کیا کدو کی فضیلت میں کوئی صحیح حدیث موجود ہے؟

عمر اثری نے 'ضعیف اور موضوع احادیث' میں ‏جنوری 24, 2018 کو نیا موضوع شروع کیا

Tags:
  1. عمر اثری

    عمر اثری -: رکن مکتبہ اسلامیہ :-

    شمولیت:
    ‏نومبر 21, 2015
    پیغامات:
    438
    کیا کدو کی فضیلت میں کوئی صحیح حدیث موجود ہے؟؟؟

    سوال: مجھے یہ جاننا تھا کہ کیا کدو کی فضیلت پر بھی کوئی حدیث ہے؟

    جواب: کدو ایک قسم کی سبزی ہے جسے لوکی اور گھیا بھی کہا جاتا ہے۔ نبی اکرم ﷺ کو یہ بے حد محبوب تھی چنانچہ انس بن مالک رضی اللہ عنہ بیان کرتے ہیں:
    إِنَّ خَيَّاطًا دَعَا رَسُولَ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ لِطَعَامٍ صَنَعَهُ، قَالَ أَنَسٌ: فَذَهَبْتُ مَعَ رَسُولِ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ، فَرَأَيْتُهُ يَتَتَبَّعُ الدُّبَّاءَ مِنْ حَوَالَيِ الْقَصْعَةِ، قَالَ: فَلَمْ أَزَلْ أُحِبُّ الدُّبَّاءَ مِنْ يَوْمِئِذٍ
    ترجمہ: ایک درزی نے رسول اللہ ﷺ کو کھانے پر بلایا جسے انہوں نے نبی کریم ﷺ کے لیے تیار کیا تھا۔ انس رضی اللہ عنہ نے بیان کیا کہ نبی کریم ﷺ کے ساتھ میں بھی گیا، میں نے دیکھا کہ نبی کریم ﷺ پیالہ میں چاروں طرف کدو تلاش کرتے تھے (کھانے کے لیے) (انس رضی اللہ عنہ نے مزید) بیان کیا کہ اسی دن سے کدو مجھ کو بھی بہت بھانے لگا۔
    (صحیح بخاری: 5379)

    اسکے علاوہ اس مضمون کی اور بھی کئی صحیح احادیث ہیں لیکن خاص کدو کی فضیلت میں کوئی صحیح حدیث موجود نہیں ہے (فیما ادری)۔ کچھ روایات تو ملتی ہیں لیکن ان میں کچھ ضعیف ہیں تو کچھ موضوع۔ تفصیل پیش خدمت ہے:
    1) كان يكثر من أكل الدباء، فقلت: يا رسول الله! إنك تكثر من أكل الدباء، قال: إنه يكثر الدماغ، ويزيد في العقل
    ترجمہ: (انس رضی اللہ عنہ فرماتے ہیں) نبی اکرم ﷺ کدو بہت زیادہ کھاتے تھے تو میں نے کہا: اے اللہ کے رسول (ﷺ)! آپ کدو بہت زیادہ کھاتے ہیں؟ (کیا بات ہے؟)۔ آپ ﷺ نے فرمایا: یہ دماغ کو بڑھاتا ہے اور عقل میں اضافہ کرتا ہے۔
    علامہ البانی رحمہ اللہ نے اس حدیث کو موضوع قرار دیا ہے۔
    (دیکھیں: سلسلہ الاحادیث الضعیفہ: 1608)

    یہ روایت ان الفاظ کے ساتھ بھی روایت کی جاتی ہے:
    عليكم بالقرع فإنه يزيد بالدماغ
    ترجمہ: تم کدو کو لازم پکڑو کیونکہ یہ دماغ کو بڑھاتی ہے.۔
    یہ روایت بھی موضوع ہے۔ علامہ البانی رحمہ اللہ نے اس کو موضوع قرار دیا ہے۔
    (دیکھیں: سلسلہ الاحادیث الضعیفہ: 510، 40)

    2) يا عائشة! إذا طبخت قدراً، فأكثروا فيها من الدُّبَّاء، فإنه يشد قلب الحزين
    ترجمہ: اے عائشہ! جب تم ہانڈی پکاؤ تو اس میں کدو کثرت سے ڈالا کرو کیونکہ وہ پریشان دل کو سکون دیتا ہے۔
    علامہ البانی رحمہ اللہ نے اس حدیث کو ضعیف قرار دیا ہے۔
    (دیکھیں: سلسلہ الاحادیث الضعیفہ: 6935)
    واللہ اعلم بالصواب!

    کتبہ: عمر اثری
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 4
  2. بابر تنویر

    بابر تنویر منتظم

    رکن انتظامیہ

    شمولیت:
    ‏دسمبر 20, 2010
    پیغامات:
    7,136
    جزاک اللہ خیرا
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  3. عمر اثری

    عمر اثری -: رکن مکتبہ اسلامیہ :-

    شمولیت:
    ‏نومبر 21, 2015
    پیغامات:
    438
    وایاکم
     
  4. رفی

    رفی -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏اگست 8, 2007
    پیغامات:
    12,253
    جزاک اللہ خیرا!

    حضرت یونس علیہ السلام کے قصے میں ہے کہ:

    وَأَنبَتْنَا عَلَيْهِ شَجَرَةً مِّن يَقْطِينٍ ﴿146﴾
    اور اُس پر ایک بیل دار درخت اگا دیا
    الصافات

    شیخ ذرا اس آیت میں یقطین کے بارے میں بھی بتادیں کہ کیا اس سے مراد کدو کی بیل ہی ہے جیسا کہ اکثر علماء بیان کرتے ہیں؟
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  5. عمر اثری

    عمر اثری -: رکن مکتبہ اسلامیہ :-

    شمولیت:
    ‏نومبر 21, 2015
    پیغامات:
    438
    وایاکم!
    محترم بھائی!
    بندہ ایک چھوٹا موٹا طالب عالم ہے کوئی شیخ نہیں.
    جی یقطین سے کئی مفسرین نے کدو مراد لیا ہے. تفسیر ابن کثیر میں یہ بات موجود ہے.
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  6. رفی

    رفی -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏اگست 8, 2007
    پیغامات:
    12,253
    جزاک اللہ خیرا بھائی!

    اتنی فضیلت ہی کافی ہے کہ ایک نبی کو اس کے ذریعے راحت پہنچائی گئی اور دوسرے نبی کی مرغوب غذاء تھی۔
     
Loading...

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں