حدیث: جس نے میری امت تک کوئی ایک بات پہنچائی" کی تحقیق

مقبول احمد سلفی نے 'ضعیف اور موضوع احادیث' میں ‏فروری 22, 2017 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. مقبول احمد سلفی

    مقبول احمد سلفی ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏اگست 11, 2015
    پیغامات:
    613
    حلیہ الاولیا کے حوالے سے یہ ایک حدیث باسند ومتن پیش ہے جس کا یہاں حکم بتلانا مقصود ہے۔

    حَدَّثَنَا أَبِي , ثنا أَحْمَدُ بْنُ جَعْفَرٍ , ثنا مُحَمَّدُ بْنُ عَبْدِ اللَّهِ , حَدَّثَنِي مُحَمَّدُ بْنُ إِبْرَاهِيمَ , ثنا أَبِي , ثنا عَبْدُ الرَّحِيمِ بْنُ حَبِيبٍ , عَنْ إِسْمَاعِيلَ بْنِ يَحْيَى التَّيْمِيِّ , عَنْ سُفْيَانَ , عَنْ لَيْثٍ , عَنْ طَاوسٍ , عَنِ ابْنِ عَبَّاسٍ قَالَ : قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ : مَنْ أَدَّى إِلَى أُمَّتِي حَدِيثًا يُقِيمُ بِهِ سَنَةً أَوْ يَلْثُمُ بِهِ بِدْعَةً فَلَهُ الْجَنَّةُ(حلیۃ الاولیاء لابی نعیم : حدیث نمبر:14990)
    ترجمہ: ابن عباس رضی اللہ عنہما سے روایت ہے کہ نبی ﷺ نے فرمایا کہ جس نے میری امت تک کوئی حدیث (بات) پہنچائی تاکہ اسے قائم کی جائے یا اس سے بدعت کو ختم کی جائے تو اس کے لئے جنت ہے ۔

    روایت کا حکم :
    ٭اس حدیث کی سند میں دو مجہول راوی ہیں، ایک محمدبن ابراہیم ہروی اور دوسرے ان کے باپ ابراہیم ہروی ۔
    ٭ایک راوی کذاب ہے وہ اسماعیل بن یحی تیمی ہے۔ ابوالفتح ازری نے کہاکہ یہ جھوٹ کے ارکان میں سے ایک رکن ہے ، ابوعبداللہ حاکم نیساپوری اور ابوعلی حاکم نیساپوری نے اسے کذاب کہا، دار قطنی نے متروک کذاب کہا، ذہبی نے (کذاب)باطل حدیث بیان کرنے والا اور صالح بن محمد جزرہ نے حدیثیں گھڑنے والا کہا۔
    ٭ ایک راوی لیث بن ابوسلیم قرشی جن کا اصل نام لیث بن ایمن بن زنیم ہے یہ ضعیف ہے ۔ انہیں بیہقی، ابوحاتم رازی، احمد بن حنبل،احمد بن شعیب نسائی،ابراہیم بن یعقوب جورجانی،ابن حجر عسقلانی،ذہبی،محمد بن سعد،یحی بن معین اور یعقوب بن شیبہ دوسی وغیرہ نے ضعیف کہا ہے ۔

    اس سے یہ بات معلوم ہوگئی کہ یہ حدیث دلیل پکڑنے کے لائق نہیں ہے ۔

    ایک انتباہ : یہ حدیث سوشل میڈیا پر بھی گردش کررہی ہے ،اس میں کہیں پرحوالہ ترمذی شریف کا بھی دیا گیا ہے جبکہ یہ حدیث ترمذی میں موجود نہیں ہے اوراسی طرح اس کے ترجمہ میں بھی ایک غلطی ہے ۔ بدعت کا ترجمہ بدمذہبی کیا گیاہے جوکہ بریلوی ترجمہ ہے ۔یہ حضرات اپنے علاوہ بقیہ لوگوں کو بدمذہب کہتے ہیں اس لئے ترجمہ میں بھی بسااوقات اس طرح کی خیانت کرکے لوگوں کے دلوں میں شیطانی وسوسہ پیدا کرتے ہیں ۔ اللہ تعالی انہیں ہدایت دے۔ آمین
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 3
  2. عبدالمنّان

    عبدالمنّان رکن اردو مجلس

    شمولیت:
    ‏فروری 12, 2016
    پیغامات:
    13

    کیا یہ بھی آپ ہی کی تحقیق ہے؟؟ بہت بہترین تحقیق کی ہے آپ نے! جرح و تعدیل کی کن کتابوں سے محدثین کے اقوال نقل کئے ہیں آپ نے یہ کیوں نہیں بتایا؟؟ آپ نے جرح و تعدیل کی کن کتابوں میں محمد بن ابراہیم اور اس کے باپ کا تعارف (ترجمہ) دیکھا ہے جو ان دونوں کو مجھول کہ رہے ہیں؟؟ کتابوں کے نام بتائیں تاکہ ہم بھی دیکھ سکیں کہ کس محدث نے انہیں مجہول کہا ہے؟

    "ایک راوی لیث بن ابوسلیم قرشی جن کا اصل نام لیث بن ایمن بن زنیم ہے یہ ضعیف ہے". لیث بن ابو سلیم کا اصلی نام آپ کو کیسے معلوم ہوا؟ جبکہ اوپر کی سند میں تو صرف"لیث" ہے پھر آپ نے کیسے معلوم کیا کہ یہ لیث بن ابو سلیم قرشی ہے اور اس کا نام لیث بن ایمن بن زنیم ہے؟؟؟
     
    • مفید مفید x 1
  3. ابوعکاشہ

    ابوعکاشہ منتظم

    شمولیت:
    ‏اگست 2, 2007
    پیغامات:
    14,160
    آپ نے کم و بیش چھ تھریڈز میں اعتراض کیا ہے. یا استفسار کیا ہے. اگر آپ کو شیخ مقبول احمد سلفی سے ذاتی کوئی مسئلہ ہے تو پی اہم کر کے معلوم کر لیں. اوپن فورم پر اعتراض سے گریز کریں. اور مزید کسی پوسٹ سے قبل اپنا تعارف ضرور کروائیں. شکریہ
    آپ کے مراسلے حذف کردیے گئے ہیں.
     
    • متفق متفق x 1
Loading...

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں