محاسبہ

سیما آفتاب نے 'اسلامی متفرقات' میں ‏جون 12, 2018 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. سیما آفتاب

    سیما آفتاب ناظمہ

    رکن انتظامیہ

    شمولیت:
    ‏اپریل 3, 2017
    پیغامات:
    395
    کتنے ہی لوگوں کو ہم جانتے ہیں جو ایک "بھر پور" زندگی گزار کر اپنے رب کے حضور حاضر ہو چکے. کچھ نے طویل عمر پائی اور کچھ نے مختصر. کچھ اچھی گزار گئے اور کچھ بری. آج ان کی ساری حیات محض ایک یاد (خوشگوار یا نا خوشگوار) بن کر ہمارے ذہن کے کسی گوشے میں موجود ہے. سمٹ کر، کسی زِپ فائل کی طرح!

    ان میں کچھ وہ تھے جو حقوق اللہ اور حقوق العباد کو بطریق احسن نبھانے کی کوشش میں لگے رہے. اپنی ذات، اعمال، صلاحیتوں، مال اور وقت کے بہترین استعمال سے ہر کسی کو نفع، سکون اور فائدہ پہنچانے کی سعی کرتے رہے. ان کا ساتھ ہر ایک کے لیے مثبت توانائی کا باعث تھا. مسائل تو ان کو بھی بہت سے درپیش رہے کیونکہ دنیا ہے ہی دارالامتحان، ہر اگلا سوال پہلے سے زیادہ پیچیدہ، مگر وہ صبر، شکر، رضا، دعا اور درگزر کی راہ پر گامزن رہے.

    پھر کچھ وہ تھے جنہیں نہ کبھی اللہ کی کسی نعمت نے اس کے شکر پر متوجہ کیا، نہ انسانوں سے ان کی بن سکی. ہر ایک سے شکایت، ہر ایک کی غیبت، ہر ایک سے گلے شکوے، ہر ایک سے بد ظن. اپنی ہر ناکامی کا ذمہ دار دوسروں کو ٹھہراتے رہے. وہ اپنے ہر برے عمل کو ردعمل کہتے رہے اُس "برے" سلوک کا جو ان کی دانست میں دنیا نے ان کے ساتھ کیا. یوں اپنے ہر کیے دھرے سے خود کو بآسانی بری الذمہ قرار دے لیتے. زندگی کو کوستے رہے. اس طرز عمل سے اپنی زندگی کو خود اپنے ہاتھوں ایک مَیںس (بے ترتیب و غیر منظم شے) بنا لیا. ان کا ساتھ ہر ایک کے لیے منفی و غیر تعمیری انرجی کا ذریعہ بنا رہا.

    زندگی کا جہاں ایک آغاز ہے، وہیں انجام بھی یقینی ہے.

    آئیے آج ایک کام کریں:

    تھوڑا سا وقت نکال کر کم از کم پانچ ایسے لوگوں کو (جو اب اس دنیا میں نہیں رہے) جنہیں آپ خود ذاتی طور پر جانتے تھے، اپنے ذہن میں لائیں جن کا تعلق پہلے گروپ سے ہے.

    پھر کم از کم پانچ ایسے لوگوں کو جن کا تعلق دوسرے گروپ سے ہے.

    اب سوچیں دونوں طرح کے لوگ زندگی گزار کر چلے گئے. موازنہ کریں، فرق کیا ہے؟ دنیا میں ان کے گزارے گئے وقت کے اُن پر اور دوسروں پر کیا اثرات مرتب ہوئے. وہ جاتے ہوئے اپنے ساتھ کیا لے گئے؟

    پھر ہم اپنی اپنی ذات کو محاسبے کے کٹہرے میں کھڑا کریں اور سوچیں میرا تعلق کس گروپ سے ہے؟ گرد و نواح پر کیا اثرات مرتب کر رہا/رہی ہوں؟ پیچھے کیا چھوڑ رہا/رہی ہوں؟ آگے کیا بھیج رہا/رہی ہوں؟

    دونوں گروپس کے لیے مغفرت کی دعا کریں کیونکہ ان کے اعمال کا دفتر بند اور توبہ کی مہلت ختم ہو چکی. سوائے ان اچھے یا برے اثرات کے جن میں سے ان کا حصہ انہیں بعد از وفات بھی ملتا رہے گا.

    ہمارے پاس مہلت ابھی باقی ہے. اسے غنیمت جانیں.

    کل کو دانا ترین شخص بھی اللّه تعالٰی سے یہی کہے گا کہ دنیا میں تو میں نے محض ایک دن یا دن کا کچھ حصہ ہی گزارا ہے.

    دنیا کی زندگی متاع الغرور ہے، کہیں ہم اس کے دھوکے میں نہ آ جائیں

    خلاصہ موت و حیات بس یہی ہے جو اللہ رب العزت نے سورہ الملک میں بیان کر دیا:

    الَّذِي خَلَقَ الْمَوْتَ وَالْحَيَاةَ لِيَبْلُوَكُمْ أَيُّكُمْ أَحْسَنُ عَمَلًا ۚ وَهُوَ الْعَزِيزُ الْغَفُورُ

    جس نے موت اور زندگی کو پیدا کیا تاکہ تم لوگوں کو آزما کر دیکھے تم میں سے کون بہتر عمل کرنے والا ہے، اور وہ زبردست بھی ہے اور درگزر فرمانے والا بھی.

    اچھی زندگی، پیچھے اپنے ذکرِ خیر اور اچھے انجام کے لیے یہ دعا مانگتے رہنا چاہیے،

    رَبِّ ھَبْ لِیْ حُكْمًا وَّاَلْحِقْنِیْ بِالصَّالِحِيْنَ. وَاجْعَلْ لِّیْ لِسَانَ صِدْقٍ فِی الْاٰخِرِيْنَ. وَاجْعَلْنِیْ مِنْ وَّرَثَةِ جَنَّةِ النَّعِيْمِ… وَلَا تُخْزِنِیْ یَوْمَ یُبْعَثُوْنَ.

    اے میرے رب! مجھے قوتِ فیصلہ عطا فرما اور مجھے نیک لوگوں سے ملا دے. اور بعد میں آنے والوں میں میری سچی ناموری باقی رکھ اور مجھے نعمتوں بھری جنت کے وارثوں میں سے بنا دے... اور مجھے رسوا نہ کرنا جس دن وہ (لوگ) اٹھائے جائیں گے. (سورۃ الشعراء)

    تحریر: حنا نرجس
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
Loading...

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں