مختصر درود لکھنا آداب کے منافی ہے

مزمل حسین نے 'اسلامی متفرقات' میں ‏جنوری 22, 2018 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. مزمل حسین

    مزمل حسین نوآموز

    شمولیت:
    ‏جنوری 14, 2018
    پیغامات:
    22
    ”اللہ تعالیٰ کی تعریف اور اس کے رسول پر درود کی حفاظت کرنی چاہئے۔ اگر یہ بار بار بھی ہو تو لکھنے سے نہیں اُکتانا چاہئے کیونکہ اس میں بہت بڑا ثواب ہے۔“
    ”درود و سلام کو مکمل لکھنا چاہئے نہ کہ کم (یا) اشارے میں لکھنا اور صرف ”علیہ السلام“ پر اکتفا کرنا چاہئے بلکہ مکمل اور واضح طور پر ”ﷺ“ لکھنا چاہئیے۔“

    دیکھئے: اختصار علوم الحدیث (ترجمہ و تحقیق: شیخ زبیر علی زئی رحمہ اللہ) ص ۸۶، ۸۷
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 3
  2. رفی

    رفی -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏اگست 8, 2007
    پیغامات:
    12,232
    جزاک اللہ خیرا
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  3. ابوعکاشہ

    ابوعکاشہ منتظم

    شمولیت:
    ‏اگست 2, 2007
    پیغامات:
    14,133
    شکریہ. اکثر لوگ بلکہ بعض اہل علم بھی انبیاء کا ذکر کرتے ہوئے لکھ جاتے ہیں. اصل بات یہ ہے کہ نام آتے ہی مکمل دورد پڑھ لینا چاہیے. مکمل ثواب ملے گا ان شاء اللہ. اگرچہ مکمل درود نا لکھا ہو.
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 2
  4. بابر تنویر

    بابر تنویر منتظم

    رکن انتظامیہ

    شمولیت:
    ‏دسمبر 20, 2010
    پیغامات:
    7,112
    جزاک اللہ خیرا
     
Loading...

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں