تمام مصروفیات سے فارغ جائیں۔ اور پھر نیند آنے تک کتاب کا مطالعہ کر لیجیے۔ اور یہ مستقل مزاجی سے کیجیے۔ شروع مین شائد کچھ مشکل ہو لیکن جب عادت ہوگئ تو آپ کو مطالعہ کے بغیر نیند ہی نہیں آۓ گی۔[/QUOTE]
    رات کو کتاب سن کر سونا ہو تو آج کل کافی ایپس اور ویب سائٹس مفت آڈیو بکس دے رہی ہیں۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 3
  7. ابو حسن

    ابو حسن محسن

    شمولیت:
    ‏جنوری 21, 2018
    پیغامات:
    445
    کتاب چاہے اوراق کی صورت میں ہو یا وہ کمپیوٹر،فون میں ہو اصل مقصد اس سے مستفید ہونا ہے اور علم نافعہ حاصل کرنا،
    الحمدللہ کتب بینی کا ایسا ذوق ہے کہ بیان نہیں کرسکتا (اللہ تعالی ریا کاری سے محفوظ فرمائے) صرف یہی نہیں والد صاحب کی طرف سےکتاب کا ادب ملحوظ رکھنا ورثہ میں ملا ،صفحہ موڑنا مراجع کیلئے، کتاب میں کہیں قلم سے نشان لگانا یا جیسے مرضی کتاب کو پھینک دینا اس پر سخت تنبیہ کی جاتی اور ان سب احتیاطوں سے حاصل یہ ہوا کہ کتاب صاف ستھری و بہترین حالت میں رہتی بلکہ سعودیہ میں گزرے ایام میں ایک صاحب ساتھ والے کمرے میں رہتے تھے اور انکا کاروبار پاکستانی اخبار ،رسائل بیچنا تھا تو انسے رسائل لے کر مطالعہ کرتا ایک دن پوچھنے لگے کہ واقعی میں آپ یہ پڑھتے بھی ہو یا صرف دو تین دن اپنے پاس رکھنے کے بعد مجھے ویسے ہی لوٹا دیتے ہو ؟ وجہ ایک تو پڑھنے کی رفتار اور دوسرا صفحات کو پلٹتے ہوئے احتیاط کو بروے کار لانا ہوتا۔

    اپنا تجربہ بیان کررہا ہوں پہلی مرتبہ کتاب صرف پڑھتا ہوں ،دوسری مرتبہ سمجھنے کیلئے اور تیسری مرتبہ یاد رکھنے کیلئے ،اور جتنے زیادہ صفحات پر کتاب مشتمل ہوتی ہے اتنا زیادہ سرور ملتا ہے مطالعہ کرتے ہوئے ،ابھی بھی ایسا ہوتا ہے کہ اگر کوئی ونڈو کھلی ہوئی ہے اور کچھ بھی کام وغیرہ کررہا ہوں لیکن ساتھ میں "پی ڈی ایف " میں کوئی نہ کوئی کتاب زیر مطالعہ رہتی ہے اور یہی کتاب فون میں بھی ہوتی ہے جب کام پر ہوں تو وہاں فارغ وقت میں وہیں سے مطالعہ جاری رہتا ہے ،آپ کے پاس فون میں سہولت موجود ہے تو تجربہ کرکے دیکھ لیں ،امید ہے ان شاءاللہ اس سے فائدہ ہوگا،
     
    Last edited: ‏اپریل 23, 2018
    • پسندیدہ پسندیدہ x 3
    • مفید مفید x 1
  8. ابوعکاشہ

    ابوعکاشہ منتظم

    شمولیت:
    ‏اگست 2, 2007
    پیغامات:
    15,440
    ماشاءاللہ . اللہ توفیق دے

    مطالعہ سے کیا ملتا ہے ؟
    *۔۔۔مطالعہ انسان کے لئے اخلاق کا معیار ہے۔(علامہ اقبالؒ )
    *۔۔۔ بری صحبت سے تنہائی اچھی ہے، لیکن تنہائی سے پریشان ہو جانے کا اندیشہ ہے، اس لئے اچھی کتابوں کے مطالعے کی ضرورت ہے۔(امام غزالیؒ )
    *۔۔۔ تیل کے لئے پیسہ نہ ہونے کی وجہ سے میں رات کو چوکیداروں کی قندیلوں کے پاس کھڑے ہوکر کتاب کا مطالعہ کرتا تھا۔
    (حکیم ابو نصر فارابی ؒ )
    *۔۔۔ورزش سے جسم مضبوط ہوتا ہے اورمطالعے کی دماغ کے لئے وہی اہمیت ہے جو ورزش کی جسم کے لئے۔ (ایڈیسن)
    *۔۔۔ مطالعہ سے انسان کی تکمیل ہوتی ہے۔ (بیکن)
    *۔۔۔مطالعے کی عادت اختیار کرلینے کا مطلب یہ ہے کہ آپ نے گویا دنیا جہاں کے دکھوں سے بچنے کے لئے ایک محفوظ پناہ گاہ تیار کرلی ہے۔
    (سمر سٹ ماہم)
    *۔۔۔ تین دن بغیر مطالعہ گزار لینے کے بعد چوتھے روز گفتگو میں پھیکا پن آجاتا ہے۔
    (چینی ضرب المثل)
    *۔۔۔انسان قدرتی مناظر اورکتابوں کے مطالعے سے بہت کچھ سیکھ سکتا ہے۔ (سسرو)
    *۔۔۔ مطالعے کی بدولت ایک طرف تمہاری معلومات میں اضافہ ہوگا اوردوسری طرف تمہاری شخصیت دلچسپ بن جائے گی۔ (وائٹی)
    *۔۔۔دماغ کے لئے مطالعے کی وہی اہمیت ہے جو کنول کے لئے پانی کی۔ (تلسی داس)
    *۔۔۔مطالعہ کسی سے اختلاف کرنے یا فصیح زبان میں گفتگو کرنے کی غرض سے نہ کرو بلکہ ’’تولنے‘‘ اور’’سوچنے‘‘کی خاطر کرو۔ (بیکن)
    *۔۔۔جس طرح کئی قسم کے بیج کی کاشت کرنے سے زمین زرخیز ہو جاتی ہے، اسی طرح مختلف عنوانات پر کتابوں اوررسالوں وغیرہ کا مطالعہ انسان کے دماغ کو منور بنادیتا ہے۔ (ملٹن)
    *۔۔۔ جو نوجوان ایمانداری سے کچھ وقت مطالعے میں صرف کرتا ہے، تو اسے اپنے نتائج کے بارے میں بالکل متفکر نہ ہونا چاہئے۔ ( ولیم جیمز)
    *۔۔۔ مطالعے سے خلوت میں خوشی، تقریر میں زیبائش، ترتیب وتدوین میں استعداد اور تجربے میں وسعت پیدا ہوتی ہے۔ (بیکن)
    *۔۔۔ وہ شخص نہایت ہی خوش نصیب ہے جس کو مطالعہ کا شوق ہے، لیکن جو فحش کتابوں کا مطالعہ کرتا ہے اس سے وہ شخص اچھا ہے جس کو مطالعہ کا شوق نہیں ( میکالے)
    *۔۔۔ مطالعہ ذہن کو جلا دینے کے لئے اوراس کی ترقی کے لئے ضروری ہے۔ (شیلے)
    *۔۔۔ دنیا میں ایک باعزت اورذی علم قوم بننے کے لئے مطالعہ ضروری ہے مطالعہ میں جو ہر انسانی کو اجاگر کرنے کا راز مضمر ہے۔ (گاندھی)
    منقول..
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 2
  9. رفی

    رفی -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏اگست 8, 2007
    پیغامات:
    12,450
    ہمیں فخر ہے کہ ہم اس امت سے تعلق رکھتے ہیں جس کی بنیاد ہی "اقراء" کا حکم دے کر رکھی گئی۔ پڑھیں اس کائنات کی ایک ایک چیز کو پڑھیں تاکہ آپ کی سوچوں کے بند در وا ہوں اور آپ اپنے آپ کو اور اپنے رب کو پہچان سکیں اور اسکی بندگی کا حق ادا کر سکیں۔ (رفی)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 2
    • متفق متفق x 1
  10. ابوعکاشہ

    ابوعکاشہ منتظم

    شمولیت:
    ‏اگست 2, 2007
    پیغامات:
    15,440

    اردو ترجمہ نہیں کر سکا.

    12 Pieces of Advice for Reading a Book Every Week.

    1) Choose a medium sized book. 2) Choose a book which is
    important to you.
    3) Divide the number of pages in the book by the number of days in a week... Roughly 40 pages (a day) for 250-300 page book.
    4) Read the daily amount early in the day.
    5) Make reading a routine and stick to it.
    6) Take advantage of every minute of your day.
    7) Stop reading a book if it is boring or difficult and choose another book. Resolve to finish the book by the end of the week. 9) Carry the book with you everywhere you go.
    10) Listen to audio books.
    11) Download ebooks.
    12) Establish which book you want to read when you finish the current one.

    FB_IMG_1524456004621.jpg
     
  11. ابوعکاشہ

    ابوعکاشہ منتظم

    شمولیت:
    ‏اگست 2, 2007
    پیغامات:
    15,440
    مطالعے کی عادت کیسے ڈالیں؟ چودہ معاون طریقے

    ”مطالعے کی عادت بنانااپنے لیے زندگی کی تمام مشکلات اور غم وفکر سے دورایک محفوظ پناہ گاہ تعمیر کرناہے“۔(سمرسٹ ماہم)
    معمول کی زندگی میں بہت سے لوگ آئے دن اپنے لیے کوئی نہ کوئی ہدف مقررکرتے رہتے ہیں،یہ الگ بات ہے کہ وہ اس ہدف کے تئیں کتنے سنجیدہ ہوتے اور اگر سنجیدہ ہوتے ہیں،تو وہاں تک پہنچ پاتے ہیں یانہیں۔دیگر اہداف کی طرح بہت سے لوگ زیادہ سے زیادہ مطالعہ کرنے کا بھی ہدف بناتے ہیں اور یہ ایک سچائی ہے کہ ایک بہترین کتاب بڑی حد تک اطمینان بخش ہوسکتی ہے،وہ آپ کو آپ کی روزمرہ پہنچ سے بہت دور کی باتیں اور چیزیں سکھاسکتی ہے،آپ کے سامنے ماضی قریب یا بعید کی ایسی شخصیات کو لاکھڑا کرسکتی ہے،جنھیں آپ اپنے پاس، اپنے قریب محسوس کریں گے۔
    سب سے پہلے ہمیں یہ اچھی طرح سمجھناچاہیے کہ اگرآپ کے پاس کوئی اچھی کتاب (جوآپ کو بھی اچھی لگتی ہو)دستیاب ہے، تواسے پڑھنے کا عمل نہایت ہی لطف انگیزاور مزے دار ہوتاہے؛لیکن اگر آپ کوئی بیکارسی،بورنگ یا بہت مشکل کتاب لے کر بیٹھے ہیں،تواس کا مطلب یہ ہے کہ آپ بس ایک معمول پورا کررہے ہیں۔اگر لگاتار کئی دن تک آپ کو اسی قسم کی صورتِ حال کا سامنا رہتا ہے،توبہتر یہ ہے کہ آپ کتاب بینی کا چکر چھوڑیں اور کسی ایسے کام میں لگیں،جو آپ واقعی کرنا چاہتے ہیں اورآپ کو اس کام سے محبت ہے۔اگر معاملہ اس کے برعکس ہے،تو پھر آپ اپنے اندر مطالعے کی عادت کوراسخ اور پختہ کرنے کے لیے درجِ ذیل طریقوں پر عمل کریں:
    1-وقت متعین کریں:
    آپ کے پاس روزانہ مختلف اوقات میں کم سے کم ایسے پانچ یا دس منٹ ہونے چاہئیں،جن میں آپ مطالعہ کرسکیں۔ آپ کو اس متعینہ وقت میں روزانہ ہر حال میں مطالعہ کرنا ہے۔مثال کے طورپر آپ اگر اکیلے کھانا کھارہے ہوں،توناشتے، دن کے کھانے یا رات کے کھانے کے دوران مطالعے کا معمول بنالیں،اسی طرح اگر آپ سفر کے دوران یا سونے سے پہلے بھی پڑھنے کا معمول بنالیں،تو اس طرح آپ کے پاس مطالعے کے لیے دن بھر میں چالیس یا پچاس منٹ ہوں گے۔اس طرح ایک بہترین شروعات ہوسکتی ہے،پھر روز بروز خود ہی اس میں تیزی بھی آتی جائے گی،مگر آپ اس سے بھی زیادہ کرسکتے ہیں۔
    2-ہمیشہ اپنے ساتھ ایک کتاب رکھیں:
    آپ جہاں بھی جائیں،اپنے ساتھ ایک کتاب ضرور رکھیں۔میں جب بھی گھر سے نکلتاہوں،تو یہ اچھی طرح چیک کرتاہوں کہ میرے پاس میرا ڈرائیونگ لائسنس، چابی اور کم سے کم ایک کتاب ہے یانہیں۔کارمیں بھی کتاب میرے ساتھ رہتی ہے،آفس میں بھی،کسی سے ملنے جاؤں توبھی؛بلکہ جہاں بھی جاتاہوں تو کتاب ضرور ساتھ لے جاتا ہوں،الایہ کہ ایسی جگہ جاؤں،جہاں کتاب پڑھنا قطعی مشکل ہوتا ہے۔اگر آپ کہیں گئے اور وہاں کسی کا انتظار کرنا پڑرہاہے،تو آپ کے پاس وقت ہے،اتنے وقت میں آپ کتاب نکالیں اور پڑھنا شروع کردیں،یہ انتظار کے لمحات گزارنے کا سب سے بہتر طریقہ ہے۔
    3-کتابوں کی ایک فہرست بنالیں:
    آپ جن کتابوں کو پڑھنا چاہتے ہیں،ان کی ایک فہرست بنالیں۔اس فہرست کو آپ کسی میگزین،ڈائری، موبائل، ٹیبلیٹ یا لیپ ٹاپ وغیرہ کے ہوم پیج پر رکھ سکتے ہیں۔پھر جب بھی آپ کو کسی اچھی کتاب کے بارے میں پتا لگے،تو اس کانام بھی اپنی فہرست میں شامل کرلیجیے،فہرست رکنی نہیں چاہیے،جب اس میں سے کوئی کتاب پڑھ لیں،تو اسے نشان زد کردیں۔
    4-ٹکنالوجی کا استعمال:
    اپنی کتابوں کی فہرست کے لیے جی میل کا استعمال کریں اور جب بھی کسی اچھی کتاب کے بارے میں سنیں،تو اس کا ایڈریس میل کردیں۔اب آپ کا ای میل ہی آپ کی ریڈنگ لسٹ ہوگا۔جب آپ ان میں سے کوئی کتاب پڑھ لیں،تو اسے Done کردیں، اگر آپ چاہیں تو متعلقہ کتاب کے تعلق سے اپنا تبصرہ بھی اسی میسج کو رپلائے کرسکتے ہیں، اس طرح آپ کا Gmail accountآپ کا مطالعہ رجسٹر بھی ہوجائے گا۔
    5-پرسکون جگہ تلاش کریں:
    گھر میں کوئی ایسی جگہ تلاش کریں،جہاں آپ اطمینان کے ساتھ کرسی پر بیٹھ کربغیر کسی کی دخل اندازی کے کتاب کا مطالعہ کرسکیں۔عام حالات میں لیٹ کر نہیں پڑھنا چاہیے،الایہ کہ آپ سونے جارہے ہوں۔آپ کے آس پاس ٹی وی یا کمپیوٹر نہ ہو کہ آپ کی توجہ بٹ جائے، گانے کی آواز، گھر کے لوگوں یارفقاے کمرہ کا شوروشغب بھی نہ ہو۔اگر آپ کو ایسی جگہ میسر نہ ہو،تو پڑھنے کے لیے ایسی جگہ بنانے کی تدبیر کیجیے۔
    6-ٹی وی/انٹرنیٹ کا استعمال کم کریں:
    اگر آپ واقعی زیادہ مطالعہ کرنا چاہتے ہیں،تو ٹی وی اور انٹرنیٹ کا استعمال کم کردیجیے،یہ بہت سے لوگوں کے لیے مشکل ہوسکتا ہے،مگر یہ بھی حقیقت ہے کہ ہر وہ منٹ جو آپ ٹی وی یا انٹر نیٹ سے بچائیں گے،وہ پڑھنے میں استعمال ہوسکتا اور اس طرح آپ کے مطالعے کا مجموعی دورانیہ کئی گھنٹے بڑھ سکتا ہے۔
    7-بچے کے سامنے پڑھیں:
    اگر آپ صاحبِ اولاد ہیں،تو آپ کو ضروربالضرور ان کے سامنے پڑھنا چاہیے۔اگر آپ بچوں میں ابھی سے پڑھنے کی عادت ڈالیں گے،تویقینی طورپر وہ بڑے ہوکر پڑھنے والے بنیں گے اور یہ عادت ان کی کامیاب زندگی کا سبب بنے گی۔بچوں سے متعلق کچھ اچھی کتابیں منتخب کریں اور انھیں پڑھ کر سنائیں۔اس طرح آپ خود اپنی مطالعے کی عادت کو بھی بہتر بنائیں گے اور اپنے بچوں کے ساتھ کچھ بہتر وقت بھی گزار سکیں گے۔
    8-ایک رجسٹر رکھیں:
    کتابوں کی فہرست کی طرح آپ کے پاس ایک رجسٹر بھی ہونا چاہیے، جس میں صرف کتاب اورمصنف کانام نہ ہو؛بلکہ آپ نے کب مطالعہ شروع کیا اور کب ختم کیا،وہ تاریخ بھی اس رجسٹر میں درج کرنے کی کوشش کریں۔بہتر یہ بھی ہے کہ ہر کتاب کو پڑھنے کے بعد اس کے متعلق آپ کی کیارائے ہے،وہ بھی اس رجسٹر میں لکھیں۔اگر ایسا کرتے ہیں،تو چند ماہ بعد جب آپ اس رجسٹر کو دیکھیں گے اوراس میں مذکور مطالعہ کردہ کتابوں،مصنفوں کے نام اور ان کتابوں سے متعلق اپنے تاثرات دیکھیں گے،تو ذہنی و قلبی طورپرآپ کو ایک مخصوص قسم کی خوشی و مسرت حاصل ہوگی۔
    9-مستعمل کتابوں کی دکان پر جائیں:
    میری سب سے پسندیدہ وہ جگہ ہے،جہاں رعایت کے ساتھ کتابیں ملتی ہیں،میں اپنی پرانی کتابیں وہاں چھوڑ دیتاہوں اور وہاں سے بہت ہی کم قیمت پر بہت سی کتابیں حاصل کرلیتا ہوں۔میں ایک درجن یا اس سے زیادہ کتابوں پرعموماً صرف ایک ڈالر خرچ کرتا ہوں،اس طرح کم خرچ میں زیادہ کتابیں پڑھ لیتاہوں۔وہاں بعض دفعہ خیرات کی ہوئی نئی کتابیں بھی مل جاتی ہیں،پھر مزا آجاتاہے؛لہذا آپ کو مستعمل کتابوں کے سٹور کا چکر پابندی سے لگانا چاہیے۔
    10-ہفتے میں کم سے کم ایک دن لائبریری جائیں:
    مستعمل کتابوں کی دکان پرجانے سے بھی سستاسودایہ ہے کہ آپ ہفتے میں ایک دن لائبریری کا چکر لگالیں۔
    11-مطالعے کو پرلطف بنائیں:
    پڑھنے کے لیے آپ دن بھر کا اپنا سب سے پسندیدہ وقت مختص کریں، مطالعے کے دوران چائے یا کافی یا کوئی اور ہلکی پھلکی کھانے پینے کی چیز ساتھ رکھیں۔اطمینان سے کرسی پر بیٹھ کر پڑھیں۔طلوعِ آفتاب یا غروبِ آفتاب کے وقت یاBeach پربیٹھ کرپڑھنے کا الگ ہی مزاہے۔
    12-بلاگ لکھیں:
    آج کل کسی بھی کام کی عادت بنانے کا ایک بہترین طریقہ یہ ہے کہ اسے اپنے بلاگ پر درج کریں۔اگر آپ کے پاس بلاگ نہیں ہے،تو بنائیں،مفت میں بن جاتا ہے۔آپ کے جاننے والے یا فیملی میں کتابوں سے دلچسپی رکھنے والے لوگ بھی اسے دیکھیں گے اور آپ کو کتابوں کے سلسلے میں اچھا مشورہ بھی دے سکتے ہیں۔اس طرح آپ کے اندر اپنے مقصد کے تئیں احساسِ ذمے داری پیدا ہوجائے گا۔
    13-ایک اعلیٰ ہدف بنائیں:
    اپنے دل میں سوچ لیں کہ سال بھر میں اتنی(مثلاً پچاس یا سو)کتابیں پڑھنی ہیں،پھر اس ٹارگیٹ تک پہنچنے کی تدبیر کریں۔البتہ یہ ضروری ہے کہ پڑھنے میں آپ کو ذہنی سکون مل رہاہو اور مزا آرہاہو، بوجھ یا روٹین سمجھ کر مطالعہ کرنا لاحاصل ہے۔
    14-ایک دن یاایک گھنٹہ برائے مطالعہ مختص کریں:
    اگر آپ شام کے وقت ٹی وی یا انٹرنیٹ کو آف کردیں،تو آپ کے پاس کم سے کم ایک گھنٹہ ایسا ضرور ہوگا،جس میں آپ؛بلکہ آپ کے تمام گھر والے ہر رات مطالعہ کرسکتے ہیں۔آپ ہفتے میں کسی ایک دن کوبھی عملی طورپر صرف پڑھنے کے لیے خاص کرسکتے ہیں،یہ نہایت ہی مزے دار عمل ہوگا۔

    تحریر:Leo Babauta
    ترجمہ:نایاب حسن قاسمی
    (مضمون نگارانگریزی کے معروف بلاگراورZen Habitsکے بانی ہیں)
     
Loading...

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں