ماحول اور انسانی شخصیت پر اس کا اثر

سیما آفتاب نے 'مثالی معاشرہ' میں ‏مئی 26, 2018 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. سیما آفتاب

    سیما آفتاب ناظمہ

    رکن انتظامیہ

    شمولیت:
    ‏اپریل 3, 2017
    پیغامات:
    398
    ایک کزن اپنے والد صاحب کی قبر پر فاتحہ خوانی کے لیے کھڑے تھے، سب نے دُعا کے لیے ہاتھ اٹھا لیے لیکن حیرت کی بات یہ ہوئی کہ تین سالہ بیٹی نے دعا کے طور پر ہاتھ اٹھانے کے بجائے ہندو انداز میں ہاتھ جوڑے ہوئے تھے۔۔۔۔
    کیوں ایسا ہوا؟؟؟
    گھر والے بھی مسلمان، گھر سے باہر کا ماحول بھی مسلمان لیکن گھر کا اندرونی ماحول جو میڈیا کے ذریعے بنا ہے وہ ہندوانہ چاہے وہ کارٹونز ہوں یا مخلتف انڈین چینلز کے ڈرامے۔۔۔۔
    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
    ہمشیرہ ڈاکٹر ہیں، اُن کے ہسپتال میں ایک عیسائی نرس ہے جو یہ بتارہی تھی کہ محلے میں زیادہ تر مسلمان آباد ہیں، بیٹی اُن کے ساتھ کھیل رہی ہوتی ہے جب افطاری کا وقت قریب ہوتا ہے تو سب بچے افطاری ٹائم کا شور مچا کر گھر بھاگ جاتے ہیں، یہ بچی بھی گھر آکر افطاری کی ضد کرتی ہے، کچوریاں لائیں، سموسے لائیں اور پھر افطاری بھی کھا لیتی ہے۔۔۔۔
    کیوں ایسا ہوا؟؟؟
    گھر والے بھی عیسائی، رشتہ دار بھی عیسائی لیکن گھر کے باہر کا ماحول مسلمانوں والا تو بچی بھی افطاری سے لُطف اندوز ہونا پسند کرتی ہے۔۔۔۔
    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
    ایک کزن ہے، اُس کا دوست کسی یورپین ملک میں جابسا، بیوی بھی مسلمان لیکن دونوں آزاد خیال اگرچہ مسلمان ہیں، کزن سے ملنے آئے تو بتانے لگا کہ بچے کے بال وہی ہیں جو پیدائش کے وقت موجود ہوتے ہیں۔۔۔۔
    کزن بہت حیران ہوا کہ انہیں صاف کیوں نہیں کروایا،ساتویں دن منڈوا دینے چاہیے لیکن وہ کہنے لگا کہ نہیں، یہ Holy Hairs ہیں یعنی پاک بال، ہمارے اردگرد بھی لوگ یہ بال نہیں منڈواتے۔۔۔۔
    ماں باپ مسلمان لیکن عیسائیت سے مرعوب نظر آئے، گھر سے باہر کا ماحول عیسائیت والا، نتیجتاً اپنے اندر کی مرعوبیت پر باہر کے غالب ماحول کا اثر آیا تو بچے کے وہ بال فخریہ طور پر نہ منڈوائے جو عیسائیوں کا طرز ہے۔۔۔۔۔
    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
    ہم نے دیکھا کہ تین طرح کا ماحول شخصیت پر اثر انداز ہوتا ہے۔۔۔۔۔
    ایک: گھر سے باہر کا ماحول
    دو: گھر کے اندر کا ماحول
    تین: میڈیا کا بنایا گیا ماحول
    اب جو لوگ یہ کہتے ہیں کہ عبادت انفرادی فعل ہے اور اجتماعی طور پر یہ ماحول نہیں ہونا چاہیے خاص طور پر رمضان کے تناظر میں کہتے نظر آتے ہیں کہ کھانے پینے پر پابندی کا ماحول نہیں ہونا چاہیے، وہ سمجھنا چاہیں تو ان مثالوں سے بخوبی سمجھ سکتے ہیں کہ ماحول کیسے اثر انداز ہوتا ہے اور تیسری مثال سے ثابت ہوا کہ اپنا اندر خام ہو یا کسی اور طرز کی مرعوبیت لیے ہو پھر یہ اثر پذیری بہت تیز ہوا کرتی ہے۔۔۔۔۔
    ایک یونیورسٹی میں پڑھانے والے دوست بتا رہے تھے کہ جس حساب سے نوجوان نسل اسلام سے دُور ہورہی ہے اور جس طرح رمضان کا احترام ہر سال کم سے کم ہوئے جارہا ہے، کُھلے بندوں طویل اور گرم روزوں کا عذر بنا کر روزے چھوڑے جارہے ہیں، کُھلے عام کھایا پیا جارہا ہے، ایسا معلوم ہوتا ہے کہ کچھ عرصہ میں ان اداروں میں روزہ دار منہ چھپاتے پھریں گے، یہی حال نماز پڑھنے والوں کا ہے، نوجوان نسل تیزی سے اسلام سے دُور ہوئے جارہی ہے، عبادات کے نظام کو انفرادی زندگی میں مداخلت تصور کیا جارہا ہے۔۔۔
    جو اس چیز کو سمجھتے ہیں، انہیں حکمت اور محبت سے اپنا ماحول بنانے کی طرف مائل ہونے کی ضرورت ہے اپنے گھر میں، اپنے محلے میں، اپنے عزیز رشتہ داروں میں، اپنی کام کی جگہ پر تاکہ قیامت کے دن اللہ تبارک تعالٰی کے حضور جوابدہی میں پورا اُتر سکیں۔۔۔۔
    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
    تحریر: آفاق احمد
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 3
  2. رفی

    رفی -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏اگست 8, 2007
    پیغامات:
    12,232
    بہت عمدہ، بے شک ماحول کا شخصیت پر براہ راست اثر ہوتا ہے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
    • متفق متفق x 1
  3. صدف شاہد

    صدف شاہد ناظمہ

    رکن انتظامیہ

    شمولیت:
    ‏مارچ 16, 2018
    پیغامات:
    201
    بہت عمدہ شئیرنگ سس جی
    شاد و آباد رہیں
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 2
  4. سیما آفتاب

    سیما آفتاب ناظمہ

    رکن انتظامیہ

    شمولیت:
    ‏اپریل 3, 2017
    پیغامات:
    398
    جزاک اللہ خیرا :)
     
Loading...

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں