قرآن میں شمال و جنوب کا ذکر کیوں نہیں؟

ماجد افضل نے 'اسلام ، سائنس اور جدید ٹیکنولوجی' میں ‏مارچ 28, 2018 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. ماجد افضل

    ماجد افضل نوآموز

    شمولیت:
    ‏مارچ 14, 2018
    پیغامات:
    11
    مشرق مغرب کا ذکر تو میل گیا قرآن سے لیکن شمال جنوب ذکر نہیں ہے شمال جنوب نام کس نے دیا
     
  2. رفی

    رفی منتظمِ اعلٰی

    رکن انتظامیہ

    شمولیت:
    ‏اگست 8, 2007
    پیغامات:
    12,101
    یمین و شمال کا ذکر تو ہے قرآن میں ویسے نہ بھی ہوتا تو تمام نام تو اللہ نے ہی آدم علیہ السلام کو سکھائے ہیں:

    وَ عَلَّمَ اٰدَمَ الۡاَسۡمَآءَ کُلَّہَا ۔۔۔۔۔۔
    سورہ بقرہ آیت 31
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  3. ماجد افضل

    ماجد افضل نوآموز

    شمولیت:
    ‏مارچ 14, 2018
    پیغامات:
    11
    جزاک اللہ بھائی جان لیکن شمال جنوب کس نے رکھا ہے نام کیا اسلام میں شمال جنوب کا کوئی ذکر ہے جیسے مشرق مغرب کا ہے
     
  4. رفی

    رفی منتظمِ اعلٰی

    رکن انتظامیہ

    شمولیت:
    ‏اگست 8, 2007
    پیغامات:
    12,101
    درج ذیل آیت میں یمین و شمال کا ذکر ہے۔

    لَقَدۡ کَانَ لِسَبَاٍ فِیۡ مَسۡکَنِہِمۡ اٰیَۃٌ ۚ جَنَّتٰنِ عَنۡ یَّمِیۡنٍ وَّ شِمَالٍ ۬ ؕ کُلُوۡا مِنۡ رِّزۡقِ رَبِّکُمۡ وَ اشۡکُرُوۡا لَہٗ ؕ بَلۡدَۃٌ طَیِّبَۃٌ وَّ رَبٌّ غَفُوۡرٌ ﴿۱۵﴾ سبأ
    قوم سبا کے لئے اپنی بستیوں میں ) قدرت الٰہی کی ) نشانی تھی ان کے دائیں بائیں دو باغ تھے ( ہم نے ان کو حکم دیا تھا کہ ( اپنے رب کی دی ہوئی روزی کھاؤ اور اُس کا شکر ادا کرو یہ عمدہ شہر اور وہ بخشنے والا رب ہے ۔
     
    • تخلیقی تخلیقی x 1
  5. بابر تنویر

    بابر تنویر منتظم

    رکن انتظامیہ

    شمولیت:
    ‏دسمبر 20, 2010
    پیغامات:
    7,064
    یعنی قرآن میں جنوب کو "یمین" کہا گيا ہے۔ اب ہم اسے یمین کہہ دیں یا کہ جنوب بات ایک سمت کے تعین کی ہے۔ وہ مقام جو کہ شمال کے مخالف سمت میں ہے۔
     
    • متفق متفق x 1
  6. کنعان

    کنعان محسن

    شمولیت:
    ‏مئی 18, 2009
    پیغامات:
    2,775
    السلام علیکم

    لَقَدْ كَانَ لِسَبَإٍ فِي مَسْكَنِهِمْ آيَةٌ جَنَّتَانِ عَن يَمِينٍ وَشِمَالٍ كُلُوا مِن رِّزْقِ رَبِّكُمْ وَاشْكُرُوا لَهُ بَلْدَةٌ طَيِّبَةٌ وَرَبٌّ غَفُورٌ
    قوم سبا کے لئے اپنی بستیوں میں (قدرت الٰہی کی) نشانی تھی ان کے دائیں بائیں دو باغ تھے (ہم نے ان کو حکم دیا تھا کہ) اپنے رب کی دی ہوئی روزی کھاؤ اور اُس کا شکر ادا کرو یہ عمدہ شہر اور وہ بخشنے والا رب ہے ۔
    سورۃ سبأ 34، آیت 15

    اس باغ کو اب بھی دیکھ لیں جس کے درمیان مشرق سے مغرب تک 40 میل لمبی ایک سڑک گزرتی ہے، جس کے دائیں بائیں آدھا باغ شمال اور آدھا باغ جنوب ہے۔

    والسلام
     
  7. ابوعکاشہ

    ابوعکاشہ ایڈمن

    شمولیت:
    ‏اگست 2, 2007
    پیغامات:
    14,064
    اسےقرآن کا اعجاز کہ سکتے ہیں کہ وہ مجمل طور پر صرف ان چیزوں کا ذکر کرتا ہے ۔ جس کی زیادہ ضرورت ہوتی ہے ۔ یا جس کا تعلق خاص اللہ کی توحید ، ربوبیت ، توحیدعبادت ، یا اسماء و صفات سے ہوتا ہے.سورج اللہ کی بہت بڑی اور طاقتور تخلیق ہے ۔ جو انسان کے مشاہدہ میں ہے ۔ اس کے بغیر نظام شمسی کا نظام چلنا ممکن نہیں ۔ مشرق و مغرب کو قرآن میں کہیں صرف سمت جہت کے تحت ذکر کیا ہے ۔ کہیں دو مشرق ، دو مغرب ، اور کہیں جمع مشرقین و مغربین آیات میں موجود ہے ۔
    قرآن کے نزدیک اصل مشرق و مغرب ہی ہیں ۔ سورج مشرق سے مختلف مطالع سے سال بھر نکلتا ہے ۔ کہیں غروب ہو رہا ہوتا ہے ۔ کہیں طلوع ۔اس سے ماہ و سال بنتے ہیں ۔ اور جس مقام سے ایک بار طلوع یا غروب ہو جاتا ہے ۔ پھر کبھی وہاں سے طلوع یا غروب نہیں ہوتا ۔اور اگر سور ج کی ملکی وے کے گرد گردش کو مان لیا جائے ۔ تو سورج جس مطلع سے ایک بار طلوع ہوجائے ۔ پھرکبھی وہاں سے نہیں نکلتا ۔۔ اس لئے قطب شمالی جنوبی فقط سمت کے تعین کے لئے ہے ۔ حقیقت میں ان کا کوئی وجود نہیں ۔ اور نہ وہاں زندگی کا تصور ہے ۔
    ابن عاشور تفسیر میں لکھتے ہیں کہ ۔ قرآن میں شمال و جنوب کے ذکر ناکرنے کی ایک وجہ یہ بھی ہے کہ عرب ان سمتوں سے اچھی طرح واقف تھے ۔ اور اپنے قافلے گرمیوں و سردیوں میں شمال و جنوب کی طرف روانہ کرتے تھے ۔ اس حوالے سے ابن کثیرنے بھی مشارق و مغارب آیات کی تفسیر میں لکھا ہے ۔واللہ اعلم۔
    http://quran.ksu.edu.sa/tafseer/tanweer/sura70-aya40.html
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
    • معلوماتی معلوماتی x 1
  8. ماجد افضل

    ماجد افضل نوآموز

    شمولیت:
    ‏مارچ 14, 2018
    پیغامات:
    11
    جزاک اللہ
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  9. ماجد چوہان

    ماجد چوہان نوآموز

    شمولیت:
    ‏اپریل 6, 2018
    پیغامات:
    2
    جزاک اللہ
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
Loading...

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں