ہم لوگ نئی چیز کے استعمال سے ڈرتے کیوں ہیں؟

صدف شاہد نے 'طنز و مزاح' میں ‏اپریل 16, 2018 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. صدف شاہد

    صدف شاہد ناظمہ

    رکن انتظامیہ

    شمولیت:
    ‏مارچ 16, 2018
    پیغامات:
    268
    ان کو ہر وقت یہی دھڑکا لگا رہتا ہے کہ کہیں اُن کی اوریجنل چیز خراب نہ ہو جائے۔ اُن کی پوری زندگی پورے پیسے ادا کرنے کے باوجود کاپی استعمال کرتے گزر جاتی ہے، اوریجنل چیز ان کے لمس کے لیے ترستی رہ جاتی ہے ۔یہ ہمیشہ مستقبل کی پلاننگ کرتے ہیں ، اُس مستقبل کی جو ہمیشہ کی طرح اُن کا ماضی بن کر رہ جاتا ہے۔ مارکیٹ میں نئی سے نئی چیز آتی جاتی ہے اور اُن کی اوریجنل چیز پڑی بے کار ہو جاتی ہے ۔یہ نیا سوٹ سلوا لیں تو اس ڈر سے نہیں پہنتے کہ کہیں خراب نہ ہو جائے اور پھر ایک وقت آتا ہے جب یہ سوٹ نکالتے ہیں اور پتا چلتا ہے کہ فیشن بدل چکا ہے۔
    ۔۔۔۔۔۔۔
    چیز خریدنے اور استعمال کرنے کی خوشی دو مختلف چیزیں ہیں بہت سے لوگ چیزیں خریدنے میں شیر ہوتے ہیں لیکن استعمال کا حوصلہ نہیں کر پاتے ۔ اُن کی مہنگی گھڑیاں پڑے پڑے بند ہو جاتی ہیں لیکن یہ ہمیشہ تین سو روپے والی گھڑی باندھے پھِرتے ہیں ۔اُن کے پاس اللہ کا دیا سب کچھ ہوتا ہے لیکن یہ ہر نئی چیز کو استعمال کرنے کے لئے کسی اچھے وقت
    کے انتظار میں رہتے ہیں ۔یہ نیا ریموٹ بھی خرید لیں تو استعمال پرانا ہی کرتے ہیں ۔ایسا لگتا ہے جیسے اِن لوگوں کی زندگی کا حُسن کسی نے باندھ دیا ہو ۔ انہیں جتنا مرضی قیمتی گِفٹ دے دیں یہ اُسی نفاست سے دراز میں سنبھال کر رکھ دیتے ہیں ۔اچھی چیزیں اُن کے نصیب میں ہی نہیں ہوتیں بس مستقبل کی پلاننگ ہوتی ہے جو ہمیشہ ایک نئے مستقبل کو جنم دیتی رہتی ہے ۔ہر کام کی چیز ان کی دسترس میں ہوتے ہوئے بھی استعمال میں نہیں آتی ۔اُنہیں کہیں سے اِمپورٹڈ شیمپو کا تحفہ مل جائے تو ایک سال بعد یہ شیمپو جوں کا توں پڑے پڑے زہر بن جاتا ہے لیکن کبھی شیشی سے باہر نہیں آ پاتا ۔۔۔۔۔۔۔۔

    ہم لوگ نئی چیز کے استعمال سے ڈرتے کیوں ہیں؟
    نیا ڈنر سیٹ خریدا ہے تو کھانا پرانے میں کیوں کھایا جائے؟
    نئے کپڑے سلوائے ہیں تو اُنہیں عام حالات میں بھی پہننے میں کیا مضائقہ ہے؟

    گھر میں ڈیڑھ لٹر والے کولڈ ڈرنک کی خالی بوتلوں کے انبار لگتے جارہے ہیں لیکن پھینکنے کا حوصلہ نہیں پڑ رہا۔
    نیا بلب خرید لیا ہے تو پرانے کو سٹور میں کیوں سنبھال کے رکھ دیا ہے؟
    باتھ رو م میں نیا شیونگ ریزر موجود ہے تو پرانے پندرہ ریزر کا انبار کیوں لگا رکھا ہے؟
    پانچ سو روپے والا لائٹر خرید ہی لیا ہے تو اُسے استعمال کیوں نہیں کرتے؟
    نئی بیڈ شیٹ کیوں سوٹ کیس میں پڑی پڑی پرانی ہوجاتی ہے؟
    جہیز میں ملی نئی رضائیاں کیوں بیس سال سے استعمال میں نہیں آئیں؟
    باہر سے آیا ہوا لوشن کیوں پڑا پڑا ایکسپائر ہوگیا ہے؟؟؟

    دل چاہیے۔۔۔! نئی چیز استعمال کرنے کے لیے پہاڑ جتنا دل چاہیے ‘جو لوگ اس جھنجٹ سے نکل جاتے ہیں ان کی زندگیوں میں عجیب طرح کی طمانیت آجاتی ہے۔ یہ شرٹ خریدیں تو اگلے دن پورے اہتمام سے پہن لیتے ہیں۔
    یہ ہر اوریجنل چیز کو اُس کی اوریجنل شکل میں استعمال کرتے ہیں اور ہم جیسے دیکھنے والوں کو لگتاہے جیسے یہ بہت امیر ہیں حالانکہ یہ سب چیزیں ہمارے پاس بھی ہوتی ہیں لیکن ہماری ازلی بزدلی ہمیں ا ن کے قریب بھی نہیں پھٹکنے دیتی۔

    دن پہ دن گذرتے جاتے ہیں لیکن ہم نقل کی محبت میں اصل سے دور ہوتے چلے جاتے ہیں۔
    کسی کے گھر سے کیک آجائے تو خود کھانے کی بجائے سوچنے لگتے ہیں کہ آگے کہاں دیا جاسکتا ہے۔
    ہر وہ کیک جس پر لگی ٹیپ تھوڑی سی اکھڑی ہوئی ہو‘اس بات کا ثبوت ہے کہ اہل خانہ نے ڈبہ کھول کر چیک کیا ہے اور پھر اپنے تئیں کمال مہارت سے اسے دوبارہ پہلے والی حالت میں جوڑنے کی ناکام کوشش کی ہے۔پتانہیں کیوں ہم میں سے اکثر کو ایسا کیوں لگتاہے کہ اچھی چیز ہمارے لیے نہیں ہوسکتی۔
    ہم ساری زندگی اچھے لباس میلا ہونے کے ڈر سے جیتے ہیں اور پھر ایک دن دودھ کی طرح اجلا لباس پہن کر مٹی میں اتر جاتے ہیں۔

    پلاننگ از گل نوخیز اختر
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 6
  2. رفی

    رفی -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏اگست 8, 2007
    پیغامات:
    12,280
    بہت عمدہ، واقعی نئ چیز کے ہوتے بھی ہم میں سے اکثر کے نصیب میں اسے استعمال کرنا نہیں ہوتا، اور اگر کوئی کر بھی لے تو اس پر سو طرح کے حفاظتی خول چڑھا کر اسے اتنا بد نما بنا دیتے ہیں کہ اس کی اصل دلکشی جاتی رہتی ہے۔
     
    • متفق متفق x 1
  3. ابوعکاشہ

    ابوعکاشہ منتظم

    شمولیت:
    ‏اگست 2, 2007
    پیغامات:
    14,213
    بہت عمدہ.
    ایک قسم تو بخیل لوگوں کی ہے.یہ حد سے بڑھے ہوئے ہیں.،مگر کچھ لوگ واقعی احساس کمتری کا شکار ہوتے ہیں کہ شاید اس قابل نہیں. اور کچھ کو کمتر سمجھا جاتا ہے. تو وہ اچھی چیزوں سے دور رہتے ہیں. اور کچھ اللہ کے بندے لوگوں سے بے نیاز رہتے ہیں. ہر حالت میں اللہ کا شکر ادا کرتے ہیں. نعمتوں سے خود بھی فائدہ اٹھاتے ہیں. دوسروں کا بھی حوصلہ بڑھاتے ہیں. سہارا بنتے ہیں.
     
    • مفید مفید x 2
  4. Ishauq

    Ishauq محسن

    شمولیت:
    ‏فروری 2, 2012
    پیغامات:
    9,583
    خاص کر ہم جیسے متوسط طبقوں میں یہ عادت عام ہے
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  5. سیما آفتاب

    سیما آفتاب ناظمہ

    رکن انتظامیہ

    شمولیت:
    ‏اپریل 3, 2017
    پیغامات:
    454
    بہت عمدہ اور ہماری معاشرتی روش کی طرف توجہ دلاتی تحریر
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
Loading...

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں