گناہ جنت میں،اور نیکی دوزخ میں لے جا سكتى ہے!!!!

عائشہ نے 'امام ابن قيم الجوزيۃ' میں ‏اگست 9, 2009 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,485
    انسان کبھی گناہ کرتے کرتے جنت میں اور نیکی کرتے کرتے دوزخ میں جا سکتا ہے۔
    گناہگار اپنے گناہ کو دیکھ دیکھ کر اس سے ڈرتا ہے۔ خوف کھاتا ہے، اللہ عزوجل سے شرمندہ ہوتا ہے، تو يہ گناہ ہزاروں نيكيوں سے زيادہ فائدہ مند ہوتا ہے۔
    اور کبھی انسان ايك آدھ نیکی کر بیٹھتا ہے تو اللہ پر احسان چڑھانے لگتا ھے۔غرور و تکبر سے پھولا نہیں سماتا۔تو يہی مغرورانہ نيكی اسے جہنم رسید کر کے دم لیتی ہے۔

    ]امام ابن القيم الجوزيہ، الوابل الصيب
     
  2. ام ھود

    ام ھود -: رکن مکتبہ اسلامیہ :-

    شمولیت:
    ‏دسمبر 17, 2007
    پیغامات:
    1,198
    جزاک اللہ خیر بہت ہی سوچنے سمجھنے کی بات ہے ۔۔ اللہ ہمیں ایسے لوگوں میں سے نہ کرنا
     
  3. ابن عمر

    ابن عمر رحمہ اللہ بانی اردو مجلس فورم

    شمولیت:
    ‏نومبر 16, 2006
    پیغامات:
    13,365
    آمین
     
  4. ابن عمر

    ابن عمر رحمہ اللہ بانی اردو مجلس فورم

    شمولیت:
    ‏نومبر 16, 2006
    پیغامات:
    13,365
  5. یاسمین

    یاسمین -: مشاق :-

    شمولیت:
    ‏اپریل 5, 2009
    پیغامات:
    385
    بلکل ٹھیک کہا آپ نے عین جی،ہمیں ہر وقت اپنے عملوں پر نظر رکھنے کی ضرورت ہے،ایسا نہ ہو کے خوش فہمی اور دھوکے میں ہم گناہ کرتے جائیں اور جنت سے دور ہو جائیں
     
  6. محمد ارسلان

    محمد ارسلان -: Banned :-

    شمولیت:
    ‏جنوری 2, 2010
    پیغامات:
    10,422
    جزاک اللہ خیرا
     
  7. جاسم منیر

    جاسم منیر Web Master

    شمولیت:
    ‏ستمبر 17, 2009
    پیغامات:
    4,638
    جزاک اللہ خیرا عین سسٹر
    نیکی کے ضمن میں ہی ایک اور بات کہ بعض اوقات اگر ہم دکھاوے کے لیے کوئی نیکی کریں تو وہ بھی ہمارے لیے تباہی کا باعث بن سکتی ہے۔ جیسا کہ ابن ماجہ کی ایک حدیث ہے:
    ابو سعید رضی اللہ عنہ سے روایت ہے، رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:
    کیا میں تمہیں وہ بات نہ بتاؤں جس کا خوف مجھے تم پر مسیح دجال سے بھی زیادہ ہے؟ صحابہ رضی اللہ عنہم نے عرض کیا: اے اللہ کے رسول! کیوں نہیں؟ (ضرور بتلائیے) آپ نے فرمایا: وہ ہے "شرک خفی" کہ کوئی شحص نماز کے لیےکھڑا ہو اور وہ اپنی نماز کو محض اس لیے سنوار کر پڑھے کہ کوئی شخص اسے دیکھ رہا ہے
    اللہ ہمیں صحیح معانوں میں اپنا محاسبہ کرنے کی توفیق عطا فرمائے۔ آمین۔
     
  8. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,485
    بالكل درست ، شکریہ ۔وضاحت كردوں كہ يہ امام ابن قيم رحمہ اللہ كى كتاب سے اقتباس ہے ميرى تحرير نہیں ۔
     
  9. رفی

    رفی -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏اگست 8, 2007
    پیغامات:
    12,450
    جزاک اللہ خیرا

    بے شک بعض اوقات چھوٹے سے چھوٹا گناہ بھی بڑی سے بڑی نیکیوں کو کھا جاتا ہے اور بعض اوقات چھوٹی سے چھوٹی نیکی بڑے بڑے گناہوں کو دھو ڈالتی ہے۔
     
  10. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,485
    وایاکم
     
  11. محمد زاہد بن فیض

    محمد زاہد بن فیض نوآموز.

    شمولیت:
    ‏جنوری 2, 2010
    پیغامات:
    3,702
    جزاک اللہ عین سسٹر۔۔۔
    اس لیے ہمیں‌ ہر چھوٹی بڑی نیکی کرنے کے بعد الحمد للہ کہنا چاہیےتاکہ اللہ کا شکر ادا ہو کیونکہ اُس کی توفیق کے بغیر کوئی کام ممکن نہین۔۔۔۔۔اور غلطی کرنے پر اللہ سے معافی مانگنی چاہیے استغفار کرنا چاہیے۔۔۔۔۔
    اللہ آپ کو ہمیشہ خوش رکھے اور آپ کے علم میں‌ اضافہ فرمائے۔۔۔۔۔اور اس نیکی کو آپ کی مغفرت کا سبب بنائے ۔آمین
     
  12. ابن داود

    ابن داود -: رکن مکتبہ اسلامیہ :-

    شمولیت:
    ‏اگست 9, 2010
    پیغامات:
    278
    السلام علیکم ورحمۃاللہ وبرکاتہ
    تھریڈ کے عنوان میں اگر ذرا تصحیح کر دی جائے تو بہتر ہے، کیونکہ جو بات مضمون میں ہے وہ یہ کہ "ارتکاب گناہ پر شرمندگی اور اللہ کا خوف جنت میں لے جانے کا سبب بنتا ہے، اور نیکی کرنے پر غرور و تکبر جہنم میں پھینکے جانے کا سبب۔
    یعنی کہ گناہ بنفسہ جنت کا سبب نہیں بنتا اور نہ ہی نیکی بنفسہ دورزخ کا سبب!
    میں ام نور العین بہن کی مراد سمجھ گیا ہوں، کہ ان کی مراد بھی یہ ہی ہے لیکن ، شاید کسی کو یہ بات واضح نہ ہو تو اس کی وضاحت کرنا مطلوب ہے۔


    ما اہل حدیثیم دغا را نشناسیم
    صد شکر کہ در مذہب ما حیلہ و فن نیست
    ہم اہل حدیث ہیں، دھوکہ نہیں جانتے، صد شکر کہ ہمارے مذہب میں حیلہ اور فنکاری نہیں۔​
    ١
     
Loading...

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں