ﺩﻧﯿﺎ ﻣﯿﮟ ﺧﻮﺵ ﺭﮨﻨﺎ ﮨﮯ ﺗﻮ “ﺍﮔﺮ "، "ﻣﮕﺮ“ ﺍﻭﺭ “ﮐﺎﺵ“ ﭘﺮ ﺳﻮﭼﻨﺎ ﭼﮭﻮﮌ ﺩﯾﮟ

سیما آفتاب نے 'مثالی معاشرہ' میں ‏فروری 23, 2018 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. سیما آفتاب

    سیما آفتاب ناظمہ

    رکن انتظامیہ

    شمولیت:
    ‏اپریل 3, 2017
    پیغامات:
    371
    [​IMG]

    مجھے پتہ ہوتا تو میں ہرگز ایسا نہیں کرتی!

    میں پہلے پہنچ جاتی تو ایسا کبھی نہ ہوتا!

    کاش میں نے یہ نہ کیا ہوتا!

    فلاں جگہ پر یہ چیز اتنی سستی تھی۔ میں نے تو اتنی مہنگی خریدی- مجھے اتنا افسوس ہورہا ہے!

    میرے ساتھ تو ہمیشہ ایسا ہی ہوتا ہے!

    میری کسی نے سنی ہوتی تو ہرگز ایسا نہ ہوتا!

    مجھے تو پتہ ہی تھا مگر میری کب کون سنتا ہے!

    میں نے تو اتنے کا خریدا مگر چند دنوں بعد لوگوں نے سیل میں آدھی قیمت میں لیا۔

    میں صبح ہی چلی جاتی تو ایسا کوئ مسئلہ نہ ہوتا!

    میری بیٹی کے اتنے اچھے رشتے تھے مگر کہاں پھنس گئی میری بیٹی! مجھے کیا پتہ تھا!

    ہم نے جیسے ہی گھر بیچا پراپرٹی کی قیمت آسمان سے باتیں کرنے لگیں۔ کچھ انتظار کرلیتے تو اچھی قیمت مل جاتی۔

    فلاں راستے سے نکلتے تو ٹریفک میں نہ پھنستے۔

    مجھے دیر ہوگئی ورنہ نوبت یہاں تک نہ پہنچتی!


    ہم ایسے سیکڑوں جملے بولتے ہیں جس سے ہم اپنے فیصلوں پر ناخوشی کا اظہار کرتے ہیں۔

    دیکھیں کسی ایک وقت میں ہمارے پاس محدود معلومات ہوتی ہیں اور محدود وقت ہوتا ہے۔ اسی میں ہمیں فیصلہ کرنا ہوتا ہے۔ اور ہم اپنی دانست میں عموماً تمام عوامل کو سامنے رکھ کر حتی الامکان بہترین فیصلہ کرتے ہیں۔ لیکن یہ حقیقت ہے کہ اللہ نے ہمیں محدود اختیار دیا ہے۔ کس فیصلے کا کیا نتیجہ برآمد ہوگا اسکے بارے میں ہم کچھ نہیں کہہ سکتے۔ یہ وقت ہی بتاتا ہے کہ کونسا فیصلہ صحیح تھا اور کونسا غلط اور یہی تقدیر ہے۔

    جب ہم اپنی غلطیوں سے سیکھنے کی بجائے انکا سوگ مناتے ہیں اور شکایتیں کررہے ہوتے تو ہم دراصل تقدیر کے فیصلے پر ناخوشی کا اظہار کررہے ہوتے ہیں جو ہم جانتے ہیں کہ قابل سرزنش ہے۔

    جب ان فیصلوں پر جو آگے جاکر بہتر ثابت نہیں ہوتے ہم واویلا کرتے ہیں اور اپنے آپ کو کوسکتے ہیں تو اسکا مطلب ہے کہ ہم نے اپنے محدود اختیار کو تسلیم نہیں کیا۔

    اسطرح گزرے وقت پر ماتم کرکے ہم اپنا حال بھی خراب کررہے ہوتے ہیں اور اگر یہ رویہ عادت بن جائے تو ڈپریشن اور اینگزائٹی پیدا کرتا ہے۔

    اللہ تعالی کو بھی کاش اور اسکے ہم معنی جملے اور الفاظ پسند نہیں کیونکہ یہ تقدیر کے فیصلے کو تسلیم نہ کرنے کے مترادف ہے۔

    ماضی میں بار بار پلٹنے کی بجائے اپنا دھیان حال اور مستقبل پر رکھنے سے ہم ناشکری اور پچھتاووں کی آگ سے بچ سکتے ہیں۔

    ہاں اپنی غلطیوں کی معافی مانگنا، ان سے سیکھنا اور اگر ممکن ہو تو انکا ازالہ کرنا ضروری ہے ۔

    منیرہ احمد
    اسرا میگزین
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 2
    • حوصلہ افزا حوصلہ افزا x 1
    • مفید مفید x 1
    • تخلیقی تخلیقی x 1
  2. رفی

    رفی منتظمِ اعلٰی

    رکن انتظامیہ

    شمولیت:
    ‏اگست 8, 2007
    پیغامات:
    12,089
    بہت عمدہ شیئرنگ، جزاک اللہ خیرا!
     
  3. حافظ عبد الکریم

    حافظ عبد الکریم رکن اردو مجلس

    شمولیت:
    ‏ستمبر 12, 2016
    پیغامات:
    484
    جزاک اللہ خیرا
     
  4. سیما آفتاب

    سیما آفتاب ناظمہ

    رکن انتظامیہ

    شمولیت:
    ‏اپریل 3, 2017
    پیغامات:
    371
    وایاکم
     
  5. بابر تنویر

    بابر تنویر منتظم

    رکن انتظامیہ

    شمولیت:
    ‏دسمبر 20, 2010
    پیغامات:
    7,063
    سسٹر یقینا سب کچھ اللہ کی جانب سے ہی ہوتا ہے۔ اور کئ بار بات آپ کی مرضی کے خلاف اور آپ کے لیے بظاہر نقصان دہ ہوتی ہے۔ اور آپ اس پر افسوس کا اظہار کرتے ہیں۔ لیکن ایسا بھی ہوتا ہے کہ وہی بات جو کہ کے آپ کی مرضی کے خلاف ہوئ دراصل وہی آپ کے لیے فائدہ مند ہوتی ہے۔
    اس بات کا تجربہ بھی پچھلے دنوں ہوا۔ پراپرٹی بیچنے کے چند بعد اس کی قیمت میں اضافہ ہوگيا۔ چھوٹے بھائ کا فون آیا کہ اگر چند دن اور رک جاتے تو اچھا ہوتا۔ میں نے اسے یہی کہا کہ افسوس کی ضرورت نہیں ہے۔ یہ کاروبار ہے اور اس سے بڑھ کر اللہ تعالی نے ایسے ہی لکھا تھا۔
    آپ نے بات کی غلطیوں سے سیکھنے کی تو یہ بات بھی درست ہے۔ اگر آپ کو اپنی کسی غلطی کی وجہ سے نقصان کا سامنا کرنا پڑا تو پھر یقینا کوشش کرنی چاہیے کہ ایسی غلطی دوبارہ نہ دھرائ جاۓ
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 2
  6. سیما آفتاب

    سیما آفتاب ناظمہ

    رکن انتظامیہ

    شمولیت:
    ‏اپریل 3, 2017
    پیغامات:
    371
    متفق ۔۔۔ جزاک اللہ خیرا
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  7. صدف شاہد

    صدف شاہد ناظمہ

    رکن انتظامیہ

    شمولیت:
    ‏مارچ 16, 2018
    پیغامات:
    150
    بہت مفید شئیرنگ
    جزاک اللہ خیرا
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 2
  8. سیما آفتاب

    سیما آفتاب ناظمہ

    رکن انتظامیہ

    شمولیت:
    ‏اپریل 3, 2017
    پیغامات:
    371
    بہت شکریہ بہنا
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں