ہندوستانی حملہ آور کو رہا کرنے کا بونگا فیصلہ

عائشہ نے 'اركان مجلس كے مضامين' میں ‏مارچ 1, 2019 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,484
    پاکستانی وزیراعظم نے ہندوستانی حملہ آور پائلٹ کو رہا کرنے کا بونگا فیصلہ کیا ہے۔
    پارلیمان کے مشترکہ اجلاس سے لے کر سوشل میڈیا کی عوامی مجلسوں تک جو لوگ ملک کی سیاسی قیادت پر اعتماد کا اظہار کر رہے تھے ان کو کافی آرام آ گیا ہے۔ اب کڑھنے کی کیا ضرورت کہ پائلٹ کے بدلے دو چار اپنے فوجی چھڑا لیتے؟ جس پر اعتماد کیا ہے اس کو بھگتیے۔ انڈیا میں کتنے سپاہی مقبول حسین، کرنل حبیب پاکستان سے محبت کی انسانیت سوز سزا کاٹ رہے ہیں اس کا کیا ذکر؟ اپنے ملک کی حزب مخالف کو پوری طاقت سے کچلنے والا فاشسٹ اتحاد دشمن کے قدموں میں قالین کی مانند بچھ کر امن پسند ہونے کا ثبوت دینے کی کوشش کر رہا ہے۔ اپنے ملکوں کی سڑکوں کو ہم وطنوں کے لیے مہینوں بند کرنا، اپنے ملک کے اداروں پر حملے کرنا آسان ہے، دشمن کے سامنے چند دن ٹھہرنا مشکل ہو رہا ہے۔ آتش فشانی تقریروں میں جھلکتی تھی مگر وقار نہیں، آج وہی صفت قومی فیصلونمں میں جھلک رہی ہے۔ یہ وہ لوگ ہیں جو خود چند دن کا عالمی دباؤ برداشت نہ کر پائے اور مہینوں عالمی دباؤ کے سامنے چٹان بن کر ملک کی ایٹمی صلاحیت کے متعلق بڑے بڑے فیصلوں کرنے والے سیاست دانوں کو کرپٹ کہتے تھے؟اب معلوم ہوا رہبری کیا ہوتی ہے؟، تاریخ کے بڑے فیصلے کن باسعادت ہاتھوں میں انجام پاتے ہیں اور قوم کا مورال بلند رکھنے میں رہنما کا کتنا خون جگر درکار ہوتا ہے؟ خلوص نیت کی وہ کون سی منزل ہے جہاں پہنچ کر ایسے فیصلے ہوتے ہیں کہ قومیں صدیوں اقوام عالم میں فخر سے سر اٹھا کر چلتی ہیں؟
    بعض لوگ بہت امید افزا شخصیت کے مالک ہوتے ہیں۔ ان سے ہمیشہ امید رہتی ہے کہ انہوں نے کوئی چاند چڑھانا ہے۔ آئے روز نئے چاند کی عادت ڈال لیجیے۔
     
    Last edited: ‏مارچ 1, 2019
  2. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,484
Loading...

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں