آنگن کی چڑیاں

صدف شاہد نے 'گوشۂ نسواں' میں ‏مئی 4, 2018 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. صدف شاہد

    صدف شاہد ناظمہ

    رکن انتظامیہ

    شمولیت:
    ‏مارچ 16, 2018
    پیغامات:
    150
    سُنو ! تم میری ماما سے کہہ سکتی ہو کہ میں کل تمہارے ساتھ تمہارے گھر گئی تھی ۔۔۔
    میں نے سر اُٹھا کر اُن نوخیز چہروں کے عقب کی کہانی کھوجنے کی سعی کی ۔
    کیوں ؟
    میری کزن نے کل مجھے اُس کے ساتھ دیکھ لیا تھا
    میں ساکت سی رہ گئی ۔میں اُ نہیں روکنا چاہتی تھی ۔اُنہیں بتانا چاہتی تھی کہ
    اے نوخیز تتلیو! یہیں رُک جاؤ ورنہ تمہارے پَر جل جائیں گے۔۔۔۔کہکشاں سمجھ کر جس رستے پر قدم رکھا ہے ۔۔۔۔وہاں پاؤں فگار ہوتے ہیں ۔
    وہ مجھ سے دور جا چکی تھیں اور میں آنکھوں میں آئی دھند کے پار سفید یونیفارم میں موجود دو لڑکیوں کو دیکھ رہی ہوں ۔۔۔۔میرا ماضی میرا ہاتھ پکڑ کر مُسکرا رہا ہے ۔ جہاں میں اور فاخرہ اپنے اپنے بیگ کندھوں پر لٹکائے، فائل ہاتھوں میں پکڑے اپنے نئے نئے جوگرز کو دیکھ رہی تھیں ۔۔۔۔۔
    آج کالج میں پہلا دن تھا ۔۔۔
    امی السلام علیکم ! ابائی السلام علیکم!
    اور ابائی کا ہاتھ ہم دونوں کے سروں پر باری باری ٹھہرا ۔۔۔(تب وہ ہاتھ اتنا بوڑھا نہیں تھا )
    بیٹا سیدھے کالج جانا اور سیدھے گھر آنا ہے ۔۔۔۔۔۔
    اس ایک جملے کی نصیحت نے ہمارے گرد حدود و قیود کی جو حد باندھی تو پھر ایک قدم اِدھر سے اُدھر نہ پڑا ۔ کیوں کہ میرا ایمان ہے جب کوئی اپنے ماں باپ کو دھوکا دیتا ہے تو دراصل وہ یہ دھوکا خود کو دے رہا ہوتا ہے ۔ میں یہی سوچ ، یہی مضبوطی ہر لڑکی میں دیکھنا چاہتی ہوں ۔۔۔۔
    اپنے حق کے لیے جدوجہد کرو یہ تمہارا حق ہے ۔ اگرجیت نہ سکو تو ہار جاؤمگر کوئی تیسرا راستہ اختیار نہ کرو ۔کیونکہ بیٹیاں پھول ہیں ، تتلیاں ہیں ، آنگن کی چڑیاں ہیں مگر بیٹیاں والدین کا فخر و غرور بھی ہوتی ہیں ۔ اُن کی آنکھوں کی ٹھنڈک بھی ہوتی ہیں ۔ٓ

    از راحت جبیں
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 3
  2. سیما آفتاب

    سیما آفتاب ناظمہ

    رکن انتظامیہ

    شمولیت:
    ‏اپریل 3, 2017
    پیغامات:
    371
    بہت عمدہ شئیرنگ ہے
     
Loading...

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں