احادیث کے متعلق تنبیہ اور احتیاط

ابو حسن نے 'حدیث - شریعت کا دوسرا اہم ستون' میں ‏فروری 27, 2018 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. ابو حسن

    ابو حسن رکن اردو مجلس

    شمولیت:
    ‏جنوری 21, 2018
    پیغامات:
    353
    احادیث کے متعلق تنبیہ اور احتیاط

    ( تحریر از ابو حسن ، میاں سعید )

    چونکہ یہ معاملہ انتہائی اہم اور حد درجہ احتیاط طلب ہے اور بیٹھے بیٹھائے اپنا ٹھکانہ جہنم میں بنانا ؟ یہ کونسی عقلمندی ؟ آج چونکہ سوشل میڈیا کے استعمال کی وجہ سے یہ بات اور زیادہ عام ہوگئی ہے

    بہت سے پیجز پر آپکو ایسی انوکھی باتیں لکھی ہوئی ملیں گی جنکو " حدیث رسول ﷺ" کہہ کر پوسٹ بنائی گئی اور صرف اتنا ہی نہیں بلکہ ساتھ میں کسی مستند حدیث کی کتاب کا نام اور حدیث نمبر بھی لکھا ہوتا ہے اور اگر تحقیق کریں تو معلوم ہوتا ہے کہ یہ بات تو سرے سے ہی موجود نہیں اس کتاب میں اور زیادہ تر بغیر تحقیق کے آگے شئیر بھی کررہے ہوتے ہیں

    قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّی اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ کَفَی بِالْمَرْئِ کَذِبًا أَنْ يُحَدِّثَ بِکُلِّ مَا سَمِعَ

    حضرت ابوہریرہ رضی اللہ تعالیٰ عنہ مروی ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا کسی شخص کے جھوٹا ہونے کے لئے یہی کافی ہے کہ وہ ہر سنی ہوئی بات کو بیان کر دے ۔


    اسی طرح ایک اخبار کے پیج پر ایک منگھڑت حدیث پوسٹ ہوئی اور میں نے 2016 میں اس پر لکھا بھی لیکن کوئی جواب نہیں اور لوگ ہیں کہ "سبحان اللہ " کہتے ہوئے شئیر بھی کر رہے ہیں

    اب اسکو غالبا 90 لاکھ کے قریب نے لائق اور کچھ 20 لاکھ نے شئیر کیا تھا اور ان پڑھنے والوں نے آگے کتنے لوگوں کو یہی بات بتائی ہوگی اور کتنوں تک یہ پیغام منگھڑت حدیث کی بجائے صحیح حدیث کی صورت میں پہنچا ہوگا ؟

    میں نے انکا فون نمبر ڈھونڈا اور فون کیا کوئٹہ ،لاہور اور دیگر مقامات پر ،کوئٹہ سے کال رسیو کی گئی اور وہاں سے بتایا گیا کہ آپ کراچی فون کریں پھر کراچی بات کی اور بتایا کہ آپ لوگوں کے پیج پر آپکی طرف سے ایک منگھڑت حدیث پوسٹ ہوئی ہے جوکہ نہ تو کسی حدیث کی کتاب میں موجود ہے

    اس بھائی نے کہا کہ یہ پیج کوئٹہ سے آپریٹ ہوتا ہے اور آپ ایسا کریں کہ وہ لنک مجھے ایمیل کردیں تو ان شاءاللہ اسکو ڈلیٹ کردیا جائے گا(بات کافی طویل ہوئی تھی لیکن مختصر یہاں بتارہا ہوں)میں نے ایمیل کی اور پھر شام تک انتظار کے بعد پھر فون کیا اور بتایا گیا کہ یہ کام آج ہوجائے گا اور پھر انکی طرف سے ایمیل آئی

    7/19/16 lie on Rasool Allah S.A.W
    جناب محترم!


    آپکی اصلاح کا شکریہ ‘ یہ تصویر ادارے کیجانب سے دانستہ طورپر شائع نہیں کی گئی تاہم ہم آپکی دل ازاری پر آپ سے معذرت خواہ ہے ‘ تصویر روزنامہ قدرت کے پیج سے ڈلیٹ کردی گئی ہے
    والسلام



    اور میں نے جواب لکھا "جزاك الله خيرا ،والسلام "


    جلیل القدر اور بدری اور عشرہ مبشرہ میں سے اور حواری رسول ﷺ سیدنا زبیر بن عوام رضی اللہ عنہ اپنے بیٹے عبداللہ بن زبیر رضی اللہ عنہما جن کی پیدائش پر مسلمانوں نے خوشیاں منائیں اور یہود کے منہ بند ہوگئے تھے " یہ بھی بہت خوبصورت اور حق و باطل کے مابین ہونے والی باتوں کا قصہ ہے اور کبھی موقع ملا تو اسکو بھی نقل کرونگا ان شاءاللہ "

    عبداللہ بن زبیر رضی اللہ عنہما کے سوال پر جواب دیتے ہوئے کیا بتا رہے ہیں ؟ ان کے الفاظ پر غور فرمائیں اور یہ میرے اور آپ سب کیلئے بہت اہم تنبیہ ہے

    حَدَّثَنَا أَبُو الْوَلِيدِ قَالَ حَدَّثَنَا شُعْبَةُ عَنْ جَامِعِ بْنِ شَدَّادٍ عَنْ عَامِرِ بْنِ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ الزُّبَيْرِ عَنْ أَبِيهِ قَالَ قُلْتُ لِلزُّبَيْرِ إِنِّي لَا أَسْمَعُکَ تُحَدِّثُ عَنْ رَسُولِ اللَّهِ صَلَّی اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ کَمَا يُحَدِّثُ فُلَانٌ وَفُلَانٌ قَالَ أَمَا إِنِّي لَمْ أُفَارِقْهُ وَلَکِنْ سَمِعْتُهُ يَقُولُ مَنْ کَذَبَ عَلَيَّ فَلْيَتَبَوَّأْ مَقْعَدَهُ مِنْ النَّارِ

    عبد ﷲ بن زبیر روایت کرتے ہیں کہ ایک دن اپنے والد حضرت زبیر سے کہنے لگے کہ جس طرح فلاں فلاں صحابی حضور صلی ﷲ علیہ وآلہ وسلم کی حدیثیں کثرت سے نقل کرتے ہیں آپ کو میں نے اس طرح روایت کرتے نہیں سنا، زبیر بولے کہ آگاہ رہو، میں رسول ﷲ سے جدا نہیں ہوا (مجھے بھی بہت حدیثیں معلوم ہیں) لیکن میں نے آپ صلی ﷲ علیہ وآلہ وسلم کو یہ فرماتے ہوئے سنا ہے کہ جو شخص میرے اوپر جھوٹ بولے تو اسے چاہئے کہ اپنا ٹھکانہ آگ میں تلاش کرے (اس لئے بہت حدیثیں بیان کرتے ہوئے ڈرتا ہوں) - صحیح بخاری ۔107


    کتنی اہم تنبیہ بھی ہے ؟ آج ہم اس بات کو اپنے پر لازم کرلیں تو اس بداحتیاطی سے بچا جاسکتا ہے ،مزید

    حَدَّثَنَا عَلِيُّ بْنُ الْجَعْدِ قَالَ أَخْبَرَنَا شُعْبَةُ قَالَ أَخْبَرَنِي مَنْصُورٌ قَالَ سَمِعْتُ رِبْعِيَّ بْنَ حِرَاشٍ يَقُولُ سَمِعْتُ عَلِيًّا يَقُولُ قَالَ النَّبِيُّ صَلَّی اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ لَا تَکْذِبُوا عَلَيَّ فَإِنَّهُ مَنْ کَذَبَ عَلَيَّ فَلْيَلِجْ النَّارَ

    علی رضی ﷲ تعالیٰ عنہ کہتے ہیں کہ نبی صلی ﷲ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا کہ میرے اوپر جھوٹ نہ بولنا کیونکہ جو شخص مجھ پر جھو ٹ بولے اس کا ٹھکانہ جہنم ہے - صحیح بخاری ۔106

    اور کچھ لوگ رسول اللہ ﷺ سے کچھ باتیں منسوب کردیتے ہیں جن کے بارے میں رسول اللہ ﷺ نے فرمایا

    حَدَّثَنَا أَبُو نُعَيْمٍ حَدَّثَنَا سَعِيدُ بْنُ عُبَيْدٍ عَنْ عَلِيِّ بْنِ رَبِيعَةَ عَنْ الْمُغِيرَةِ رَضِيَ اللَّهُ عَنْهُ قَالَ سَمِعْتُ النَّبِيَّ صَلَّی اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ يَقُولُ إِنَّ کَذِبًا عَلَيَّ لَيْسَ کَکَذِبٍ عَلَی أَحَدٍ مَنْ کَذَبَ عَلَيَّ مُتَعَمِّدًا فَلْيَتَبَوَّأْ مَقْعَدَهُ مِنْ النَّارِ سَمِعْتُ النَّبِيَّ صَلَّی اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ يَقُولُ مَنْ نِيحَ عَلَيْهِ يُعَذَّبُ بِمَا نِيحَ عَلَيْهِ

    مغیرہ سے روایت کرتے ہیں کہ میں نے نبی صلی ﷲ علیہ وآلہ وسلم کو فرماتے ہوئے سنا کہ وہ جھوٹ جو مجھ پر لگایا جائے اس طرح کا نہیں ہے جو کسی کے او پر لگایا جائے مجھ پر جو شخص جھوٹ لگائے یا میری طرف کوئی جھوٹی بات منسوب کرے تو وہ اپنا ٹھکانہ جہنم میں بنا لے، میں نے نبی صلی ﷲ علیہ وسلم کو فرماتے ہوئے سنا کہ جس شخص پر نوحہ کیاجائے اس پر عذاب کیا جاتا ہے اس سبب سے کہ اس پر نوحہ کیا جاتا ہے - صحیح بخاری ۔1210

    آپکو واٹس اپ ،فیسبک ،ٹیوٹر یا سوشل میڈیا کے کسی اور ذرائع سے کوئی حدیث موصول ہو تو جب تک اسکی تحقیق نہ کر لیں برائے مہربانی اسے آگے شئیر نہ کریں ،کیونکہ آجکل ایک یہ بھی دوڑ ہے کہ میرا پیج بڑا ، میری پوسٹ پر لائق زیادہ ہوں ، میری پوسٹ کو شئیر زیادہ کیا جائے اور اسی بات کو اس میں بدل دیا جائے کہ میں جو کچھ بھی کروں اس سے میرا اللہ راضی ہوجائے اور اس بات سے اگر کسی کو اچھی رہنمائی مل جائے تو کیا کہنے

    اور جس بات کی رہنمائی خود رسول اللہ ﷺ نے فرمائی اسکو تو ہمیں اپنے اوپر لازم کرتے ہوئے تحقیق کا دامن ہرگزنہيں چھوڑنا اور اس معاملہ میں علماء و محدثین سے خاص کر رجوع کرنا اور بذات خود تحقیق کرنا بھی بہت ضروری ہے

    حَدَّثَنِي مُحَمَّدُ بْنُ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ نُمَيْرٍ وَزُهَيْرُ بْنُ حَرْبٍ قَالَا حَدَّثَنَا عَبْدُ اللَّهِ بْنُ يَزِيدَ قَالَ حَدَّثَنِي سَعِيدُ بْنُ أَبِي أَيُّوبَ قَالَ حَدَّثَنِي أَبُو هَانِئٍ عَنْ أَبِي عُثْمَانَ مُسْلِمِ بْنِ يَسَارٍ عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ عَنْ رَسُولِ اللَّهِ صَلَّی اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ أَنَّهُ قَالَ سَيَکُونُ فِي آخِرِ أُمَّتِي أُنَاسٌ يُحَدِّثُونَکُمْ مَا لَمْ تَسْمَعُوا أَنْتُمْ وَلَا آبَاؤُکُمْ فَإِيَّاکُمْ وَإِيَّاهُمْ

    حضرت ابوہریرہ بیان فرماتے ہیں کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے ارشاد فرمایا میری امت کے اخیر زمانے میں ایسے لوگ ہوں گے جو تم سے ایسی احادیث بیان کیا کریں گے جن کو نہ تم اور نہ ہی تمہارے آباؤ اجداد نے اس سے پہلے سنا ہوگا لہذا ان لوگوں سے جس قدر ہو سکے دور رہنا ۔ صحیح مسلم ۔ حدیث 17

    اور مزید تنبیہ کرتے ہوئے فرمایا کہ

    حَدَّثَنِي حَرْمَلَةُ بْنُ يَحْيَی بْنِ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ حَرْمَلَةَ بْنِ عِمْرَانَ التُّجِيبِيُّ قَالَ حَدَّثَنَا ابْنُ وَهْبٍ قَالَ حَدَّثَنِي أَبُو شُرَيْحٍ أَنَّهُ سَمِعَ شَرَاحِيلَ بْنَ يَزِيدَ يَقُولُ أَخْبَرَنِي مُسْلِمُ بْنُ يَسَارٍ أَنَّهُ سَمِعَ أَبَا هُرَيْرَةَ يَقُولُا قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّی اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ يَکُونُ فِي آخِرِ الزَّمَانِ دَجَّالُونَ کَذَّابُونَ يَأْتُونَکُمْ مِنْ الْأَحَادِيثِ بِمَا لَمْ تَسْمَعُوا أَنْتُمْ وَلَا آبَاؤُکُمْ فَإِيَّاکُمْ وَإِيَّاهُمْ لَا يُضِلُّونَکُمْ وَلَا يَفْتِنُونَکُمْ

    حضرت ابوہریرہ بیان فرماتے ہیں کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے ارشاد فرمایا آخر زمانہ میں جھوٹے دجال لوگ ہوں گے تمہارے پاس ایسی احادیث لائیں گے جن کو نہ تم نے نہ تمہارے آباؤ اجداد نے سنا ہوگا تم ایسے لوگوں سے بچے رہنا مبادا وہ تمہیں گمراہ اور فتنہ میں مبتلا نہ کر دیں ۔ صحیح مسلم ۔ حدیث 18

    اللہ تعالى سے دعا ہے كہ وہ مسلمانوں كى حالت درست كرے اور ہم سب كو صحيح راہ كى توفيق نصيب فرمائے يقينا اللہ تعالى سننے والا اور قبول كرنے والا اور قريب ہے اللہ تعالی ہمیں اس دین پر عمل کرنے کی توفیق عطا فرمائے کہ جس دین کو لیکر سیدالاولین و الاخرین ﷺ آئے اور جس پر صحابہ کرام رضوان اللہ اجمعین نے عمل کرتے ہوئے اپنی زندگیوں کو گزارا اور جنت کی بشارتیں پاتے ہوئے اس دنیا سے رخصت ہوئے اللہ تعالی ہمیں بھی ان کے نقشے قدم پر چلنے کی توفیق عطا فرمائے اور اللہ تعالى ہمارے نبى محمد ﷺ اور ان كى آل اور ان كے صحابہ كرام پر اپنى رحمتيں نازل فرمائے.آمین
     
    Last edited: ‏ستمبر 7, 2018
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
    • اعلی اعلی x 1
  2. رفی

    رفی -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏اگست 8, 2007
    پیغامات:
    12,280
    جزاک اللہ خیرا!

    موضوع کی اہمیت اور طوالت کے سبب الگ تھریڈ بنایا گیا ہے
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
    • حوصلہ افزا حوصلہ افزا x 1
  3. بابر تنویر

    بابر تنویر منتظم

    رکن انتظامیہ

    شمولیت:
    ‏دسمبر 20, 2010
    پیغامات:
    7,203
    جزاک اللہ خيرا
     
    • حوصلہ افزا حوصلہ افزا x 1
  4. حافظ عبد الکریم

    حافظ عبد الکریم رکن اردو مجلس

    شمولیت:
    ‏ستمبر 12, 2016
    پیغامات:
    535
    جزاک اللہ خیرا
     
    • حوصلہ افزا حوصلہ افزا x 1
  5. سیما آفتاب

    سیما آفتاب ناظمہ

    رکن انتظامیہ

    شمولیت:
    ‏اپریل 3, 2017
    پیغامات:
    454
    جزاک اللہ خیراً کثیرا
     
    • حوصلہ افزا حوصلہ افزا x 1
  6. ابو حسن

    ابو حسن رکن اردو مجلس

    شمولیت:
    ‏جنوری 21, 2018
    پیغامات:
    353
    وایاکم
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  7. رفی

    رفی -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏اگست 8, 2007
    پیغامات:
    12,280
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
    • حوصلہ افزا حوصلہ افزا x 1
Loading...

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں