پرنٹرکہانی میرے کی بورڈ کی زبانی

اعجاز علی شاہ نے 'آئی ٹی کی دنیا' میں ‏اکتوبر، 10, 2016 کو نیا موضوع شروع کیا

Tags:
  1. اعجاز علی شاہ

    اعجاز علی شاہ -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏اگست 10, 2007
    پیغامات:
    10,302
    قصہ یوں ہوا کہ ماسٹر تھیسز کی سافٹ کاپی اپنی ڈیفنس کمیٹی کے پروفیسروں کو بھیجنے کے بعد مطالبہ ہوا کہ جناب آپ نے ہارڈ کلر کاپی اچھی کوالٹی میں بھی چار عدد دینی ہے !
    میری تھیسز 96 صفحات پر مشتمل ہے اور میرے پاس گھر میں بلیک لیزر پرنٹر تھا اب اس کیلئے مجھے سٹوڈنٹس سروس سینٹرز کے چکر لگانے پڑ گئے اور ایک دن میں یہ سارا کام کرنا تھا۔
    گھر کے قریب ایک سینٹر گیا تو بتایا کہ دو ریال کا ایک پیج بہرحال پھر ڈیڑھ ریال پر آگیا اور حساب لگایا تو قیمت 576 ریال بنتی تھی۔
    پھر گھر سے دور گیا اور دو تین جگہ پتہ کیا وہی ریٹ !
    اس کا مجھے ایک ہی حل نظر آیا کہ کیوں نہ کمپیوٹر مارکیٹ میں کلر لیزر پرنٹر کا پتہ چلایا جائے کیوں کہ فائنل کاپی کیلئے مجھے پھر سے تھیسز کے سات سے دس عدد تک ہارڈ کاپیز پرنٹ کرنی ہیں لہذا آگے کا سوچنا چاہیے۔
    مارکیٹ میں ایک لیزر پرنٹر کا پتہ کیا جو 600 ریال میں دستیاب تھا اور اس میں چار لیزر ٹونر لگتی تھی ، ایک ٹونر 1000 تک پیجز پرنٹ کرسکتا تھا ! کارٹریج سیٹ کی قیمت 600 ریال تک !
    c02933139.png
    بہرحال دوسری دکان پر گیا اور ایک پرنٹر نظر آیا جو اوپر پرنٹر سے ایک سال پرانا تھا لیکن اس سے زیادہ تیز اور زیادہ پیجز پرنٹ کرنے والا تھا وہ 1800 پیجز پرنٹ کرتا یعنی ایک ٹونر سے۔ قیمت اس کی 650 ریال تھی اور کارٹریج سیٹ 700 ریال تک !
    c03102700.png
    ابو کو فون کرکے ساری کہانی سنائی کہ اگر میں باہر سے پرنٹ کراوں تو پھر ایک پرنٹر کے پیسے تو خرچ ہوں گے اس لئے اچھا ہے کہ پرنٹر ہی لے آوں۔ ابو راضی ہوگئے اور ہم پرنٹر اٹھا کر لے آئیں۔

    اس پرنٹر کے ساتھ جو اپنے کارٹریج تھے ایک کارٹریج 700 پرنٹ کرسکتا ہے۔
    خیر گھر آکر تھیسز پرنٹ پر لگائی اور ایک گھنٹے میں 400 کے قریب ہائی کوالٹی پیجز پرنٹ ہوئے، اس کے بعد باہر سے سلک کروا کر ٹینشن دور !

    جب کارٹریج کا سٹیٹس دیکھا تو حیران ہوا کہ سوائے بلیک کے باقی میں 80 فیصد پاوڈر باقی ہے !جو آگے فائنل کاپی کیلئے کام آسکتے ہیں۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 4
Loading...

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں